1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

وحدت رویت اور اختلاف مطالع

'رویت ہلال' میں موضوعات آغاز کردہ از کیلانی, ‏جولائی 21، 2013۔

  1. ‏جولائی 24، 2013 #21
    حرب بن شداد

    حرب بن شداد سینئر رکن
    جگہ:
    اُم القرٰی
    شمولیت:
    ‏مئی 13، 2012
    پیغامات:
    2,149
    موصول شکریہ جات:
    6,249
    تمغے کے پوائنٹ:
    437


    حرم پاک بھی اﷲ بھی قرآن بھی ایک
    کچھ بڑی بات تھی ہوتے جو مسلمان بھی ایک
     
  2. ‏جولائی 26، 2013 #22
    عبدالرحمن لاہوری

    عبدالرحمن لاہوری رکن
    جگہ:
    لاهور
    شمولیت:
    ‏جولائی 06، 2011
    پیغامات:
    126
    موصول شکریہ جات:
    456
    تمغے کے پوائنٹ:
    81

    دو رنگی چھوڑ دے یک رنگی ہوجا!
     
  3. ‏جولائی 28، 2013 #23
    عبدالرحمن لاہوری

    عبدالرحمن لاہوری رکن
    جگہ:
    لاهور
    شمولیت:
    ‏جولائی 06، 2011
    پیغامات:
    126
    موصول شکریہ جات:
    456
    تمغے کے پوائنٹ:
    81

    کوئی تو ہو جو جواب دے۔۔۔
     
  4. ‏جولائی 28، 2013 #24
    حرب بن شداد

    حرب بن شداد سینئر رکن
    جگہ:
    اُم القرٰی
    شمولیت:
    ‏مئی 13، 2012
    پیغامات:
    2,149
    موصول شکریہ جات:
    6,249
    تمغے کے پوائنٹ:
    437

    محترم ہم الحمداللہ یک رنگ ہی ہیں۔۔۔
    مجھے آپ صرف یہ بتائیں کے اگر ہم پاکستان میں بستے ہیں۔۔۔
    اور ہمارے ملک جس جس میں جو جو شہر صوبہ یا علاقہ آتا ہے۔۔۔
    قانونی لحاظ سے تو کیا یہ ہمارا فرض نہیں ہے کہ ہم اپنے ملک کے علماء کی آراء کا احترام کریں۔۔۔ یہ کتابیں ہم نے بھی پڑھ رکھی ہیں اور جو بحث آج آپ چھیڑ رہے ہیں دو سال پہلے اس ہی موضوع پر اردو مجلس پر کافی لے دے ہوچکی ہے۔۔۔ لہذا چاند رویت کو چھوڑیں اصل نظام کی طرف لوگوں کی توجہ مبزول کروائیں جس کا نام ہے خلافت جب وہ آجائے گی تو سب ہوجائے گا جیسے سطلنت عثمانیہ میں ہوا کرتا تھا۔۔۔ اُمید ہے میری بات سمجھ رہے ہونگے۔۔۔
     
  5. ‏جولائی 29، 2013 #25
    عبدالرحمن لاہوری

    عبدالرحمن لاہوری رکن
    جگہ:
    لاهور
    شمولیت:
    ‏جولائی 06، 2011
    پیغامات:
    126
    موصول شکریہ جات:
    456
    تمغے کے پوائنٹ:
    81


    کون سا قانون؟ جو ملک میں نافذ ہے؟۔۔۔
    پہلی بات تو یہ کہ میں نے معاذ اللہ اپنے علماء میں سے کسی کی بھی بے حرمتی نہیں کی ، اختلاف رائے سے احترام متاثر نہیں ہوتا اگر شرعی و اخلاقی ضوابط کے اندر رہ کر کیا جائے۔۔۔
    دوسری بات یہ کہ امت مسلمہ کے محترم و معتبر علماء کرام کو فرنگی کی سازش کے تحت بنائے گئے اکثر موجودہ مسلم ممالک تک محدود رکھنا کہاں کا انصاف ہے؟ ہمارا احترام صرف اپنے ملک کے علماء تک محدود نہیں بلکہ تمام علماء حق محترم ہیں خواہ وہ عرب میں ہوں یا عجم میں، مشرق میں ہوں یا مغرب میں۔ آپ بھی ایسا ہی کیجئے۔۔۔
    تیسری بات یہ کہ جس ملک میں ہم بستے ہیں وہاں کے تمام علماء حق اس مسئلہ میں کسی ایک موقف پر کہاں جمع ہیں؟ ہاں اتنا ضرور ہے کہ جمہور علماء کرام کا موقف اختلاف مطالع کا ہی ہے مگر اس میں بھی ۴ صورتیں بنتی ہیں جن کا ذکر میں نے اس سے قبل کیا ہے لیکن اس پر کسی دوست نے مناسب جواب نہیں دیا۔
    آخری بات یہ کہ ہمارے ملک کے علماء حق کے مابین جب کسی مسئلہ میں اجتہاد کی بنا پر اختلاف رائے ہوتا ہے تب آپ کیا کرتے ہیں؟ جمہور علماء کی رائے کو اپنا لیتے ہیں صرف اس لئے کہ وہ اکثریت میں ہیں یا پھر دلائل کی روشنی میں فیصلہ کرتے ہیں خواہ وہ اقلیتی رائے کے موافق ہو؟ اس ضمن میں ذرا ہماری بھی رہنمائی فرمائے۔۔۔
    ویسے دلچسپ بات یہ ہے کہ مذکورہ مسئلہ میں جمہور فقہاء کی رائے توحید رویت کی ہی ہے، شاید آپ کو یہ بات پہلے سے معلوم ہو۔۔۔

    ارے آپ تو غصہ کر گئے!!! میرا یقین کیجئے میں نے آپ کی علمی قابلیت پر کوئی شک نہیں کیا بلکہ اچھا گمان ہی کیا ہے اور اپنے سے بہتر ہی سمجھا ہے، اسی لئے تو آپ سے علمی بحث کرنے میں دلچسپی لے رہا ہوں۔۔۔
    دوسرے کسی فورم پر جو کچھ بھی ہوا میں اس کا حصہ نہیں تھا اور نہ ہی وہ سب کچھ میری نظر سے گزرا ہے، باقی میرا ارادہ تو کسی قسم کی "لے دے" کا نہیں ہے۔۔۔

    بحمد اللہ تعالی میں آپ کی بات اچھی طرح سمجھ گیا ہوں مگر میری نظر میں یہ دونوں کام بیک وقت بھی ہوسکتے ہیں؛ اس لئے کہ قیام خلافت کی جد و جہد رویت ہلال جیسے مسائل پر علمی گفتگو کرنے سے متاثر نہیں ہوتی۔ البتہ مسئلہ اس وقت خراب ہوتا ہے جب ہم جذباتی ہو کر اجتہادی مسائل میں اپنی رائے دوسرے پر جبرا تھونپنے کی کوشیش کرتے ہیں۔۔۔

    میں آپ کا مشکور ہوں کہ آپ نے نیک نیتی اور اخوت اسلامی کے جذبے کے تحت مجھے انتہائی قیمتی مشورے دیئے۔ ۔۔
    اللہ آپ کو خوش رکھے۔آمین۔۔۔
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  6. ‏اگست 17، 2013 #26
    محمد وقاص گل

    محمد وقاص گل سینئر رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏اپریل 23، 2013
    پیغامات:
    1,037
    موصول شکریہ جات:
    1,678
    تمغے کے پوائنٹ:
    310

  7. ‏اگست 18، 2013 #27
    کنعان

    کنعان فعال رکن
    جگہ:
    برسٹل، انگلینڈ
    شمولیت:
    ‏جون 29، 2011
    پیغامات:
    3,564
    موصول شکریہ جات:
    4,376
    تمغے کے پوائنٹ:
    521


    السلام علیکم

    جہاں رویت ھلال کمیٹی والے اعلان کرتے ہیں کہ آج سحری ہو گی اور کل عید ہو گی اس اعلان کے مطابق ہی عمل ہو گا۔

    چاند مکہ مکرمہ سے پہلے دوسرے ممالک میں نظر آتا ھے مگر احتراماً ابتدا سعودی عرب میں رویت ھلال کا اعلان ہونے کے بعد ہی دوسرے دن ان ممالک میں روزہ کی ابتدا کی جاتی ھے کیونکہ ان کا وقت گزر جاتا ھے اور اسے دوسرے دن ہی پکڑا جا سکتا ھے پھر بھی ان ممالک میں اس وجہ سے ایک گروپ سعودی عرب کے اعلان کے ساتھ ہی اپنے روزہ کی ابتدا کرتے ہیں اور باقی دوسرے دن جس وجہ سے عید بھی دو ہوتی ہیں ایک وہ جنہوں نے سعودی اعلان کے ساتھ روزہ کی ابتدا کی ہوتی ھے اور دوسری عید جنہوں نے سعودی عرب کے اعلان کے بعد دوسرے دن ابتدا کی ہوتی ھے۔ ان ممالک میں اس اختلاف کی وجہ سے عید کم شرمندگی زیادہ ھے۔

    اس مرتبہ سعودی عرب کا روزہ کا اعلان مشکوک نکلا روزہ کا اعلان ایک دن پہلے ہی کر دیا اور اس وجہ سے 28 روزہ پر عید کرنے کا پروگرام تھا جس وجہ سے اسی دن رویت ھلال والے چاند دیکھنے بیٹھ گئے تھے مگر شدید مزاحمت کی وجہ سے 28 پر بات نہیں بنی جس وجہ سے انہیں 29 روزہ کرنے پڑے یہ میں نہیں کہہ رہا بلکہ اخبارات میں اس پر بہت کچھ شائع ہو چکا ھے۔ ایسے ایرر سعودی ھلال کمیٹی والوں سے پہلے بھی ہو چکے ہیں۔

    تمام عرب ممالک میں صرف ایک سلطنت آف عمان جو چاند دیکھ کر اعلان کرتا ھے وہ سعودی اعلان کے ساتھ روزہ یا عید نہیں کرتے۔

    والسلام
     
    • شکریہ شکریہ x 3
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  8. ‏اگست 18، 2013 #28
    محمد وقاص گل

    محمد وقاص گل سینئر رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏اپریل 23، 2013
    پیغامات:
    1,037
    موصول شکریہ جات:
    1,678
    تمغے کے پوائنٹ:
    310



    محترم بھائی یہ بات آپ نے ذرا عجیب سی کی۔
    کہ چاند تو نظر آ گیا پر احتراما رک گئے۔۔۔۔۔۔۔۔۔؟؟
    ایسا میرے علم کے مطابق نہیں ہوتا اور نہ ہی شرعی طور پر درست ہے۔
    کیونکہ جب کسی ملک میں چاند نظر آگیا تو فرمان رسول صلی اللہ علیہ وسلم کے مطابق ان پر روزہ رکھنا یا افطار کرنا ضروری ہو جائے گا۔
     
    • شکریہ شکریہ x 3
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  9. ‏اگست 18، 2013 #29
    کنعان

    کنعان فعال رکن
    جگہ:
    برسٹل، انگلینڈ
    شمولیت:
    ‏جون 29، 2011
    پیغامات:
    3,564
    موصول شکریہ جات:
    4,376
    تمغے کے پوائنٹ:
    521

    السلام علیکم

    محترم بھائی ایسا ہی ہوتا ھے اور اپنی مرضی سے نہیں ہوتا بلکہ ان ممالک میں بھی رویت ھلال مفتیان ہی اعلان کرتے ہیں اور وہی اس پر درست جانتے ہیں ان ممالک میں چاند سعودی عرب اعلان کے بعد ہی دیکھا جاتا ھے۔

    کیا پاکستان میں دو عیدیں نہیں ہوتیں؟ شائد پشاور والے سعودی عرب کے ساتھ روزہ اور عید کرتے ہیں۔

    ایک معلومات فراہم کی تھی اور اس پر مزید بحث کی شائد ضرورت نہیں۔ اگر آپ کو میری بات پر یقین نہیں تو اپنے کسی قریبی دوست سے پہلے اس پر معلومات حاصل کریں پھر آپ اپنی رائے دیں گے تو ہمیں بھی آپ سے کچھ سیکھنے کو ملے گا۔

    والسلام
     
    • شکریہ شکریہ x 3
    • علمی علمی x 1
    • لسٹ
  10. ‏اگست 18، 2013 #30
    محمد وقاص گل

    محمد وقاص گل سینئر رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏اپریل 23، 2013
    پیغامات:
    1,037
    موصول شکریہ جات:
    1,678
    تمغے کے پوائنٹ:
    310

    جیسا بھی ہے پر چاند نظر آجانے کے بعد آپ کے بقول ''رک جانا اور وہ بھی احتراما'' شرعی لحاظ سے درست نہیں۔۔۔
    واللہ اعلم۔۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں