1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

وہ بڑا ملک جس نے اپنی ہی فیس بک لانچ کردی، سوشل میڈیا صارفین کیلئے بڑی خبرآ گئی

'متفرقات' میں موضوعات آغاز کردہ از کنعان, ‏اپریل 01، 2018۔

  1. ‏اپریل 01، 2018 #1
    کنعان

    کنعان فعال رکن
    جگہ:
    برسٹل، انگلینڈ
    شمولیت:
    ‏جون 29، 2011
    پیغامات:
    3,564
    موصول شکریہ جات:
    4,376
    تمغے کے پوائنٹ:
    521

    وہ بڑا ملک جس نے اپنی ہی فیس بک لانچ کر دی، سوشل میڈیا صارفین کیلئے بڑی خبرآ گئی

    کائرہ (ویب ڈیسک) مصر نے سماجی رابطے کی سب سے بڑی ویب سائٹ فیس بک کے مقابلے میں ’اجپٹ فیس‘ کے نام سے سوشل ویب سائٹ متعارف کرادی۔غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق مصر کے وزیر اطلاعات نے گزشتہ ماہ اعلان کیا تھا کہ مصر خود اپنی سماجی رابطے کی ویب سائٹ بنانے کا ارادہ رکھتا ہے جب کہ اب مصر نے اپنی فیس بک متعارف کرالی ہے جسے ’اجپٹ فیس‘ کا نام دیا گیا ہے جب کہ ویب سائٹ کو www-egface.com کے نام سے رجسٹرد کیا گیا ہے۔

    مصر کی جانب سے بنائی گئی فیس بک کے فرنٹ پیچ پر لیورپول کلب کے لیے کھیلنے والے مصر کے معروف فٹ بالر محمد صالح کی تصویر کو ’ کور فوٹو ‘ کے طور پر لگایا گیا ہے جب کہ ویب سائٹ کی تھیم بھی فیس بک کی طرح نیلے کلر میں رکھی گئی ہے۔

    ابتدائی طور پر مصری فیس بک کو استعمال کرنے کے لیے 3 زبانوں کا انتخاب کیا جاسکتا ہے جن میں انگریزی، فرانسیسی اور عربی شامل ہیں جب کہ اکائونٹ بنانے کے لیے ویب سائٹ کا طریقہ کار تقریباً فیس بک جیسا ہی رکھا گیا ہے۔ رپورٹس کے مطابق اب تک 500 سے زائد افراد اس فیس بک کو سبسکرائب کر چکے ہیں۔

    مصر کے وزیراطلاعات یاسیر القادی کا کہنا تھا کہ خیالات کے ذریعے انتہا پسندی کے خلاف جنگ میں ہماری حکمت عملی بہت واضح ہے جب کہ مستقبل میں اسی طرح سماجی رابطے کی مزید ویب سائٹ بھی بنائی جائیں گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہمیں شہریوں کے ڈیٹا کے حفاظت کے قابل ہونا چاہیے اور ملک میں استحکام کے لیے اپنے شہریوں کی مدد کرنی چاہیے۔

    روزنامہ پاکستان

    29 مارچ 2018
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں