1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

پانچ نمازیں قرآن سے

'نماز باجماعت' میں موضوعات آغاز کردہ از کنعان, ‏دسمبر 02، 2017۔

  1. ‏دسمبر 02، 2017 #1
    کنعان

    کنعان فعال رکن
    جگہ:
    برسٹل، انگلینڈ
    شمولیت:
    ‏جون 29، 2011
    پیغامات:
    3,564
    موصول شکریہ جات:
    4,376
    تمغے کے پوائنٹ:
    521

    پانچ نمازیں قرآن سے



    تعداد نماز اورکس کس وقت:

    فجر، مغرب اور عشاء کی نماز کا حکم:
    سورۃ هود:10 , آیت:114
    اور آپ دن کے دونوں کناروں میں اور رات کے کچھ حصوں میں نماز قائم کیجئے۔ بیشک نیکیاں برائیوں کو مٹا دیتی ہیں۔ یہ نصیحت قبول کرنے والوں کے لئے نصیحت ہے۔


    نماز فجر اور عشاء‌ کی تعلیم و حکم:

    سورۃ النور:23 , آیت:58
    اے ایمان والو! چاہئے کہ تمہارے زیردست (غلام اور باندیاں) اور تمہارے ہی وہ بچے جو (ابھی) جوان نہیں ہوئے (تمہارے پاس آنے کے لئے) تین مواقع پر تم سے اجازت لیا کریں: (ایک)
    نمازِ فجر
    سے پہلے اور (دوسرے) دوپہر کے وقت جب تم (آرام کے لئے) کپڑے اتارتے ہو اور (تیسرے)
    نمازِ عشاء
    کے بعد (جب تم خواب گاہوں میں چلے جاتے ہو)، (یہ) تین (وقت) تمہارے پردے کے ہیں، ان (اوقات) کے علاوہ نہ تم پر کوئی گناہ ہے اور نہ ان پر، (کیونکہ بقیہ اوقات میں وہ) تمہارے ہاں کثرت کے ساتھ ایک دوسرے کے پاس آتے جاتے رہتے ہیں، اسی طرح اللہ تمہارے لئے آیتیں واضح فرماتا ہے، اور اللہ خوب جاننے والا حکمت والا ہے


    پانچوں نمازوں کی تعلیم اور حکم،:

    سورۃ الاسراء / بني إسرآءيل:16 , آیت:78
    آپ سورج ڈھلنے سے لے کر رات کی تاریکی تک (ظہر، عصر، مغرب اور عشاء کی) نماز قائم فرمایا کریں اور نمازِ فجر کا قرآن پڑھنا بھی (لازم کر لیں)، بیشک نمازِ فجر کے قرآن میں (فرشتوں کی) حاضری ہوتی ہے (اور حضوری بھی نصیب ہوتی ہے)


    ظہر اور عصر کی نماز کی تعلیم اور اسکا حکم:

    سورۃ الروم:29 , آیت:18
    اور ساری تعریفیں آسمانوں اور زمین میں اسی کے لئے ہیں اور (تم تسبیح کیا کرو) سہ پہر کو بھی (یعنی عصر کے وقت) اور جب تم دوپہر کرو (یعنی ظہر کے وقت)

    عصر کی نماز کی تعلیم اور اسکا حکم:

    سورۃ البقرۃ:1 , آیت:238
    سب نمازوں کی محافظت کیا کرو اور بالخصوص درمیانی نماز کی، اور اﷲ کے حضور سراپا ادب و نیاز بن کر قیام کیا کرو
     
  2. ‏دسمبر 02، 2017 #2
    یوسف ثانی

    یوسف ثانی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    پاکستان
    شمولیت:
    ‏ستمبر 26، 2011
    پیغامات:
    2,760
    موصول شکریہ جات:
    5,268
    تمغے کے پوائنٹ:
    562

    • پسند پسند x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  3. ‏دسمبر 03، 2017 #3
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,769
    موصول شکریہ جات:
    8,335
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    قرآن کریم سے اس طرح چیزوں کو ہم اس لیے ثابت کر لیتے ہیں ، کیونکہ سنت کے اندر ان مسائل کی توضیح ثابت ہے ۔ ورنہ اگر صرف قرآن کریم ہی ہوتا ، اور سنت طرح کی کوئی رہنمائی نہ ہوتی ، تو پانچ کیا ایک نماز بھی ثابت نہ ہوپاتی ۔ ہر کوئی اپنی اپنی سوچ سمجھ کے مطابق مرضی کی نمازیں اور مرضی کے وقت بنالیتا ۔
    اسی لیے میرے نزدیک جو اپروچ بالکل بھی درست نہیں کہ صرف قرآن سے یہ بات ثابت کریں ، کیونکہ اس سے لوگ سنت سے ہی نہیں ، بلکہ قرآن کریم کی حقیقی روح سے بھی دور ہوجائیں گے ۔
    حضور نے قرآن کریم کے معانی و مفاہیم کو متعین کیا ہے ، اگر اس ’ تعین ‘ سے محروم ہوگئے ، تو الفاظ کے سوا کچھ بھی باقی نہیں رہے گا۔
     
    • پسند پسند x 3
    • مفید مفید x 2
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں