1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

کب مکرہ کے لیے فعل محرم جائز نہیں

'فقہی سوالات وجوابات' میں موضوعات آغاز کردہ از سید طہ عارف, ‏ستمبر 28، 2019۔

  1. ‏ستمبر 28، 2019 #1
    سید طہ عارف

    سید طہ عارف مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 18، 2016
    پیغامات:
    725
    موصول شکریہ جات:
    135
    تمغے کے پوائنٹ:
    104

    السلام علیکم ورحمت اللہ وبرکاتہ
    ابھی ایک پوسٹ اکراہ کے حوالے سے لگائی تھی اس کی کچھ تفصیل امام السیوطی کی کتاب الاشباہ والنظائر سے پیش خدمت ہے.

    مندرجہ ذیل صورتیں ہیں جب حالت اکراہ میں فعل محرم کا ارتکاب جائز نہیں
    1. قتل
    اگر کسی کو دوسرے مسلمان بھائی کے قتل پر مجبور کیا جائے تو قتل تب بھی حرام ہے اپنی جان بچانے کے لیے دوسرے مسلمان کا قتل جائز نہیں

    2. الزنا
    یہ بھی قتل کی طرح بالاتفاق حرام ہے اکراہ کی حالت میں زنا جائز نہیں

    3.جھوٹی گواہی یا باطل حکم
    وہ گواہی یا حکم جس کے نتیجہ میں کسی مسلمان کا قتل ہو یا اس کے اعضاء کا قطع وغیرہ (جو اکراہ کی حالت میں ممنوع ہیں) تو ایسی گواہی یا حکم بھی حرام ہے.

    البتہ اکراہ کی حالت میں کسی کے مال کو تلف کیا جاسکتا ہے. گویا کہ ایک اصول سمجھ آیا ہے (علماء سے اصلاح کی درخواست ہے) اکراہ میں ہر وہ عمل حرام ہے جس سے کسی مسلمان کی جان و ذات کو نقصان پہنچتا ہو.
     
لوڈ کرتے ہوئے...
متعلقہ مضامین
  1. ابو زہران شاہ
    جوابات:
    0
    مناظر:
    17
  2. ابوطلحہ بابر
    جوابات:
    12
    مناظر:
    164
  3. محمد عامر یونس
    جوابات:
    1
    مناظر:
    629
  4. afrozgulri
    جوابات:
    0
    مناظر:
    227
  5. عبدالعظیم راشد
    جوابات:
    14
    مناظر:
    956

اس صفحے کو مشتہر کریں