1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

کمپنی کو پروڈکٹ کا آئیڈیا دینے پر اجرت کا شرعی حکم ؟

'جدید فقہی مسائل' میں موضوعات آغاز کردہ از اسحاق سلفی, ‏جنوری 29، 2017۔

  1. ‏جنوری 29، 2017 #1
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,362
    موصول شکریہ جات:
    2,395
    تمغے کے پوائنٹ:
    791

    ایک محترم بھائی نے ذاتی پیغام میں درج ذیل سوال کیا ہے ؛
    Assalam o alaikum mera aik sawal he ke agar koi banda kisi company ko apna idea de koi cheez bnane ka phr wo company wo cheez bnae aur us ke baad us cheez k aik sale par wo company bnane wale ko 90٪ den aur 10٪ raqam khud rakhen۔۔ Isko totality bhi kehte hen۔۔ To kia ye stood he aur agar nhen to bhi ye jaaiz he ya nhen۔۔ Authentic source se jawab ki zaroorat shukria!!!
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    محترم شیخ جناب @خضر حیات صاحب سے توجہ مطلوب ہے،
    اور محترم بھائی جناب @محمد نعیم یونس صاحب سے اس عبارت کو اردو میں منتقل کرنے کی درخواست ہے ؛
     
    Last edited: ‏جنوری 29، 2017
  2. ‏جنوری 30، 2017 #2
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,763
    موصول شکریہ جات:
    8,333
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    آئیڈیا دینا ، ایسے ہی ہے ، جیسے کسی کو تعلیم دینا ۔ دونوں کی فیس یا اجرت لی جاسکتی ہے ۔
    آئیڈیا دیکر نفع میں شریک ہونا ، ایسے ہی ہے ، جیسے کسی کے ساتھ کاروبار مالیت یا جسمانی محنت کے عوض شرکت کرنا ۔ ایسی صورت میں اگر تمام شرکاء کے حصے متعین ہوں ، اسی طرح نفع و نقصان دونوں ہی میں سب ذمہ دار ہوں تو اس میں کوئی حرج نہیں ۔ واللہ اعلم ۔
     
    • پسند پسند x 1
    • علمی علمی x 1
    • لسٹ
  3. ‏جنوری 30، 2017 #3
    محمد نعیم یونس

    محمد نعیم یونس خاص رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 27، 2013
    پیغامات:
    26,400
    موصول شکریہ جات:
    6,600
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,207

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
    سب سے پہلے تو میں حیرت کا اظہار کروں گا کہ نجانے مجھے ٹیگ کی اطلاع کیوں موصول نہیں ہوئی؟؟؟

    بعد اس کےمفہوم نما ترجمہ عرض ہے:

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
    میرا ایک سوال ہےکہ اگر کوئی بندہ کسی کمپنی کو اپنا آئیڈیا دےکوئی چیز بنانےکا،
    پھر وہ کمپنی وہ چیز بنائے اور اُس کے بعد ، اُس چیز کے ایک سیل پر وہ کمپنی بنانے والے کو نوے فی صد دے اور دس فی صد رقم خود رکھیں ۔۔ اس کو "ٹوٹلیٹی" بھی کہتے ہیں۔۔۔
    تو کیا یہ سود ہے اور اگر نہیں تو بھی یہ جائز ہے یا نہیں؟
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں