1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔۔
  2. محدث ٹیم منہج سلف پر لکھی گئی کتبِ فتاویٰ کو یونیکوڈائز کروانے کا خیال رکھتی ہے، اور الحمدللہ اس پر کام شروع بھی کرایا جا چکا ہے۔ اور پھر ان تمام کتب فتاویٰ کو محدث فتویٰ سائٹ پہ اپلوڈ بھی کردیا جائے گا۔ اس صدقہ جاریہ میں محدث ٹیم کے ساتھ تعاون کیجیے! ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔ ۔

کمیٹی کے پیسوں پر زکوۃ کا حکم

'زکوۃ' میں موضوعات آغاز کردہ از عمر اثری, ‏مئی 31، 2017۔

  1. ‏مئی 31، 2017 #1
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    3,727
    موصول شکریہ جات:
    971
    تمغے کے پوائنٹ:
    323

    السلام علیکم و رحمۃ اللہ وبرکاتہ

    ایک بہن کا سوال ہے:
    ہم نے کمیٹی میں پیسے جمع کروا رکھے ہیں. ماہانہ ٢٥٠٠٠ جاتے ہیں. اس بار قرعہ ہمارے نام کا نکلا. تو کیا اب ہمیں ان پیسوں پر زکاۃ دینی ہوگی؟ جبکہ ان پیسوں کو جمع کرواتے ہوئے ہمیں تقریباً ١ سال ہونے کو آ رہا ہے لیکن ہمیں ملا اس ماہ ہے. یا پھر اسکی زکاۃ آنے والے سال دینگے.
    براہ کرم رہنمائی کر دیں.....شکرا
    جزاکم اللہ خیرا
     
  2. ‏جون 01، 2017 #2
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    7,288
    موصول شکریہ جات:
    7,985
    تمغے کے پوائنٹ:
    921

    نصاب کو پہنچنے والی رقم پر ایک سال گزرنے کے بعد زکاۃ فرض ہوتی ہے ۔
    اگر نصاب کو پہنچ گئی ، لیکن سال نہیں ہوا ، یا سال ہوگیا ، لیکن نصاب کو نہیں پہنچی تو پھر زکاۃ فرض نہیں ہے ۔
    کمیٹی کی رقم کو الگ سے شمار نہیں کیا جائے گا ۔ بلکہ کل موجودہ رقم دیکھی جائے گی ،چاہے وہ کمیٹی میں شامل ہو یا نہ ہو ۔
    اگر کوئی ہر ماہ اڑھائی لاکھ کمیٹی دیتا ہے، اور یہ عمل کرتے ، اسے ایک سال ہوگیا ہے ، تواس کا مطلب ہے کہ اس کے پاس اتنے پیسے تھے ، جو نصاب کو بھی پہنچتے تھے ، اور ان پر سال بھی گزر چکا ہے ۔ لہذا اس تمام رقم کا حساب کرکے جو سال سے اس کی ملکیت میں موجود ہے ، اگر سونے یا چاندی (دونوں میں سے جس کے ساتھ مرضی ملا لے ) کے حساب سے اس میں سے زکاۃ ادا کرے ۔
    کمیٹی جمع کروانے کو چاہے پیسے جمع کرنا سمجھیں ، یا کسی کو قرض دینا، دونوں صورتوں میں اس شخص نے جتنی بھی کمیٹیاں جمع کرائی ہیں ، وہ اس کی ملکیت تصور کی جائیں گی ۔ ہاں البتہ اس میں دوسروں کی جو رقم ہے ، وہ اس کی شمار نہیں ہو گی ۔ واللہ اعلم بالصواب ۔
     
  3. ‏جون 01، 2017 #3
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    3,727
    موصول شکریہ جات:
    971
    تمغے کے پوائنٹ:
    323

    جزاکم اللہ خیرا محترم شیخ. بارک اللہ فی علمکم.
    کمیٹی کو عربی میں کیا کہتے ہیں؟؟؟ شاید اسے چٹی بھی بولتے ہیں؟؟؟؟
     
  4. ‏جون 01، 2017 #4
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    7,288
    موصول شکریہ جات:
    7,985
    تمغے کے پوائنٹ:
    921

    کمیٹی کے معنی میں لفظ ’ لجنۃ ‘ استعمال ہوتا ہے ۔
    لیکن یہاں ہمارے ہاں پیسے جمع کرنے کروانے کے جس معنی میں لفظ کمیٹی استعمال ہوتا ہے ، اس کے لیے عربی لفظ پتہ نہیں کیا ہے ۔ واللہ اعلم ۔
     
  5. ‏جون 01، 2017 #5
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    3,727
    موصول شکریہ جات:
    971
    تمغے کے پوائنٹ:
    323

    شکرا. اللہ آپکے علم و عمل میں برکت عطا فرمائے آمین
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں