1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

کیا اس درود کے الفاظ صحیح حدیث سے ثابت ہیں

'تحقیق حدیث سے متعلق سوالات وجوابات' میں موضوعات آغاز کردہ از ندیم محمدی, ‏نومبر 19، 2016۔

  1. ‏نومبر 19، 2016 #1
    ندیم محمدی

    ندیم محمدی مشہور رکن
    جگہ:
    Wah, Pakistan, Pakistan
    شمولیت:
    ‏جولائی 29، 2011
    پیغامات:
    347
    موصول شکریہ جات:
    1,274
    تمغے کے پوائنٹ:
    140

    [​IMG]
     
  2. ‏نومبر 19، 2016 #2
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,763
    موصول شکریہ جات:
    8,333
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    باوجود تلاش کے اس معنی و مفہوم کی روایت نہیں ملی ،
    مختلف قسم کی بے اصل روایات کو جوڑ کر شفاعت کے الفاظ ، اسی طرح اس میں بیان کیے گئے درود کے الفاظ مل جاتے ہیں ، لیکن سات جمعوں والی بات مجھے کہیں نظر نہیں آئی ۔
    بہر صورت جو ملا ہے ، اس میں بھی کسی قسم کی سند کا کوئی ذکر نہیں ، سوائے ایک روایت کے ، جو کہ اس طرح ہے :
    تخريج أحاديث الإحياء = المغني عن حمل الأسفار (ص: 220)
    حَدِيث "من صَلَّى عَلّي فِي يَوْم الْجُمُعَة ثَمَانِينَ مرّة غفر الله لَهُ ذنُوب ثَمَانِينَ سنة قيل يَا رَسُول الله كَيفَ الصَّلَاة عَلَيْك؟ قَالَ تَقول: اللَّهُمَّ صل عَلَى مُحَمَّد عَبدك وَنَبِيك وَرَسُولك النَّبِي الْأُمِّي، وتعقد وَاحِدَة، وَإِن قلت اللَّهُمَّ صل عَلَى مُحَمَّد وَعَلَى آل مُحَمَّد صَلَاة تكون لَك رِضَاء ولحقه أَدَاء وأعطه الْوَسِيلَة وابعثه الْمقَام الْمَحْمُود الَّذِي وعدته واجزه عَنَّا مَا هُوَ أَهله واجزه أفضل مَا جزيت نَبيا عَن أمته وصل عَلَيْهِ وَعَلَى جَمِيع إخوانه من النَّبِيين وَالصَّالِحِينَ يَا أرْحم الرَّاحِمِينَ"
    أخرجه الدَّارَقُطْنِيّ من رِوَايَة ابْن الْمسيب قَالَ أَظُنهُ عَن أبي هُرَيْرَة وَقَالَ حَدِيث غَرِيب وَقَالَ ابْن النُّعْمَان حَدِيث حسن.

    شاملہ کے ذریعے تلاش کرنے سے یہ روایت دارقطنی کی مؤلفات میں نہیں ملی ۔ واللہ اعلم
    درود کے الفاظ :
    باقی تمام الفاظ درست لگتے ہیں سوائے ’ صلاۃ تکون لک رضاء و لحقہ اداء ‘ اجنبی محسوس ہوتے ہیں ، کبھی کسی حدیث میں نہیں دیکھے ۔ واللہ اعلم بالصواب ۔
     
    • علمی علمی x 3
    • شکریہ شکریہ x 2
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں