1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

کیا اپنے آپ کو سگ مدینہ یعنی ''مدینے کا کتا''کہنا یا لکھنا جائز ہے؟

'تازہ مضامین' میں موضوعات آغاز کردہ از اسلام ڈیفینڈر, ‏جون 27، 2013۔

  1. ‏اکتوبر 18، 2018 #21
    difa-e- hadis

    difa-e- hadis رکن
    شمولیت:
    ‏جنوری 20، 2017
    پیغامات:
    287
    موصول شکریہ جات:
    25
    تمغے کے پوائنٹ:
    60

    محترم،
    اگر یہ سگ کہنا واقعتا وفاداری کے ضمن میں ہوتا تو شاید اپ کی بات قابل قبول ہوتی مگر یہ سگ جس پیرائے میں بولا جاتا ہے وہ سب پر واضح ہے یہاں سگ مدینہ وفاداری کے ضمن میں نہیں بلکہ اپنے آپ کو انتہائی کمتر اور بدتر ثابت کرنے کے لئے بولا جاتا ہے اور اس کے لئے اس کتے کی مثال دی جاتی ہے یہ میں اتنا گیا گزرا ہوں کے مدینہ کے شہر کے کتوں کے برابر ہوں تو یہاں وفاداری کے لئے نہیں اپنی تذلیل کے لئے بولا جاتا ہے اور انسان کو عاجزی اور انکساری کرنی چاہیے جو کہ شریعت کی پسندیدہ ہے اپنی تذلیل نہیں کیونکہ اللہ نے انسان کو اپنے ہاتھ سے بنا کر عزت بخشی ہے اور خوبصورت بنایا ہے اس کی تذلیل کرنا احسن نہیں ہے۔ اللہ ہدایت نصیب کرے
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں