1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

کیا صحیح مسلم میں مسنون رفع الیدین کے ترک کی دلیل ہے؟

'نماز' میں موضوعات آغاز کردہ از کفایت اللہ, ‏اپریل 29، 2011۔

موضوع کا سٹیٹس:
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔
  1. ‏اپریل 13، 2016 #81
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,539
    موصول شکریہ جات:
    731
    تمغے کے پوائنٹ:
    276

    آپکے فہم کی دلیل؟
    اور
    مصدر بهی؟
     
    Last edited: ‏اپریل 13، 2016
    • پسند پسند x 1
    • غیرمتعلق غیرمتعلق x 1
    • لسٹ
  2. ‏اپریل 13، 2016 #82
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,372
    موصول شکریہ جات:
    2,404
    تمغے کے پوائنٹ:
    791

    آپ نے پیارے نبی ﷺ کی سنت رفع الیدین کو شریر گھوڑوں کی دموں سے تشبیہ دینے کیلئے درجنوں پوسٹیں لگادیں،
    اور خیر سے آپ کو یہ بھی نہیں پتا کہ:
    سید المحدثین جناب امام بخاری ؒ نے یہ حدیث کہیں نقل فرمائی ہے۔۔یا۔۔نہیں ،
    اور ان کا اس بارے کیا موقف ہے ،
    لیکن آپ کا بھی قصور نہیں ۔۔۔دراصل اوکاڑوی بس میں سوار مقلدین کو بخاری اور صحیح بخاری سے کچھ زیادہ ہی پرہیز ہے ،
    خیر آپ کی پسند ، اور مرضی
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    ہم دیگر قارئین کیلئے سیدنا جابر بن سمرہ رضی اللہ عنہ کی حدیث کے متعلق جناب امام بخاریؒ کی توضیح و بیان
    نقل کرتے ہیں :
    امام بخاری رحمہ اللہ " قرة العينين برفع اليدين في الصلاة " میں اس حدیث کو بالاسناد نقل کرکے فرماتے ہیں :
    قال البخاري: وأما احتجاج بعض من لا يعلم بحديث وكيع عن الأعمش عن المسيب بن رافع عن تميم بن طرفة عن جابر بن سمرة قال: دخل علينا النبي صلى الله عليه وسلم , ونحن رافعي أيدينا في الصلاة فقال:
    «ما لي أراكم رافعي أيديكم كأنها أذناب خيل شمس؟ اسكنوا في الصلاة،
    فإنما كان هذا في التشهد لا في القيام»
    كان يسلم بعضهم على بعض فنهى النبي صلى الله عليه وسلم عن رفع الأيدي في التشهد , ولا يحتج بمثل هذا من له حظ من العلم، هذا معروف مشهور لا اختلاف فيه , ولو كان كما ذهب إليه لكان رفع الأيدي في أول التكبيرة , وأيضا تكبيرات صلاة العيد منهيا عنها؛ لأنه لم يستثن رفعا دون رفع "

    یعنی "جہاں تک علم حدیث سے محروم کچھ لوگوں کا جابر بن سمرہ رضی اللہ عنہ کی حدیث سے استدلال کرنا
    جس میں ہے کہ :

    جابر بن سمرہ فرماتے ہیں : رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ہمارے پاس تشریف لائے اور ہم نماز میں اپنے ہاتھ اٹھا رہے تھے ،تو فرمایا کیا وجہ ہے کہ میں تم کو ہاتھ اٹھاتے ہوئے دیکھتا ہوں گویا کہ سرکش گھوڑوں کی ہیں، نماز میں سکون رکھا کرو "
    بخاری ؒ فرماتے ہیں : یہ عمل ( نماز کے آخری قعدہ کے ) تشہد میں تھا ،کہ وہ ایک دوسرے کو ہاتھ کے اشارے سے سلام کررہے تھے ،
    تو اس واقعہ کے حکم سے (رکوع والے رفع یدین کے خلاف ) کوئی اہل علم دلیل نہیں لیتا ،
    یہ معروف و مشہور بات ہے (کہ یہ واقعہ سلام والے تشہد کے وقت سے متعلق ہے ) اس میں کوئی اختلاف نہیں ،

    اور اگر واقعی ایسا ہوتا ،جیسا کہ علم حدیث سے تہی دامن کچھ لوگوں کا استدلال ہے تو نماز کی افتتاحی تکبیر کے ساتھ رفع الیدین ،اور عیدین کی نمازوں میں (تکبیرات زوائد ) میں رفع الیدین بھی منع ہوتی "
    ـــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ

    آپ نے دیکھا امام بخاریؒ نے اس حدیث کو باقاعدہ اس کی سند کے ساتھ نقل فرماکر
    وضاحت فرمائی کہ اس کا رکوع والے مسنون رفع یدین سے کوئی تعلق نہیں ، یہ نماز کے سلام کے وقت دائیں ،بائیں موجود نمازیوں کو ہاتھوں کے اشارے سے سلام کرنے کے بارے میں ہے ،
    اور ساتھ ہی فرمایا کہ اس حدیث سے رکوع جانے ،اور رکوع سے اٹھنے کے وقت والے رفع الیدین کی ممانعت کیلئے استدلال کرنے والا ،علم حدیث سے محروم ہے ،،
    اس لئے پیارے مصطفی صلی اللہ علیہ وسلم کی سنت سے محبت کرنے والو :
    اس سنت کو بڑی محبت اور اہتمام سے اپناؤ ۔۔اور دوسرں تک بھی پہنچاؤ ۔
     
    Last edited: ‏اپریل 13، 2016
  3. ‏اپریل 13، 2016 #83
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,539
    موصول شکریہ جات:
    731
    تمغے کے پوائنٹ:
    276

    بهٹی صاحب
    اس پوسٹ کو روز سو بار پڑہنا
    جسطرح بچے 2 اور 3 کا پہاڑا یاد کرتے ہیں ۔
    آپ خود کی پوسٹ بهی نہیں پڑہتے کیا لکہا ہے آپ نے ؟
    میں اسی وقت توجہ نا کرسکا میری غلطی ہے ۔
     
    • پسند پسند x 3
    • متفق متفق x 1
    • غیرمتعلق غیرمتعلق x 1
    • لسٹ
  4. ‏اپریل 13، 2016 #84
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,539
    موصول شکریہ جات:
    731
    تمغے کے پوائنٹ:
    276

    یعنی :
    حدیث کو سمجہایا ہمیں امام اعظم بخاری رحمہ اللہ نے اور ایک باب بهی باندہا کتاب میں۔
    اسے کہتے ہیں مسنون رفع الیدین اور امام اعظم بخاری رحمہ اللہ کے درجات اللہ بلند کرے۔
    آمین
     
    • پسند پسند x 2
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  5. ‏اپریل 13، 2016 #85
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,539
    موصول شکریہ جات:
    731
    تمغے کے پوائنٹ:
    276

    جزاک اللہ خیرا
    اسحاق بهائی اللہ آپ کے علم و عمل میں برکت دے ۔
    آمین
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  6. ‏اپریل 13، 2016 #86
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,372
    موصول شکریہ جات:
    2,404
    تمغے کے پوائنٹ:
    791

    یہ حدیث امام بخاری رحمہ اللہ نے رفع الیدین پر اپنی علیحدہ مستقل تصنیف
    " قرة العينين برفع اليدين "
    یعنی " جزء رفع الیدین " میں نقل کی ہے ؛
     
    • پسند پسند x 1
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
  7. ‏اپریل 13، 2016 #87
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,777
    موصول شکریہ جات:
    8,339
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    یہ دوسرا تھریڈ ہے ، جس میں ہٹ دھرمی اور جہالت کی انتہا اور اس پر اصرار کیا جارہا ہے ، میرے خیال میں بھٹی صاحب اپنی عقل و خرد اور اخلاقیات کی قربانی دے کر لوگوں کو قرآن وسنت کا نام لینے والوں سے متنفر کرنے کی ذرا بالواسطہ چال چل رہے ہیں ۔ یعنی بظاہر تو قرآن و حدیث کا نام لے رہے ہیں ، لیکن استدلال ، اور فہم اس قدر بھونڈا ، اور سطحی ہے کہ دیکھنے والے یہ سمجھنے پر مجبور ہو جائیں گے کہ شاید جو بھی قرآن و سنت کا نام لیتا ہے ، وہ اسی طرح کے عقل و فہم کا مالک ہوتا ہے ۔ انا للہ و انا الیہ رجعون ۔
    ٹھیک ہے ، بحث و مباحثہ ہونا چاہیے ، لیکن کسی صاحب علم کی پوسٹوں کے نیچے اس طرح کی ہزلیات مناسب نہیں ہیں ۔ میں اسحاق سلفی صاحب سے گزارش کروں گا کہ اگر وہ اس بحث و مباحثہ کو روکنے پر راضی ہیں تو میں اس تھریڈ کو مقفل اور ۔۔۔۔ کرنا چاہتا ہوں ۔
     
    • متفق متفق x 3
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  8. ‏اپریل 13، 2016 #88
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,372
    موصول شکریہ جات:
    2,404
    تمغے کے پوائنٹ:
    791

    جی بالکل اس تھریڈ کو مقفل کردیں ،میں اپنے دلائل و جوابات پیش کر چکا ،
     
    • پسند پسند x 3
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  9. ‏اپریل 14، 2016 #89
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,539
    موصول شکریہ جات:
    731
    تمغے کے پوائنٹ:
    276

    السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

    محترم خضر بهائی اور محترم اسحاق بهائی ۔
    جیسا مناسب سمجہیں ۔
    والحمد لله رب العالمين
     
  10. ‏اپریل 14، 2016 #90
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,539
    موصول شکریہ جات:
    731
    تمغے کے پوائنٹ:
    276

    السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

    معذرت اور اعتراف
    بعض تہریڈ میں میری بعض تحریروں کی وجہ سے مخالف باحث کو تکلیف پہونچی اور میرا انداز تحریر معیار سے گرا ہوا تہا جو کہ میری فطرت سے مطابق نہیں ۔ مجہے اعتراف اور ندامت ہے ۔ متعلقہ فرد سے ، جملہ قارئین سے اور موقر ادارہ سے معذرت۔
    اللہ سبحانہ تعالی مجہے معاف کرے۔
    میں اپنی اصلاح کی کوشش ضرور کرونگا ۔
    آپ سب کی دعاوں کی ضرورت مجہے ہمیشہ رہیگی ، اپ سب اپنی دعاوں میں مجہے شامل رکہیں ۔
    اب آپ چاہیں تو یہ تہریڈ بند کرلیں ۔
    والسلام
     
    • پسند پسند x 4
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...
موضوع کا سٹیٹس:
مزید جوابات پوسٹ نہیں کیے جا سکتے ہیں۔

اس صفحے کو مشتہر کریں