1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

کیا لفظ ’‘ حضرت ’‘ بولنا جائز نہیں؟؟

'عقیدہ اہل سنت والجماعت' میں موضوعات آغاز کردہ از اسحاق سلفی, ‏دسمبر 09، 2014۔

  1. ‏دسمبر 18، 2014 #11
    میر مراد

    میر مراد رکن
    شمولیت:
    ‏جولائی 17، 2011
    پیغامات:
    39
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    53

    جزاك الله
     
  2. ‏دسمبر 02، 2016 #12
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,777
    موصول شکریہ جات:
    8,337
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    ایک واٹس ایپ گروپ میں بحث چل رہی تھی ، مفتی عبید اللہ عفیف صاحب کا فتوی یہاں سے نقل کرکے وہاں بھیجا ۔
     
  3. ‏دسمبر 08، 2016 #13
    ام حماد

    ام حماد رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏ستمبر 09، 2014
    پیغامات:
    96
    موصول شکریہ جات:
    65
    تمغے کے پوائنٹ:
    42

    جزاکم اللہ خیرا
    لیکن اگر آسان اردو میں بطور خلاصہ درج کر دیا جایے تو مجھ جیسے نو آموز بھی آسانی سے استفادہ کرتے
    بھایی محسوس مت کیجیے گا
     
  4. ‏دسمبر 09، 2016 #14
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,372
    موصول شکریہ جات:
    2,402
    تمغے کے پوائنٹ:
    791

    پاکستان ، ہندوستان میں اردو ، پنجابی میں دینی عالم اور خطیب ، امام کو بالعموم ۔۔ مولانا ۔۔ کہا جاتا ہے ،
    مولانا کا معنی ہے ۔۔ ہمارے آقا، سردار ، مالک ، بڑا ، مددگار، انتہائی معزز وغیرہم
    اس ۔۔ لفظ ۔۔ کو اہل علم وغیرہ انسانوں کیلئے استعمال پر سوال یا اعتراض اسلئے پیدا ہوا کہ قرآن مجید میں یہ لفظ اللہ رب ذوالجلال کیلئے آیا ہے
    سورۃ البقرۃ میں ارشاد ہے :
    (وَاغْفِرْ لَنَا وَارْحَمْنَا أَنْتَ مَوْلَانَا ) یعنی اے اللہ ! تو ہی ہمارا مولا ہے ‘‘
    اس کا جواب گذشتہ پوسٹوں میں دیا گیا ہے کہ :
    قرآن و حدیث میں یہ ۔۔ لفظ ۔۔ مولانا ۔۔ بندوں کیلئے بھی دوسرے معنوں میں استعمال کیا گیا ، جو اس بات کی دلیل ہے کہ کسی عالم و متقی کو بھی ۔۔ مولانا ۔۔ کہا جاسکتا ہے ؛
    جیسے لفظ ۔۔ مالک ۔۔ اللہ کیلئے قرآن میں استعمال کیا گیا ہے ، لیکن دوسری طرف انسانوں کیلئے بھی ہم یہ لفظ حسب موقع استعمال کرتے ہیں ،
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں