1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔۔
  2. محدث ٹیم منہج سلف پر لکھی گئی کتبِ فتاویٰ کو یونیکوڈائز کروانے کا خیال رکھتی ہے، اور الحمدللہ اس پر کام شروع بھی کرایا جا چکا ہے۔ اور پھر ان تمام کتب فتاویٰ کو محدث فتویٰ سائٹ پہ اپلوڈ بھی کردیا جائے گا۔ اس صدقہ جاریہ میں محدث ٹیم کے ساتھ تعاون کیجیے! ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔ ۔

کیا نماز میں سیٹی مارنے اور تالی بجانے سے نماز قبول نہیں ہوتی؟؟؟

'نماز' میں موضوعات آغاز کردہ از عمر اثری, ‏مئی 02، 2017۔

  1. ‏مئی 02، 2017 #1
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    3,929
    موصول شکریہ جات:
    1,013
    تمغے کے پوائنٹ:
    331

    السلام علیکم و رحمۃ اللہ وبرکاتہ

    کیا نماز میں سیٹی مارنے اور تالی بجانے سے نماز قبول نہیں ہوتی؟؟؟
    کیا یہ حرکت ایسی ہے کہ نماز باطل ہو جاتی ہے؟؟؟
    اگر کسی نے غلطی سے ایسا عمل کر دیا تو اسکی نماز کا کیا حکم ہوگا؟؟؟

    نوٹ: یہاں بھولنے پر عورتوں کے حق میں مشروع تالی (التصفیق للنساء) مراد نہیں.


    محترم شیخ @خضر حیات حفظہ اللہ
    محترم شیخ @اسحاق سلفی حفظہ اللہ
     
  2. ‏مئی 03، 2017 #2
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    7,475
    موصول شکریہ جات:
    8,028
    تمغے کے پوائنٹ:
    921

    و علیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
    اس مسئلہ کو اس انداز سے دیکھنا چاہیے کہ نماز کے اندر افعال نماز سے ہٹ کر جو حرکات کی جاتی ہیں ، اس کی مختلف صورتیں ہوسکتی ہیں ، مثلا امام بھول جائے تو سبحان اللہ کہنا ، یا قرآن مجید کی درست آیت بتانا وغیرہ ۔
    اس طرح کی حرکت جائز بلکہ مستحب ہے ۔
    البتہ ایسی حرکت کرنا جس کا نماز کے ساتھ کوئی تعلق نہیں ، اور نماز کے خشوع و خضوع کے منافی ہے ، مثلا سر میں یا ناک میں یا ادھر ادھر ہاتھ مارنا ، یہ اگر ایک آدھ بار ہو تو ناپسندیدہ عمل ہے ، لیکن نماز بہر صورت باطل نہیں ہوگی ۔
    البتہ کوئی ایسی حرکت جو نماز کے خشوع و خضوع کے اس طرح منافی ہو کہ انسان نماز کی بجائے ، کسی اور حالت میں نظر آئے ، مثلا قہقہہ وغیرہ لگانا ، علماء کے نزدیک اس سے نماز باطل ہوجاتی ہے ، اور ایسے انسان نے اگر جان بوجھ کر ایسا کیا ہے ، تو اسے نماز جیسی عظیم عبادت سے استہزاء و توہین سے توبہ کرنی چاہیے ۔
    نماز میں سیٹیاں یا تالیاں مارنا یہ اسی قبیل سے محسوس ہوتا ہے ۔ واللہ اعلم بالصواب ۔
    نماز میں جائز و ناجائز ’ حرکات ‘ کی تفصیل جاننے کے لیے اس لنک کو دیکھیں ۔
     
  3. ‏مئی 03، 2017 #3
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    3,929
    موصول شکریہ جات:
    1,013
    تمغے کے پوائنٹ:
    331

    جزاکم اللہ خیرا محترم شیخ.
    اللہ آپکے علم و عمل میں برکت عطا فرمائے آمین
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں