1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

کیا ڈاکٹر فرحت ہاشمی صاحبہ سے علم حاصل کرسکتے ہیں؟؟

'متفرقات' میں موضوعات آغاز کردہ از ام حسان, ‏جون 03، 2015۔

  1. ‏جون 03، 2015 #1
    ام حسان

    ام حسان رکن
    شمولیت:
    ‏مئی 12، 2015
    پیغامات:
    56
    موصول شکریہ جات:
    30
    تمغے کے پوائنٹ:
    32

    السلام علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ

    کیا ڈاکٹر فرحت ہاشمی صاحبہ سے علم حاصل کرسکتے ہیں؟؟
    کیا وہ منہج سلف پر ہیں؟؟

    جزاکم اللہ خیرا
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • مفید مفید x 2
    • ناپسند ناپسند x 1
    • لسٹ
  2. ‏جون 04، 2015 #2
    ام حسان

    ام حسان رکن
    شمولیت:
    ‏مئی 12، 2015
    پیغامات:
    56
    موصول شکریہ جات:
    30
    تمغے کے پوائنٹ:
    32

    اتنے بڑے پیمانے پر ڈاکٹر صاحبہ دعوت و تبلیغ کا کام کررہی ہیں، لیکن پھر بھی مجہول ہیں۔ ان کا منہج واضح نہیں ہورہا۔ میں نے ان کی طالبات سے بھی پوچھا لیکن کسی سے مجھے واضح جواب نہیں ملا۔
    یہ جو لنک دی جارہی ہے ، ان ہی کی طالبات کی ہے۔ یہاں پر مولانا مودودی اور ڈاکٹر اسرار احمد کی تفسیر موجود ہے۔
    http://www.livequraneverymoment.org/
    تحقیق صرف اس لیے کر رہی ہوں کیونکہ واٹس اپ پر مجھے انکے تعلیمی حلقوں میں شامل کیا گیا تھا۔ چونکہ انکا منہج واضح نہیں، اسلیے میں نے وہ سارے گروپس چھوڑ دیے۔ اور مجھے دیکھ کر کئی خواتین یہی قدم اٹھا رہی ہیں۔ اور علمی حلقوں سے محروم ہورہی ہیں۔
    کیا آپ میں سے کسی کو انکا منہج معلوم ہے؟؟؟
    جزاکم اللہ خیرا فی الدنیا و الآخرۃ
     
    • شکریہ شکریہ x 3
    • پسند پسند x 3
    • لسٹ
  3. ‏جون 04، 2015 #3
    میرب فاطمہ

    میرب فاطمہ مشہور رکن
    جگہ:
    لاھور
    شمولیت:
    ‏جون 06، 2012
    پیغامات:
    195
    موصول شکریہ جات:
    214
    تمغے کے پوائنٹ:
    107

    میں نے بھی الہدی سے پڑھا ہے۔ مگر فرحت ہاشمی کی شاگردوں سے۔ یہ خود کو سلفی یا اہلحدیث کہنے سے گریز کرتی ہیں۔ مگر تعلیم قرآن وسنت کی ہی دیتی ہیں۔جن سے میں نے پڑھا ان سے مجھے چند اختلافات بھی ہوئے۔ جیسے چہرے کا پردہ نہ کرنا، پلکنگ کو جائز کہنا، ابولہب کو پانی پلائے جانا(جو کہ بخاری کی ایک خواب والی حدیث سے استدلال تھا)،اور اصول حدیث سے ناواقفیت۔۔۔۔ یہ صرف میں انکا کہہ رہی جن الہدی کی اساتذہ سے میں نے پڑھا۔ میرے علاوہ بھی عامہ ،خاصہ کرنے والی بہت سی لڑکیوں کو ان سے اختلافات تھے۔
     
    • معلوماتی معلوماتی x 4
    • شکریہ شکریہ x 3
    • پسند پسند x 1
    • ناپسند ناپسند x 1
    • لسٹ
  4. ‏جون 04، 2015 #4
    میرب فاطمہ

    میرب فاطمہ مشہور رکن
    جگہ:
    لاھور
    شمولیت:
    ‏جون 06، 2012
    پیغامات:
    195
    موصول شکریہ جات:
    214
    تمغے کے پوائنٹ:
    107

    لیکن اگر ان اختلافات کو چھوڑا جائے تو ان کا طریقہ بہت عمدہ ہے پڑھانے کا، بہت محنتی بھی ہیں۔
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • متفق متفق x 2
    • پسند پسند x 1
    • معلوماتی معلوماتی x 1
    • لسٹ
  5. ‏جون 05، 2015 #5
    اخت ولید

    اخت ولید سینئر رکن
    جگہ:
    ارض اللہ الواسعہ
    شمولیت:
    ‏اگست 26، 2013
    پیغامات:
    1,790
    موصول شکریہ جات:
    1,265
    تمغے کے پوائنٹ:
    326

    وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
    ڈاکٹر فرحت ہاشمی صاحبہ کا منہج عام افراد کے لیے مجہول ہے۔وہ اور ان کی طالبات اپنے آپ کواہل حدیث کہلوانے سے سختی سے گریز کرتی اور مسلمان کہلوائے جانا پسند کرتی ہیں۔اور جہاں تک بات ہے چہرے کے پردے کی تو ایسا میرے علم میں تو نہیں۔ان کا موقف ہے کہ ہم بتا سب کچھ دیتے ہیں،عمل آپ کی ذمہ داری ہے۔ان کے ادارے کی ایک طالبہ نے تعلیم القرآن کے بعد شرعی پردہ کیا تھا۔ایک اور باعث اختلاف بات "کسی کو برا نہ کہنا"ہے۔ہمیں تبلیغ کی ضرورت ہے،برا بھلا کہنے کی نہیں۔۔پر کئی مواقع جہاں لعنت ملامت لازم ٹھہرتی ہے،ان کی طالبات کی جانب سے نا پسندیدہ خیال کیے جاتے ہیں۔بہرحال شاگرد کے موقف پر استاد کو ذمہ دار جاننا کسی طور مناسب نہیں۔شاگرد کےاعمال استاد کے اعمال کا عکس نہیں ہوتے۔استاداور استاد کے شاگرد بلکہ شاگرد در شاگرد کے موقف میں بہت فرق ہوتا ہے۔کچھ دیگر معاملات میں ان کا موقف ڈھیلا تصور کیا جاتا ہے۔بہرحال کوئی شخص غلطی سے مبرا نہیں،جہاں خلاف قرآن و حدیث بات آئے،یہ ہماری ذمہ داری ہے کہ اسے چھوڑ دیں۔جہاں تک تعلق ہے مولانا مودوی اور ڈاکٹر اسرار احمد کی تفاسیر کا ،تویہ اہل حدیث مکاتب میں بھی عموما میسر ہوتی ہیں۔کوئی ایسی بڑی بات نہیں،جو خلاف شرع بات ہو،اسے چھوڑنا چاہیے۔بمطابق شرع بات علامہ زمخشری کی بھی مانی جاتی ہے۔
    ان کے حلقات بہت مفید ہوتے ہیں۔چھوٹی موٹی کمی کوتاہیاں ہر جگہ ہیں۔اگر کوئی بات مشتبہ معلوم ہو تو اسے دیکھ پرکھ لیں۔بہرحال میرا مشورہ یہی ہو گا کہ آپ ضرور ان کے حلقات سے مستفید ہوں۔
     
    • معلوماتی معلوماتی x 3
    • شکریہ شکریہ x 1
    • ناپسند ناپسند x 1
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  6. ‏جون 05، 2015 #6
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,957
    موصول شکریہ جات:
    6,504
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    شیخ @اسحاق سلفی بھائی اسلام میں منہج کی کیا اہمیت ہے اور باطل جماعتوں سے فرق کے لئے نام (اہل حدیث اور سلفی) کی کیا اہمیت ہیں ؟؟
     
  7. ‏جون 05، 2015 #7
    ام حسان

    ام حسان رکن
    شمولیت:
    ‏مئی 12، 2015
    پیغامات:
    56
    موصول شکریہ جات:
    30
    تمغے کے پوائنٹ:
    32

    یہی تو بات ہے۔۔۔
    میری بہن!!!
    اپنے آپ کو صرف مسلمان کہنا کافی نہیں۔
    ذرا غور کریے کہ جو لفظ یا جو لقب صحیح منہج کا حامل ہے ، اسکو چھپانے کا کیا معنی؟؟؟
    اور یہ لفظ دعوت دین کی راہ میں رکاوٹ کیسے بن گیا؟؟؟
    شیخ محترم عبداللہ ناصر رحمانی حفظہ اللہ کہتے ہیں کہ : "یہ لفظ تو صداقت کا ترجمان ہے، حق کی پہچان ہے"
    " ایک ایسے لفظ کو رکاوٹ بنا دینا جو لفظ صحیح عقیدے، سچی توحید، نبی صلی اللہ علیہ وسلم سے سچی محبت، سچے منہج اور سچے عقیدے کا ترجمان ہو، ایسے لفظ کو دعوت دین کی راہ میں رکاوٹ سمجھنا انتہائی حقیر سوچ ہے۔ ایسے شخص کی فکر اور ایسے شخص کا ذہن بیمار ہے۔"
    اور جو اسکالر اپنا منہج واضح نہیں کرتے ان سے علم حاصل کرنا کوئی خطرے سے خالی نہیں۔
     
    • شکریہ x 2
    • پسند x 2
    • متفق x 2
    • زبردست x 2
    • ناپسند x 1
    • معلوماتی x 1
    • لسٹ
  8. ‏جون 06، 2015 #8
    بنات خدیجہ

    بنات خدیجہ رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 01، 2014
    پیغامات:
    115
    موصول شکریہ جات:
    57
    تمغے کے پوائنٹ:
    54

    وعلیکم السلام و رحمۃ اللہ و برکاتہ
    ماشاء اللہ ۔ میں ام حسان سے متفق ہوں۔
    یہ منہج سلف ہے کہ جن کا منہج واضح ہو صرف انہیں سے علم لیا جائے۔
    اور جن کا منہج مجہول ہو ان کی کوئی بات شریعت کے موافق سامنے آجائے تو اس کو رد نہیں کیا جاسکتا ، لیکن ان سے علم حاصل کرنا ٹھیک نہیں۔ جیسے ابو الاعلی مودودی کی مثال لے لیجئے، ان کی تفسیر تفہیم القرآن میں شریعت کے موافق لکھا ہے لیکن سورہ ملک آیت ام امنتم من فی السماء کی تفسیر میں لکھا ہوا ہے کہ اللہ آسمانوں میں نہیں ہے۔ جو کفر ہے۔
    اب ابو الاعلی مودودی کی کتابیں نہیں پڑھنی چاہئے کیونکہ ان کا عقیدہ کفریہ تھا۔
    اگر ان کی کوئی بات قرآن و حدیث کے مطابق آجائے تو اس کو رد بھی نہیں کیا جاسکتا۔ لیکن ان سے علم حاصل کرنا ٹھیک نہیں۔
    جب تک ان کا منہج واضح نہ ہو ان کے حلقات سے خارج ہوجانا ہی بہتر ہے۔
     
  9. ‏جون 06، 2015 #9
    بنات خدیجہ

    بنات خدیجہ رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 01، 2014
    پیغامات:
    115
    موصول شکریہ جات:
    57
    تمغے کے پوائنٹ:
    54

    اسی طرح ڈاکٹر ذاکر نائک اور مفتی مینک کا بھی منہج واضح نہیں ہے۔
     
    • پسند پسند x 2
    • معلوماتی معلوماتی x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  10. ‏جون 07، 2015 #10
    میرب فاطمہ

    میرب فاطمہ مشہور رکن
    جگہ:
    لاھور
    شمولیت:
    ‏جون 06، 2012
    پیغامات:
    195
    موصول شکریہ جات:
    214
    تمغے کے پوائنٹ:
    107

    اگر کوئی قرآن وسنت کی دعوت دے مگر خود کو وہابی ، اہلحدیث وغیرہ نہ کہے تو کیا آپ کے نزدیک اسکا منہج واضح نہیں؟ جبکہ فرقہ ناجیہ کی پہچان اور انکا منہج "ما انا علیہ واصحابی" بتائی گئی ہے۔ نہ کہ انکا نام۔۔۔
     
    • متفق متفق x 6
    • شکریہ شکریہ x 3
    • پسند پسند x 2
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں