1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

کیا ڈاکٹر فرحت ہاشمی صاحبہ سے علم حاصل کرسکتے ہیں؟؟

'متفرقات' میں موضوعات آغاز کردہ از ام حسان, ‏جون 03، 2015۔

  1. ‏جون 11، 2015 #41
    arifjamal101

    arifjamal101 مبتدی
    شمولیت:
    ‏مئی 11، 2015
    پیغامات:
    21
    موصول شکریہ جات:
    0
    تمغے کے پوائنٹ:
    7

    جناب ڈاکٹر ذاکر نائک کے منہج کے متعلق ایک کتابچہ کچھ عرصہ قبل تک انٹرنیٹ پر موجود تھا جس کا عنوان تھا "اہل حدیث پر ڈاکٹر ذاکر نائیک کے اعتراضات اور ان کا جواب". اگر آپ کی نظر سے نہ گزری ہو تو ان شاہ اللہ میرے آرکائیو میں مل جا ئیگی. ڈاکٹر صاحب جہاں خود کو سلفی اہل حدیث کہلوانا پسند نہیں کرتے وہیں انہوں نے اہل حدیثوں کے درمیان چند ایسے مسئلے پیدا کر دیے ہیں وہ اس سے پہلے کبھی نہیں تھے. اس کی تفصیلی وضاحت سے معاملے کی نوعیت واضح ہو جائیگی ان شاءاللہ.
     
  2. ‏جون 11، 2015 #42
    ابن داود

    ابن داود فعال رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    3,176
    موصول شکریہ جات:
    2,641
    تمغے کے پوائنٹ:
    556

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!

    مجھے وہ مصرعہ یاد آگیا کہ: دل کو رو لوں تو پوچھوں جگر کو میں

    میں اپنے محدود علم کی بنیاد پر یہ عرض کرنا چاہوں گاکہ منہج اہل حدیث سے اختلاف کی بنیاد پر اہل بدعت کے درجات ہیں، اور ان درجات کی نوعیت و کیفت کی بناء پر کوئی راوی اور اس کی حدیث مقبول یا مردود ٹھہرتی ہے، اسی طرز پر علوم دینی بھی حاصل کیا جا سکتا ہے۔ ماشاء اللہ ! تھریڈ میں تمام اہل علم اراکین اس بحث میں شامل ہیں۔ وہ جرح و تعدیل کے اس بنیادی اصول سے واقف ہونگے!

    ڈاکٹر فرحت ہاشمی ہوں یا ڈاکٹر ذاکر نائک، ان سے کن امور میں علماء اہل الحدیث نے اختلاف کیا ہے؟ اہل حدیث کہلوانےمیں، یا اہل البدعت کے ساتھ شریک ہونے اور انہیں اپنے پروگرامز میں شریک ہونے میں؟

    جہاں تک بات رہی ، مولانا مودودی اور اور ڈاکٹر اسرار کی تفاسیر کی موجودگی!! تو محترمہ! علمائے اہل حدیث زمخشری معتزلی کی الکشاف اور فخر الدین الرازی کی مفاتح الغیب بھی مطالعہ میں رکھتے ہیں۔ اگر ان کتابوں کی تدریس تنقیح و تصحیح کے ساتھ کی جائے، تو یہ تو ہمیشہ سے علماء اہل حدیث کا طریقہ رہا ہے!

    میرے مؤقف میں کوئی کمی خامی ہو تو برائے کرم اصلاح فرمائیں!
     
  3. ‏جون 11، 2015 #43
    شاہد نذیر

    شاہد نذیر سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏فروری 17، 2011
    پیغامات:
    1,940
    موصول شکریہ جات:
    6,202
    تمغے کے پوائنٹ:
    412

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!

    ڈاکٹر فرحت نسیم ہاشمی صاحبہ کے منہج کے بارے میں تو مجھے زیادہ علم نہیں ہے کیونکہ موصوفہ کھل کر سامنے نہیں آتیں لیکن ان کے مدرسہ میں تیار ہونے والی لڑکیاں جو چھوٹے چھوٹے کورس کرکے خود تدریس کرنے لگتی ہیں ضرور معاشرے میں فتنہ و فساد پھیلا رہی ہیں۔ یہ لڑکیاں ایک دو مختصر کورس کرکے خود کو بہت بڑی علامہ اور مفتی سمجھنے لگتیں ہیں اور علماء کو بھی خاطر میں نہیں لاتیں۔ خواتین کو الٹے سیدھے مسائل سمجھانے لگتیں ہیں ان میں سے اکثر مساجد میں خواتین کے لئے مخصوص جگہ کو درس و تدریس کے لئے منتخب کرتی ہیں پھر کبھی خود حالت حیض میں اور کبھی طالبات ناپاکی کی حالت میں مساجد میں گھنٹوں بیٹھ کر مسجد کا تقدس خراب کرتی ہیں اور اسے جائز سمجھتیں ہیں بلکہ اس پر مناظرے کے لئے بھی تیار ہوجاتیں ہیں اسی ناپاکی کی حالت میں قرآن کو بنا رکاوٹ چھونے کو جائز سمجھتی ہیں اور قرآن کی تلاوت میں بھی کوئی حرج نہیں سمجھتیں۔ یہ معلمات آئی برو بھی بنواتیں ہیں شاید اس کو جائز سمجھتیں ہیں! بعض معلمات کو تو ہم نے دیکھا ہے کہ لڑکوں سے چکر چلاتی ہیں ٹیلیفون پر ان سے گھنٹوں گفتگو کرتی ہیں مساجد کو ہی ڈیٹ پوائنٹ بنا کر اللہ کے گھر میں لڑکوں سے ملاقاتیں کرتی ہیں لیکن پھر بھی ان کی دینداری میں کوئی فرق نہیں آتا اور نہ ہی ان کی دینداری قابل چیلنج ہوتی ہے۔ حالیہ دنوں میں راقم نے اسی مسئلہ پر ایک سو دس صفحات پر مشتمل مضمون لکھا ہے جو جلد پندرہ روزہ صحیفہ اہل حدیث میں قسط وار شائع ہوگا۔ ان شاء اللہ
    کوشش کروں گا کہ محدث فورم پر بھی جلد اس مضمون کو پیش کردوں۔ حالانکہ مہینہ بھر سے مضمون تیار ہے لیکن مضمون کی طوالت کی وجہ سے محدث فورم پر پیش نہیں کیا کہ اتنے طویل مضمون کو کون پڑھے گا۔ لیکن چونکہ اب یہ بحث چل نکلی ہے تو خیال آیا کہ مضمون پیش کرہی دیا جائے۔
     
    • متفق متفق x 1
    • معلوماتی معلوماتی x 1
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
  4. ‏جون 11، 2015 #44
    ابن داود

    ابن داود فعال رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    3,176
    موصول شکریہ جات:
    2,641
    تمغے کے پوائنٹ:
    556

    کچھ اسی طرح کی باتیں لوگ بعض مردوں سے متعلق بھی کہتے ہیں!! اور یہ اعتراض غلط نہیں لیکن، صورت اصلاح کی ہونی چاہئے!! فتدبر!!

    کیا یہ امور علمائے اہلحدیث کے مابین مختلف فیہ نہیں؟؟ راجح مرجوح مسائل میں یہ شدت مناسب نہیں!!

    اب اگر کوئی شخص مرد ہو یا عورت کسی غیر شرعی فعل کا مرتکب ہے، تو اسے اس کا قائل قرار دینا زیادتی ہے۔
    ایک حل یہ ہو سکتا ہے کہ ہم بھی مقلدین احناف کی طرح نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی حدیث کی مخالفت کرتے ہوئے عورتوں کی مسجد میں آمد پر پابندی لگا دیں!!! فتدبر!!!
     
    • پسند پسند x 2
    • متفق متفق x 1
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
  5. ‏جون 11، 2015 #45
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,957
    موصول شکریہ جات:
    6,504
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    بھائی ایک دائی کو یہ انداز زیب نہیں دیتا
     
  6. ‏جون 11، 2015 #46
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,957
    موصول شکریہ جات:
    6,504
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

  7. ‏جون 11، 2015 #47
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,957
    موصول شکریہ جات:
    6,504
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    عبدالمنان

    سورہ توبہ ،آیت 122،سے یہ بات بھی معلوم ہوتی ہے کہ آدمی اسی وقت لوگوں کو دین کی دعوت دے جب وہ خود علماء سے علم حاصل کرے ،اس لے داعی کا علماء سے علم حاصل کرنا ضروری ہے.

    قُلْ هَٰذِهِۦ سَبِيلِىٓ أَدْعُوٓا۟ إِلَى ٱللَّهِ ۚ عَلَىٰ بَصِيرَةٍ أَنَا۠ وَمَنِ ٱتَّبَعَنِى ۖ وَسُبْحَٰنَ ٱللَّهِ وَمَآ أَنَا۠ مِنَ ٱلْمُشْرِكِينَ
    (سورة يوسف ،آية 108)

    آپ کہہ دیجئے میری راه یہی ہے۔ میں اور میرے متبعین اللہ کی طرف بلا رہے ہیں، پورے یقین اور اعتماد کے ساتھ۔ اور اللہ پاک ہے اور میں مشرکوں میں نہیں.
     
  8. ‏جون 11، 2015 #48
    ibnequrbani

    ibnequrbani مبتدی
    شمولیت:
    ‏مئی 18، 2015
    پیغامات:
    32
    موصول شکریہ جات:
    6
    تمغے کے پوائنٹ:
    13

    در اصل آج اهلحديث هونے كا مطلب فقت اتنا هى هے كہ اسکے نام کے آگے اہلحدیث سلفی لکھا ہو عمل سے کیا مطلب ہے اگر کوئ شخص کتنا ہی متبع سنت کیوں نہ ہو اگر وہ چلاّ چلہّ کر نہی کہتا تو وہ ضال و مضل ہی اسسے تعلیم حاصل کرنا حرام ہے ہاں اگر آگے سلفی لگاتا ہو تو یہی اسکی نجات کے لیے کافی ہے
    و قالت اليهود ليست النصارى على شئ و قالت النصارى ليست.........
     
  9. ‏جون 11، 2015 #49
    ibnequrbani

    ibnequrbani مبتدی
    شمولیت:
    ‏مئی 18، 2015
    پیغامات:
    32
    موصول شکریہ جات:
    6
    تمغے کے پوائنٹ:
    13

    آپ سبھی سلفی بہنیں صرف سلفی منھج علماء سے ہی علم حاصل کریں وہ اپکو پکہ سلفی بنائینگے خواہ ق
    آپ موسلم بنے نہ بنے
    مجھے افسوس ہے کہ میں اس مکتب فکر سے وابستہ ہوں جہاں کے لوگ اور کچھ علما اکابر اہلحدیث کی تقلید میں پڑ گئے ہیں
     
  10. ‏جون 11، 2015 #50
    ابن داود

    ابن داود فعال رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    3,176
    موصول شکریہ جات:
    2,641
    تمغے کے پوائنٹ:
    556

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    ساون کے اندھے کے ہرے ہرے خواب!!
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں