1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

ہم نماز میں رفع الیدین کیوں کرتے ہیں !!!

'نماز' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد عامر یونس, ‏جنوری 14، 2015۔

  1. ‏اکتوبر 30، 2019 #121
    بھائی جان

    بھائی جان مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 22، 2018
    پیغامات:
    249
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    29

    غلطی کا اعتراف عقلمند اور بہادر افراد ہی کیا کرتے ہیں جہلا نہیں۔

    جھگڑے کی صورت میں کیا لائحہ عمل ہو؟
    نص مانو گے یا حنفی عالم کا فتویٰ؟


    جی بالکل صحیح فرمایا جناب نے۔
    مگر ہر دو صورت خود کو اہلحدیث کہلانے والے مخالف ہی ہیں احادیث کے میری نظر میں۔
    رفع الیدین یا تو بڑھتی گئی یا کم ہوتی گئی۔
    اگر بڑھنے کی بات تسلیم تو احادیث ہر تکبیر کے ساتھ رفع الیدین کا بھی ثبوت دیتی ہیں۔
    اگر کم ہونے کی بات تسلیم تو سوائے تکبیر تحریمہ کے اور کہیں بھی رفع الیدین نا کرنے کا احادیث میں ثبوت موجود۔


    حدیث میں جو الفاظ آئے ہیں ان سے یہ لازم نہیں آتا کہ کہ پہلے کرتے تھے پھر چھوڑا بلکہ خبر ہے کہ نہیں کرتے تھے اور پھر کرنے لگے جیسا کہ احادیث میں ثبوت ہے۔
    اگر اس بات کو تسلیم کیا جائے تو پھر ان احادیث کے مطابق عمل لازم جن میں ہر جھکنے اور اٹھنے پر رفع الیدین کا ثبوت موجود ہے۔
    اگر اس کو ترک یا منع پر محمول کیا جائے تو رفع الیدین کا نسخ ثابت ہوتا ہے اور جن احادیث میں زیادہ کا نسخ ثابت ہو وہی قابل عمل ہوگی۔
     
  2. ‏اکتوبر 30، 2019 #122
    بھائی جان

    بھائی جان مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 22، 2018
    پیغامات:
    249
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    29

    ثبوت فقہاء سے منصوب کتابوں سے دیا جائے۔
     
  3. ‏اکتوبر 30، 2019 #123
    بھائی جان

    بھائی جان مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 22، 2018
    پیغامات:
    249
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    29

    اس فورم میں صرف آپ ہی نہیں کہ جس پر جواب دینا لازم آئے۔
    لہٰذا پریشان نا ہوں اور جکسی علم والے کو جواب کا موقع دو یا اس سے پوچھ کر لکھو۔


    جواب کے لئے وقت درکار ہے تو کوئی بات نہیں جب ہو سکے تحریر لکھ دینا۔
    مقصد بات کو سمجھنا ہے نا کہ الجھانا۔
    عافیت حق تسلیم کرنے میں ہے خود کو حق پر ثابت کرنے میں نہیں۔ اس پر یقیں ہونا چاہیئے۔
     
  4. ‏اکتوبر 30، 2019 #124
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,357
    موصول شکریہ جات:
    714
    تمغے کے پوائنٹ:
    224

    قہقہامہ
     
  5. ‏اکتوبر 30، 2019 #125
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,357
    موصول شکریہ جات:
    714
    تمغے کے پوائنٹ:
    224

    دیکھیں مثل بڑی پرانی ھے لیکن یہاں بالکل فٹ ھے ،

    " تھوتھا چنا ، باجے گھنا "

    جو ظرف کے خالی ھو صدا دیتا ھے ۔
     
  6. ‏اکتوبر 30، 2019 #126
    بھائی جان

    بھائی جان مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 22، 2018
    پیغامات:
    249
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    29

    خالی ظروفوں کا جھمگھٹا شور میں اضافہ کر رہا ہے۔
     
  7. ‏اکتوبر 30، 2019 #127
    عبد الخبیر السلفی

    عبد الخبیر السلفی رکن
    جگہ:
    بدایوں
    شمولیت:
    ‏اگست 28، 2018
    پیغامات:
    148
    موصول شکریہ جات:
    3
    تمغے کے پوائنٹ:
    57

    محترم ہم نے آپ سے آپ کی عقلمندی اور بہادری نہیں پوچھی ہے بلا وجہ اپنی عقلمندی کا اعلان کرتے پھرنا عقلمندوں کا کام نہیں،
    محترم ہمارے یہاں لائحۂ عمل وہی ہے جو قرآن نے بیان کیا ہے
    البتہ آپ کے یہاں اصول کرخی ہیں جس میں اختلاف کی صورت میں کچھ اور ہی دعوت دی گئی ہے اسی لئے ہم نے حنفی عالم کے فتوے کی بات کی، آج سے آپ اعلان کردو حنفی عالم کے فتوے معتبر نہیں بلکہ معتبر کتاب و سنت ہے تو ہم آپ سے اسی کا مطالبہ کریں گے؟
    ابھی تو آپ نص کی دہائی دے رہے تھے اب یہ آپ کی نظر کہاں سے آ گئی؟ رفع یدین کی جتنی صورتیں آپ گنا رہے ہیں کیا ان تمام کی احادیث سب ایک درجہ کی ہیں؟ اور کم ہونے کی صورت میں تکبیر تحریمہ کا ہی کیوں بچتا ہے؟ الیاس گھمن کی پہلی دلیل کے بموجب رفع یدین خشوع خضوع کے خلاف ہے، دیکھئے الیاس گھمن صاحب کا لال پوسٹر
    یہاں بھی آپ نے نص کو ٹکا سا جواب دے دیا، محترم آپ تاریخ کے ساتھ ثابت کریں پہلے ایسا تھا پھر ایسے ہوا، پھر ایسے اور ویسے ہوا..... اور ہاں ہم آپ کی کیوں مان لیں؟ جبکہ بڑے حنفی عالم یہ کہہ رہے ہیں واعلم أن الرفع متواترٌ إسنادًا وعملًا، ولم يُنْسَخ منه ولا حرفٌ، (فيض البارى 2/322) یا پھر آپ دعویٰ کریں آپ انور شاہ کشمیری سے بڑے عالم ہیں؟
     
  8. ‏اکتوبر 30، 2019 #128
    عبد الخبیر السلفی

    عبد الخبیر السلفی رکن
    جگہ:
    بدایوں
    شمولیت:
    ‏اگست 28، 2018
    پیغامات:
    148
    موصول شکریہ جات:
    3
    تمغے کے پوائنٹ:
    57

    کیوں بھائی فقہاء سے منسوب کتابیں کیا نص ہیں؟ جن کو اختلاف کی صورت میں پیش کرنا ضروری ہے؟ حوالے چیک کر لیجیے غلط تھوڑی ہی کہیں گے بقول آپ کے (مقلدین) آپ ہی کے مقلد بھائی ہیں، اور ہاں ایک بات نا چاہتے ہوئے بھی کہہ رہا ہوں کہ آپ منسوب اور منصوب کے فرق کو سمجھیے
     
  9. ‏اکتوبر 30، 2019 #129
    عبد الخبیر السلفی

    عبد الخبیر السلفی رکن
    جگہ:
    بدایوں
    شمولیت:
    ‏اگست 28، 2018
    پیغامات:
    148
    موصول شکریہ جات:
    3
    تمغے کے پوائنٹ:
    57

    کاش ایسا ہوتا!
     
  10. ‏اکتوبر 31، 2019 #130
    ابن داود

    ابن داود فعال رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    3,313
    موصول شکریہ جات:
    2,649
    تمغے کے پوائنٹ:
    556

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    پنجابی اچ اکھدے نے؛
    بندہ ڈھیٹ ہونا چاہدا اے!
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں