1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

یہ سور ج کہاں جاتا ہے؟

'مختلف الحدیث' میں موضوعات آغاز کردہ از فیاض ثاقب, ‏اکتوبر 06، 2016۔

  1. ‏اکتوبر 06، 2016 #1
    فیاض ثاقب

    فیاض ثاقب مبتدی
    شمولیت:
    ‏ستمبر 30، 2016
    پیغامات:
    80
    موصول شکریہ جات:
    10
    تمغے کے پوائنٹ:
    29

    حضرت ابوذر غفاری رضی اللّٰہ عنہ نے بیان کیا کہ نبی صلی اللّٰہ علیہ وسلم نے جب سورج غروب ہوا تو ان سے پوچھا کہ تم کو معلوم ہے یہ سور ج کہاں جاتا ہے؟
    میں نے عرض کی کہ اللّٰہ اور اس کے رسول صلی اللّٰہ علیہ وسلم ہی کو علم ہے...
    آپ صلی اللّٰہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ یہ جاتا ہے اور عرشِ الٰہی کے نیچے پہنچ کر سجدہ کرتا ہے، پھر (دوبارہ آنے) کی اجازت چاہتا ہے اور اسے اجازت دے دی جاتی ہے...
    اور وہ دن بھی قریب ہے ،جب یہ سجدہ کرے گا تواس کا سجدہ قبول نہ ہوگا اور اجازت چاہے گا تو اجازت نہ ملے گی ، بلکہ اس سےکہا جائے گا کہ جہاں سے آیا تھا وہیں چلا جا ..
    چنانچہ اس دن وہ مغرب ہی سے نکلے گا، اللّٰہ تعالٰی کا فرمان ''والّشمس تجری لمستقرّ لہا ذلِک تقدیر العزیز العلیم ۔'' (یٰس ۳۸) میں اسی طرف اشارہ ہے....
    (صحیح البخاری۔ حدیث نمبر ۳۱۹۹) كتاب بداء لخلق
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں