1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

اہل حدیث مسجد پر حملہ ؛ قابل مذمت اقدام

'تازہ مضامین' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد عامر یونس, ‏مئی 02، 2016۔

  1. ‏مئی 02، 2016 #1
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    17,039
    موصول شکریہ جات:
    6,520
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    مسجد پر دستی بم حملہ کرنے والوں میں سے ایک گرفتار

    2 گھنٹے پہلے

    ختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں موٹر سائکل پر سوار حملہ آوروں نے اہل حدیث مسلک کے ایک مدرسے پر دستی بم پھینکا

    پاکستان کے صوبے خیبر پختونخوا کے دارالحکومت پشاور میں حکام کا کہنا ہے کہ اہل حدیث کی ایک مسجد پر ہونے والے دستی بم کے ایک حملے میں کم سے کم 19 افراد زخمی ہوگئے ہیں۔
    حملہ آور کو زخمی حالت میں گرفتار کرلیا گیا ہے۔
    پولیس کے مطابق یہ واقعہ اتوار اور پیر کی درمیانی شب پشاور کے علاقے تہکال بالا میں پیش آیا۔
    تہکال پولیس سٹیشن کے ایک اہلکار نے بتایا کہ جامع مسجد بیت المکرم میں ایک اجتماع کے اختتام پر محلے کے افراد کھانا کھا رہے تھے کہ اس دوران ایک حملہ آوار نے قریب آکر ان پر دستی بم سے حملہ کردیا۔
    انھوں نے کہا کہ حملے میں محلے کے 19 افراد زخمی ہوئے۔
    پولیس اہلکار کے مطابق دھماکے کی آواز سنتے ہی وہاں موجود محلے کے لڑکوں نے جمع ہوکر حملہ آور پر پستول سے فائرنگ کردی جس سے وہ شدید زخمی ہوئے۔
    زخمی حملہ آوار کو گرفتارکرکے سی ایم ایچ پشاور میں داخل کردیا گیا ہے۔پولیس کے مطابق حملہ آوار تین تھے جو موٹر سائیکل پر آئے تھے۔
    واقعے کے ایک عینی شاہد اور محلے کے مشر حاجی مقبلی خان نے ہمارے نامہ عزیزاللہ خان کو بتایا کہ مسجد میں جماعتہ الددعوۃ کا ایک اجتماع ہورہا تھا جس میں لوگوں کی ایک بڑی تعداد شامل تھی۔
    انھوں نے کہا کہ اجتماع کے اختتام کے چند منٹوں کے بعد ہی حملہ آواروں کی طرف سے دستی بم کا حملہ کیا گیا تاہم زیادہ تر افراد اس سے پہلے مسجد سے جاچکے تھے۔
    حاجی مقبلی خان کے مطابق اس حملے میں ان کا بیٹا بھی زخمی ہوا ہے۔
    اس حملے کی وجہ فوری طورپر معلوم نہیں ہوسکی اور نہ ہی کسی تنظیم کی جانب سے اسکی ذمہ داری قبول کی گئی ہے۔
    تہکال کا علاقہ پشاور میں یونیورسٹی روڈ کے قریب واقع ہے۔
    اس علاقے میں پہلے بھی ٹارگٹ کلنگ کے واقعات پیش آ چکے ہیں۔ تہکال کا علاقہ ایک طرف شہری علاقوں سے منسلک ہے تو دوسری جانب اس کے کھیت اور دیہی طرز زندگی ہے۔
    پشاور میں دستی بم کے بیشتر حملے بھتے کی غرض سے پھینکے جاتے ہیں جن میں نقصانات کم ہوتے ہیں۔
    گذشتہ ہفتے پجگی روڈ پر ایک عمارت پر دستی بم سے حملہ کیا گیا تھا جس میں پانچ افراد زخمی ہو گئے تھے۔
    پولیس کے مطابق یہ واقعہ بھتے کے لیے کیا گیا تھا۔
     
  2. ‏مئی 02، 2016 #2
    فلک شیر

    فلک شیر رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 24، 2013
    پیغامات:
    185
    موصول شکریہ جات:
    100
    تمغے کے پوائنٹ:
    81

    اللہ پاک رحمت فرمائیں
     
  3. ‏مئی 02، 2016 #3
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,777
    موصول شکریہ جات:
    8,340
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    پہلی دفعہ سنا ہے کہ جماعۃ الدعوۃ کے کسی جلسے میں ایسا حادثہ پیش آیا ہو ۔
     
  4. ‏مئی 02، 2016 #4
    ابن عثمان

    ابن عثمان رکن
    شمولیت:
    ‏نومبر 27، 2014
    پیغامات:
    221
    موصول شکریہ جات:
    59
    تمغے کے پوائنٹ:
    49

    خضر بھائی کیوں کسی کو بد گمانی کے لئے موقع فراہم کرتے ہیں ۔۔
    اہل حدیث مسجد ۔۔۔جماعت الدعوۃ ۔۔۔کی کوئی قید نہیں ۔۔۔
    دہشت گرد کا کوئی مذہب نہیں ۔۔۔
     
  5. ‏مئی 02، 2016 #5
    فلک شیر

    فلک شیر رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 24، 2013
    پیغامات:
    185
    موصول شکریہ جات:
    100
    تمغے کے پوائنٹ:
    81

    ایک دفعہ کراچی میں ایسی کوشش ہو چکی ہے
     
  6. ‏مئی 02، 2016 #6
    فلک شیر

    فلک شیر رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 24، 2013
    پیغامات:
    185
    موصول شکریہ جات:
    100
    تمغے کے پوائنٹ:
    81

    بد گمانی؟؟؟
     
  7. ‏مئی 02، 2016 #7
    کنعان

    کنعان فعال رکن
    جگہ:
    برسٹل، انگلینڈ
    شمولیت:
    ‏جون 29، 2011
    پیغامات:
    3,564
    موصول شکریہ جات:
    4,377
    تمغے کے پوائنٹ:
    521

    السلام علیکم

    ابن عثمان کو سمجھنے میں شائد غلطی لگی جس وجہ سے لفظ بدگمانی استمعال میں لے آئے۔ مسجد اور جماعت پر کچھ بھی نہیں کہا گیا۔

    میری طرف سے، پھر بھی جماعۃ الدعوۃ کی طرف سے جوابی کاروائی ہوئی نا، ان کی طرف سے بھی گولی چلی جس وجہ سے حملہ آور زخمی ہوا، رپورٹ میں محلہ دار لکھوایا گیا ھے تاکہ پیشی نہ ہو۔ شکر ادا کریں کہ کئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

    والسلام
     
  8. ‏مئی 02، 2016 #8
    ابن عثمان

    ابن عثمان رکن
    شمولیت:
    ‏نومبر 27، 2014
    پیغامات:
    221
    موصول شکریہ جات:
    59
    تمغے کے پوائنٹ:
    49

    کہنے کے مقصد یہ تھا کہ ہم مسلمانوں میں کچھ لوگ غلط فہمی سے سمجھتے ہیں کہ دہشت گرد فلاں مسلک سے ہوتا ہے ۔
    اور وہ اپنے مسلک سے متفق لوگوں پر حملہ نہیں کرتا بلکہ ہم پر کرتا ہے ۔
    یا جو مذاکرات کے حامی تھے ۔۔ان پر حملہ نہیں کرتا
    جو آپریشن کے حامی ہیں ۔۔۔ان پر کرتا ہے ۔ وغیرہ وغیرہ
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
  9. ‏مئی 02، 2016 #9
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,777
    موصول شکریہ جات:
    8,340
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    میں نے یہ بات دو وجہ سے کہی ہے :
    1۔ جماعۃ الدعوۃ کے سیکیورٹی انتظامات بہت اچھے ہوتے ہیں ۔
    2۔ مشہور ہے کہ جماعۃ الدعوۃ کے خفیہ اداروں کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں ، وہ بعض دفعہ خطرات کی پیشگی اطلاع کردیتے ہیں ۔
    متفق ۔
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں