• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

بقیہ بن ولید کی تدلیس؟

Talha Salafi

مبتدی
شمولیت
ستمبر 19، 2018
پیغامات
48
ری ایکشن اسکور
7
پوائنٹ
28
جی عامر عدنان صاحب میرے پاس یہ تحقیق کافی عرصے پہلے پہنچ چکی ہے، الحمدللہ
 

محمد نعیم یونس

خاص رکن
رکن انتظامیہ
شمولیت
اپریل 27، 2013
پیغامات
26,573
ری ایکشن اسکور
6,729
پوائنٹ
1,207
شیخ حافظ زبیر علی زئی ؒ کی تخریج کے ساتھ دارالسلام نے شائع کیا ہے
السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
شیخ محترم!
اس بارے یہاں پر کچھ معلومات ہیں!
 

اسحاق سلفی

فعال رکن
رکن انتظامیہ
شمولیت
اگست 25، 2014
پیغامات
6,372
ری ایکشن اسکور
2,526
پوائنٹ
791
السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
شیخ محترم!
اس بارے یہاں پر کچھ معلومات ہیں!
وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
توجہ دلانے کیلئے بہت شکریہ ۔۔ جزاکم اللہ تعالی خیراً
شیخ مکرم حافظ زبیر علی زئی رحمہ اللہ اور دارالسلام کے مابین معاملات خود شیخ ؒ صاحب کی زبانی معلوم ہوئے تھے ،
اور شیخ صاحب کا دارالسلام سے شائع ہونے والی اپنی کچھ کتب سے براءت کا اظہار بھی میرے علم میں ہے ،
اسی لئے اب ان کتابوں پر مکمل انحصار و اعتماد نہیں کرتا ،ان سے استفادہ دیگر مصادر اور ذرائع کو دیکھ کرکرتا ہوں ،
مثلاً آپ میرا ایک حالیہ جواب دیکھئے :
 

اسحاق سلفی

فعال رکن
رکن انتظامیہ
شمولیت
اگست 25، 2014
پیغامات
6,372
ری ایکشن اسکور
2,526
پوائنٹ
791
سنن ابوداود انگلش ترجمہ کے ساتھ اور شیخ حافظ زبیر علی زئی ؒ کی تخریج کے ساتھ دارالسلام نے شائع کیا ہے اس میں اس حدیث کے تحت لکھا ہے :
تخریج :(حسن )أخرجه النسائي ،الفرع والعتيرة ،باب النهي عن الانتفاع بجلود السباع ح4260 عن عمروبن عثمان *رواية بقية عن بحير صحيحة لأنها من كتابه ))
https://archive.org/stream/SunanAbuDawudVol.111160EnglishArabic/Sunan Abu Dawud Vol. 4 - 3242-4350 English Arabic#page/n433
یہاں ۔۔ بقیہ بن الولید کی بحیر سے روایت کو صحیح کہا گیا ہے ، اور اس کو صحیح کہنے کا سبب یہ بتایا گیا ہے کہ "بقیہ کی بحیر " صحیح ہوتی ہے ،
اور یہی بات شیخ زبیر علی زئی ؒ نے ماہنامہ "الحدیث " شمارہ 7 (اکتوبر 2005 ) صفحہ 10میں لکھی ہے ؛
متعلقہ شمارہ ملاحظہ فرمائیں :
https://ishaatulhadith.com/ishaatul-hadith/pdf/17.pdf

اور یہی بات شیخ الاسلام ابن تیمیہؒ کے شاگرد اور ماہر محدث علامہ ابن عبدالھادیؒ ( شمس الدين محمد بن أحمد بن عبد الهادي الدمشقي (المتوفى: 744هـ) نے "تعليقة على العلل لابن أبي حاتم " میں لکھی ہے ،فرماتے ہیں :
"ورواية بقية عن بحير صحيحة، سواء صرح بالتحديث أم لا"

ــــــــــــــــــــــــ
 
Last edited:
Top