1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

جمعہ کے دن اگر کوئی مسجد میں داخل ھو اور امام خطبہ دے رہا ہو تو وہ دو رکعت نمازپھر سکتا ہے یا نہیں

'تقابل مسالک' میں موضوعات آغاز کردہ از lovelyalltime, ‏اکتوبر 29، 2013۔

  1. ‏اکتوبر 29، 2013 #1
    lovelyalltime

    lovelyalltime سینئر رکن
    جگہ:
    سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏مارچ 28، 2012
    پیغامات:
    3,735
    موصول شکریہ جات:
    2,842
    تمغے کے پوائنٹ:
    436

    جمعہ کا بیان
    خطبہ کے دوران دو رکعت تحیة المسجد پڑھنے کے بیان میں
    صحیح مسلم:جلد اول:حدیث نمبر 2018
    حَدَّثَنَا إِسْحَقُ بْنُ إِبْرَاهِيمَ وَعَلِيُّ بْنُ خَشْرَمٍ کِلَاهُمَا عَنْ عِيسَی بْنِ يُونُسَ قَالَ ابْنُ خَشْرَمٍ أَخْبَرَنَا عِيسَی عَنْ الْأَعْمَشِ عَنْ أَبِي سُفْيَانَ عَنْ جَابِرِ بْنِ عَبْدِ اللَّهِ قَالَ جَائَ سُلَيْکٌ الْغَطَفَانِيُّ يَوْمَ الْجُمُعَةِ وَرَسُولُ اللَّهِ صَلَّی اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَخْطُبُ فَجَلَسَ فَقَالَ لَهُ يَا سُلَيْکُ قُمْ فَارْکَعْ رَکْعَتَيْنِ وَتَجَوَّزْ فِيهِمَا ثُمَّ قَالَ إِذَا جَائَ أَحَدُکُمْ يَوْمَ الْجُمُعَةِ وَالْإِمَامُ يَخْطُبُ فَلْيَرْکَعْ رَکْعَتَيْنِ وَلْيَتَجَوَّزْ فِيهِمَا
    اسحاق بن ابراہیم، علی بن خشرم، عیسیٰ بن یونس، اعمش، ابوسفیان، حضرت جابر رضی اللہ تعالیٰ عنہ بن عبداللہ رضی اللہ تعالیٰ عنہ فرماتے ہیں کہ میں سلیک غطفانی رضی اللہ تعالیٰ عنہ جمعہ کے دن آئے اور رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم خطبہ ارشاد فرما رہے تھے وہ آکر بیٹھ گئے آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ان سے فرمایا اے سلیک کھڑے ہو کر دو رکعتیں پڑھو اور اس میں اختصار کرو پھر آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا کہ جب تم میں سے کوئی جمعہ کے دن آئے اور امام خطبہ دے رہا ہو تو
    اسے چاہے کہ دو رکعتیں پڑھے اور ان دونوں میں اختصار کرے۔
    لیکن جب حنفی بھائی کو کہا گیا کہ آپ کی ہدایہ شریف میں لکھا ہوا ہے کہ
    juma ka khutba-1.jpg
    تو اس نے یہ جواب دیا
    khutba -2.jpg
    لیکن تقی عثمانی صاحب کیا کہتے ہیں آئیں دیکھتے ہیں
    صحابہ کے قول اور حدیث مرفوع کے بارے میں
    taqi sahib-1.jpg taqi sahib-2.jpg
    کیا اپنی فقہ کو بچانے کے لیے صحیح حدیث کا رد کرنا صحیح ہے
     
    • پسند پسند x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  2. ‏اکتوبر 29، 2013 #2
    جمشید

    جمشید مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏جون 09، 2011
    پیغامات:
    873
    موصول شکریہ جات:
    2,325
    تمغے کے پوائنٹ:
    180

    آپ کے اس چوں چوں کے مربے کیلئے وقت نہیں ہے۔ایک موضوع مکمل نہیں ہوتاہے اوردوسراشروع کردیتے ہو اورپھر ویسے بھی ماقبل کے مراسلات بتاتے ہیں کہ افہام وتفہیم آپ کا مقصد نہیں ہے لہذا اس پر زیادہ گفتگو کرنے سے بھی کوئی فائدہ نہیں ہے۔میں نے اس سے قبل بھی مجلس علماء میں پوچھاتھاکہ مخالفت حدیث کس کو کہتے ہیں اس کا کسی نے کوئی واضح جواب نہیں دیا۔ پہلی ضرورت اس بات کی ہے کہ آپ بتائیں کہ مخالفت حدیث کہتےکسے ہیں اوریہ کن صورتوں میں ہوتاہے۔اس کےبعد مخالفت حدیث کا الزام عائد کریں۔
     
    • غیرمتفق غیرمتفق x 2
    • معلوماتی معلوماتی x 1
    • لسٹ
  3. ‏اکتوبر 29، 2013 #3
    مون لائیٹ آفریدی

    مون لائیٹ آفریدی مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏جولائی 30، 2011
    پیغامات:
    640
    موصول شکریہ جات:
    396
    تمغے کے پوائنٹ:
    127

    ہمارے ایک رشتہ دار مولوی صاحب سے میں نے ایک بارپوچھا کہ میں نے ایک حدیث پڑھی جس میں مغرب کی فرض نماز سے پہلے کی دو رکعت پڑھنے پر دو مرتبہ امر اور آخری مرتبہ جو چاہے وہ کرے ، آیا ہے، اور آج کل یہ مفقود ہے تو کیا اس کو زندہ کرکے ثواب کمایا جاسکتا ہے کہ نہیں ؟ حالانکہ وہ خود ہی ایسی حدیث پیش کرتا ہے کہ جو سنت بالکل ترک کیا جاچکا ہو اس کو زندہ کرنے سے سو شہیدوں کے درجات کا ثواب ملتا ہے ۔
    جواب ملا : چونکہ ہمارے فقہ حنفی میں یہ جائز نہیں ۔ مگر آپ پڑھ سکتے ہیں ۔
    شکر ہے کہ مجھے منع نہیں کیا ۔ ورنہ بعض مساجد میں تو قصداً بالکل موقع ہی نہیں دیتے ، کہ ایسا نہ ہو کہ کوئی مغرب سے پہلے دو رکعتین پڑھے ۔
    آذان کا آخری کلمہ ختم ہوتے ہی اقامت شروع ہوتی ہے ۔ حالانکہ یہ بھی ایک حدیث"ہراذان واقامت کے درمیان نماز ہے"کے خلاف ہے ۔
     
    • پسند پسند x 3
    • شکریہ شکریہ x 2
    • متفق متفق x 2
    • لسٹ
  4. ‏اکتوبر 29، 2013 #4
    حافظ عمران الہی

    حافظ عمران الہی سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 09، 2013
    پیغامات:
    2,101
    موصول شکریہ جات:
    1,406
    تمغے کے پوائنٹ:
    344

    میرا بھائی ہم موضوع پر آ جاتے ہیں یہ بتاؤ کہ آپ خطبہ کس کو کہتے ہیں کیا بیا ن کے وقت نماز پڈھی جا سکتی ہے یا نہیں ؟
     
  5. ‏اکتوبر 29، 2013 #5
    جمشید

    جمشید مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏جون 09، 2011
    پیغامات:
    873
    موصول شکریہ جات:
    2,325
    تمغے کے پوائنٹ:
    180

    مخالفت حدیث کس کو کہتے ہیں

    اس کاواضح جواب مل جائے توپھر بہت سارے مسائل حل ہوجائیں گے۔
     
    • شکریہ شکریہ x 3
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • علمی علمی x 1
    • لسٹ
  6. ‏اکتوبر 29، 2013 #6
    lovelyalltime

    lovelyalltime سینئر رکن
    جگہ:
    سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏مارچ 28، 2012
    پیغامات:
    3,735
    موصول شکریہ جات:
    2,842
    تمغے کے پوائنٹ:
    436


    انشاءاللہ آپ کو کبھی یہ لوگ جواب نہیں دیں گے- ایک طرف فقہ شریف کو بچانے کی خاطر ضعیف حدیث بھی پیش کر جاتے ہیں - لکن یہاں فقہ کو ثابت کرنے کے لیے صحیح حدیث کو بھی رد کر رھے ہیں -
     
    • شکریہ شکریہ x 3
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  7. ‏اکتوبر 29، 2013 #7
    جمشید

    جمشید مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏جون 09، 2011
    پیغامات:
    873
    موصول شکریہ جات:
    2,325
    تمغے کے پوائنٹ:
    180

    آپ صرف اتناکردیں کہ


    مخالفت حدیث کی واضح تعریف بیان کردیں

    اوریہاں احناف نے حدیث کی مخالفت کی ہے اس کی اس تعریف سے تطبیق کردیں۔
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • علمی علمی x 1
    • لسٹ
  8. ‏اکتوبر 29، 2013 #8
    شاکر

    شاکر تکنیکی ناظم رکن انتظامیہ
    جگہ:
    جدہ
    شمولیت:
    ‏جنوری 08، 2011
    پیغامات:
    6,595
    موصول شکریہ جات:
    21,361
    تمغے کے پوائنٹ:
    891

    جمشید بھائی،
    ہمیں زیادہ علم نہیں۔ لیکن مخالفت حدیث میں نہ تو لفظ مخالفت ہی کوئی عجوبہ ہے اور نہ حدیث۔ دونوں عام سے الفاظ ہیں، کوئی اصطلاح بھی نہیں کہ اس کی تعریف کی ضرورت پیش آئے۔ بہرحال، آپ صاحب علم ہیں، اگر اس کی کوئی تعریف ہے تو آپ ہی پیش فرما دیں، تاکہ ہمارے علم میں بھی اضافہ ہو۔ آپ نے اس موضوع پر کافی سوچ بچار کر رکھی ہوگی۔ اپنا مؤقف پیش کر دیں۔
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  9. ‏اکتوبر 30، 2013 #9
    محمد ارسلان

    محمد ارسلان خاص رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 09، 2011
    پیغامات:
    17,865
    موصول شکریہ جات:
    40,799
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,155

    یوں
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  10. ‏اکتوبر 30، 2013 #10
    حافظ عمران الہی

    حافظ عمران الہی سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 09، 2013
    پیغامات:
    2,101
    موصول شکریہ جات:
    1,406
    تمغے کے پوائنٹ:
    344

    ابو حنیفہ کے نزدیک

    صوم ست من شوال مكروه عند أبي حنيفة رحمه الله متفرقاً كان أو متتابعاً
    شوال کے چھ روزے رکھنا ابو حنیفہ کے نزدیک مکروہ ہیں خواہ علیحدہ علیحدہ رکھے جائیں یا اکٹھے۔




    فتاوی عالمگیر:ص١٠١،المحيط البرهاني في الفقه النعماني:کتاب الصوم
    ٣٩٣
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں