• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

حنفیوں کے طلاق دینے کے طریقے

شمولیت
اپریل 27، 2020
پیغامات
333
ری ایکشن اسکور
89
پوائنٹ
53
حنفیوں کے طلاق دینے کے طریقے

اس پوسٹ سے آپ کو اندازہ ہو گا کہ حنفیوں کے ویلے فقہاء ویلے بیٹھ کر کیا کیا سوچتے رہے ہیں ایسے ہی فقہ حنفی مرتب نہیں ہوئی اس کے لیے بہت ویلا رہ کر بہت سوچنا پڑتا ہے۔ جس وقت فقہ حنفی مرتب ہو رہی تھی حنفی اپنی بیویوں کو کس کس طریقے سے طلاق دیتے تھے ملاحظہ فرمائیں:

پاد مار کر طلاق

"اگر کسی حنفی شخص نے کہا کہ میں نے آواز سے پاد مارا تو میری بیوی کو طلاق، پھر اس کے ارادے کے بغیر آواز والا پاد نکل گیا تو عورت کو طلاق نہیں ہو گی"

[فتویٰ عالمگیری، جلد: ۲ صفحہ: ۴۰۸]


IMG_20230107_130409_438.jpg

IMG_20230107_130413_046.jpg


یہ حنفی فقہاء بعد میں کان لگا کر رکھتے تھے کہ آواز والا پاد ہے یا بغیر آواز والا، یہاں پاد مار کر طلاق ہے آگے چلیے...

شرمگاہ کے موازنے سے طلاق

يک آدمى نے بيوى سے كہا كہ اگر ميرى شرمگاه تيرى شرمگاه سے بہتر نا ہوئى تو تجھ كو طلاق ہوگى اور عورت نے كہ ديا كہ اگر ميرى شرمگاه تيرى شرم گاه سے بہتر نا ہوئى تو ميرى لونڈی آزاد ہوگى،

شيخ امام ابو فضل ابوبكر محمد بن افضل حنفی (جو سب سے بڑا ویلا فقہی تھا) اس كى تشريح يوں فرماتے ہيں : "اگر اس بات كے كہتے وقت مياں بيوى دونوں كھڑے تهے تو عورت برى ہوگئى اور مرد كى بات حانث (غلط) ہوگئی ليكن اگر دونوں گفتگو کے وقت بيٹھے ہوئے تھے تو شوہر كى بات صحيح ہوگى اور عورت حانث ہوگى

"كيونكہ عورت كى شرم گاه کھڑے ہونے کی حالت میں شوہر كى شرمگاه سے بہتر ہوتى ہے اور مرد كى شرمگاه بیٹھنے کی حالت میں عورت كى شرمگاه سے بہتر ہوتى ہے "

[فتویٰ عالمگیری، جلد: ۲ صفحہ: ۴۰۸]


IMG_20230107_130415_924.jpg


یہ اپنے خیالوں میں ہی مرد و عورت کی شرمگاہوں کے موازنے کرتے رہیں ہیں کہ کھڑے ہونے کی حالت میں کس کی بہتر ہوتی ہے اور بیٹھنے کی حالت میں کس کی!

آلہ تناسل کی کوالٹی پر طلاق

"ایک حنفی مرد نے اپنی بیوی سے کہا کہ اگر میرا زکر یعنی آلہ تناسل لوہے سے زیادہ شدید نہ ہو تو تجھے طلاق ہے، تو عورت کو طلاق نہیں ہو گی اس واسطے کے آلہ تناسل استعمال کرنے سے خراب نہیں ہوتا"

[فتویٰ عالمگیری، جلد: ۲ صفحہ: ۴۰۹]


IMG_20230107_130417_707.jpg


بڑا تجربہ تھا حنفی فقہاء کا یہ لوگوں کے آلہ تناسل چیک کرتے رہتے تھے کہ خراب ہوتے ہیں یا نہیں، اور بعد اس کے اس نتیجے پر پہنچے کہ یہ خراب ہونے والی چیز نہیں۔
 
Top