• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

دس مرتبہ سورہ اخلاص کی تلاوت والی روایت کی تحقیق۔۔ ؟

Abdul Mussavir

مبتدی
شمولیت
ستمبر 22، 2017
پیغامات
30
ری ایکشن اسکور
4
پوائنٹ
25
السلام علیکم شیخ اس روایت کی تحقیق درکار ہے۔

حَدَّثَنَا عَبْدُ اللَّهِ بْنُ يَزِيدَ ، حَدَّثَنَاحَيْوَةُ ، قَالَ : أَخْبَرَنِي أَبُو عَقِيلٍ ، أَنَّهُ سَمِعَ سَعِيدَ بْنَ الْمُسَيَّبِ يَقُولُ : إِنَّ نَبِيَّ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ : " مَنْ قَرَأَ ( قُلْ هُوَ اللَّهُ أَحَدٌ ) عَشْرَ مَرَّاتٍ بُنِيَ لَهُ بِهَا قَصْرٌ فِي الْجَنَّةِ، وَمَنْ قَرَأَهَا عِشْرِينَ مَرَّةً بُنِيَ لَهُ بِهَا قَصْرَانِ فِي الْجَنَّةِ، وَمَنْ قَرَأَهَا ثَلَاثِينَ مَرَّةً بُنِيَ لَهُ بِهَا ثَلَاثَةُ قُصُورٍ فِي الْجَنَّةِ ". فَقَالَ عُمَرُ بْنُ الْخَطَّابِ : وَاللَّهِ يَا رَسُولَ اللَّهِ إِذَنْ لَنُكَثِّرَنَّ قُصُورَنَا. فَقَالَ رَسُولُ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ : " اللَّهُ أَوْسَعُ مِنْ ذَلِكَ ".
قَالَ أَبُو مُحَمَّدٍ : أَبُو عَقِيلٍ : زُهْرَةُ بْنُ مَعْبَدٍ، وَزَعَمُوا أَنَّهُ كَانَ مِنَ الْأَبْدَالِ

یہ سنن الدارمی کی روایت ہے۔۔
اسکی دوسری سند ساری ضعیف ہے۔ لیکن شیخ البانی نے اپنی صحیحہ 589 میں روایت کو صحیح کہا۔

اوپر والی روایت کے بارے میں علمائے کرام کہتے ہے یہ صحیح مرسل ہے ۔۔

فإن الحديث رواه الدارمي مرسلا، وقال فيه ابن كثير: وهذا مرسل جيد. اهـ.

والمرسل من أقسام الضعيف، ولكن مراسيل سعيد بن المسيب أصح المراسيل على ما ذكره السيوطي عن الإمام أحمد، وقال الحاكم في علوم الحديث: أصح المراسيل -كما قال ابن معين- مراسيل ابن المسيب، لأنه من أولاد الصحابة، وأدرك العشرة، وفقيه أهل الحجاز، وأول الفقهاء السبعة الذين يعتد مالك بإجماعهم كإجماع كافة الناس، وقد تأمل الأئمة المتقدمون مراسيله فوجدوها بأسانيد صحيحة، وهذه الشرائط لم توجد في مراسيل غيره. انتهى من شرح المشكاة للمباركفوري.


 

اسحاق سلفی

فعال رکن
رکن انتظامیہ
شمولیت
اگست 25، 2014
پیغامات
6,372
ری ایکشن اسکور
2,471
پوائنٹ
791
دس دفعہ سورہ اخلاص پڑھنے کی فضیلت میں وارد روایت درج ذیل ہے ؛
مسند امام احمد میں ہے :
’’ حدثنا عبد الله حدثني أبي حدثنا حسن حدثنا ابن لهيعة قال ، وحدثنا يحيى بن غيلان ، حدثنا رشدين ، حدثنا زبان بن فائد الحبراني عن سهل بن معاذ بن أنس الجهني عن أبيه معاذ بن أنس الجهني صاحب النبي صلى الله عليه وسلم عن النبي صلى الله عليه وسلم قال : (من قرأ سورة الإخلاص "قُلْ هُوَ اللَّهُ أَحَدٌ" حتى يختمها عشر مرات بنى الله له قصرا في الجنة . فقال عمر بن الخطاب : إذاً أستكثر يا رسول الله . فقال رسول الله صلى الله عليه وسلم : الله أكثر وأطيب)
رواه الإمام أحمد (3/437)

’’ سیدنا انس جھنی روایت کرتے ہیں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : جو سورہ اخلاص دس بار پڑھے اللہ مالک الملک اُس کے لیے جنت میں محل بنا دیتے ہیں۔سیدنا عمر رضی اللہ عنہ کہنے لگے ،اگر ایسا ہے تو ہم کثرت سے پڑھیں گے ،رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا : اللہ (بھی ) سب بڑھ کر دےگا اور بہت عمدہ دے گا ‘”
لیکن یہ حدیث انتہائی ضعیف ہے کیونکہ :
وهذا الإسناد ضعيف لضعف ابن لهيعة ورشدين بن سعد وزبان بن فائد . وقال في مجمع الزوائد (7/145) : "وفي إسناده رشدين بن سعد وزبان كلاهما ضعيف وفيهما توثيق لين" انتهى.
علامہ ہیثمی مجمع الزوائد میں فرماتے ہیں :اس کی سند میں ’’ رشدین بن سعد ‘‘ اور زبان بن فائد ‘‘راوی ہیں
اور یہ دونوں ضعیف ہیں ؛
اور فتاوی کیلئے مشہور سعودی سائیٹ (الاسلام سؤال و جواب ) پر اس حدیث کے متعق لکھتے ہیں :
قلت : والحديث مداره على زبان بن فائد , وقد سبق أنه ضعيف كما في التقريب ، وقال الحافظ في "تهذيب التهذيب" في ترجمة زبان المذكور : قال أحمد : أحاديثه مناكير ، وقال ابن معين : شيخ ضعيف, وقال ابن حبان : منكر الحديث جدا ‘‘
الإسلام سؤال وجواب
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
علامہ عبد العزيز بن عبد الله بن باز رحمہ اللہ اس حدیث کے متعلق فرماتے ہیں :
هذا الحديث ضعيف جدا لتضعيف الأئمة المذكورين لزبان، وينبغي أن يعلم أن هذه السورة عظيمة وفضلها كبير، وقد صح عن رسول الله صلى الله عليه وسلم أنه قال: «إنها تعدل ثلث القرآن (صحيح مسلم صلاة المسافرين وقصرها (812) ، سنن الترمذي فضائل القرآن) » وصح في فضلها أحاديث كثيرة.
(مجموع فتاوى العلامة عبد العزيز بن باز رحمه الله )

فرماتے ہیں : یہ حدیث انتہائی ضعیف ہے ، اس کے راوی ’‘ زبان ’‘ کو ائمہ حدیث نے ضعیف کہا ہے ۔
لیکن یاد رہے اس کے علاوہ سورہ اخلاص کے بہت سے فضائل دوسری صحیح احادیث میں موجود ہیں ؛؛
جیسا کہ صحیح مسلم کی حدیث میں ہے کہ یہ سورہ ایک تہائی قرآن کے برابر ہے
 
Top