• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

رفع الیدین نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی دائمی سنت !!!

شمولیت
اگست 11، 2013
پیغامات
17,116
ری ایکشن اسکور
6,780
پوائنٹ
1,069
شمولیت
مئی 12، 2014
پیغامات
226
ری ایکشن اسکور
68
پوائنٹ
42
محترم عامر یونس بھائی:
سوچتا ہوں کہ اس دھاگہ کے کس جھوٹ سے بات شروع کروں؟جناب نے اس دھاگہ کی ابتدا ہی ایک صریح جھوٹ اور جھوٹی حدیث سے کی ہے ،کیوں جھوٹ پر کمر باندھی ہے اور کب تک جھوٹ لکھتے رہوگے ۔اور کب تک جھوٹی امیج لگاتے رہو گے
جناب نے یہ پوسٹ کرتے ہوئے یہ امیج لگائی ہے
0p0.jpg

اس میں جناب نے بخاری کا حوالہ دیا ہے یہ حدیث بخاری تو کجا پوری صحاح ستہ میں چراغ لیکر ڈھونڈو تو نہیں ملے گی اگر ہے تو اسکا متن بخاری سے نقل کر دیں ورنہ جھوٹی امیج اور جھوٹی حدیث پیش کرنے پر اللہ سے معافی مانگیں
اس امیج کو لگے ایک ماہ ہونے کو ہے لیکن اس فورم کے کسی ذمہ دار نے ادھر توجہ نہیں کی بلکہ اسےعلمی اور زبردت کے تمغوں سے نوازتے رہے اتنی غیر ذمہ داری کا ثبوت آخر کیوں؟؟؟
 
شمولیت
مئی 09، 2014
پیغامات
93
ری ایکشن اسکور
46
پوائنٹ
18
عامر بھائی ایک اور جھوٹ اور جھوٹی پوسٹ کیا ہوگیا ہے جناب کو کیوں جھوٹ کا دامن پکڑ لیا ہے؟
1661282_309428562540294_5922180921798724030_n.jpg

یہ تصویر لگا کر جناب اپنا دعوی ثابت کرنا چاہتے ہیں کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم وفات تک رفع یدین کرتے تھے اور حوالہ بخاری کا دیا ہے جناب نے یہ حدیث بخاری میں موجود نہیں ہے یہ جناب نے بخاری پر جھوٹ باندھا اور یہ حدیث ہے بھی موضوع جناب نے ایک جھوٹی روایت کو رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی طرف منسوب کیا یہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم پر جھوٹ باندھا اس کی وعید حدیث رسول میں موجود ہے(«مَنْ كَذَبَ عَلَيَّ مُتَعَمِّدًا، فَلْيَتَبَوَّأْ مَقْعَدَهُ مِنَ النَّارِ»)
فیصلہ کر لیں ان دو جھوٹوں پر اصرار کرنا ہے یا ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
 
شمولیت
مئی 12، 2014
پیغامات
226
ری ایکشن اسکور
68
پوائنٹ
42
اس دھاگہ میں عامر یونس صاحب کے 255 جھوٹوں کا پردہ فاش !
عامر یونس صاحب نے بلا تحقیق کسی کی اندھی تقلید کرتے ہوئے یہ امیج پوسٹ کی ہے۔
10169230_456412697826279_6499288793487739803_n (1).jpg


عامر بھائی نے اس کے شروع میں لکھا ہے کہ(1) شروع نماز کا رفع یدین (2) رکوع جاتے ہوئے رفع یدین(3) رکوع سے اُٹھتے ہوئے رفع یدین(4)دو رکعت کے بعد کا رفع یدین ۔یعنی نماز میں کُل چار جگہ رفع یدین کرنا چاہئیے۔(ان ہی چار مقامات کے رفع یدین کوصحیح سنت اور محمدی نماز کہا گیا ہے)

نماز میں چار مقامات کے رفع یدین کا ذکر کر کے عامر بھائی نے 23 کتابوں کے حوالہ سے نشاندہی کی کہ اِن میں اس رفع یدین کی 255 احادیث موجود ہیں

عامر بھائی کو چیلنج دیتا ہوں کہ وہ اِن 23 کتابوں سے 255 احادیث نقل کر دیں جن میں چار مقامات میں رفع یدین کرنے کا ذکر موجود ہو اور اگر پیش نہ کر سکیں ان شاء اللہ قیامت تک پیش نہ کر سکیں گے تو اسے اپنے 255 جھوٹ شمار کریں

یاد رہے کہ یہ دھاگہ عامر بھائی نے شروع کیا ہے وہی اس کے جواب کے پابند ہیں اس لئے کوئی اور بھائی اس میں مداخلت نہ کرے اگر پھر بھی کوئی بھائی مداخلت کرے گا تو اس کی کسی بات کے جواب کا بندہ پابند نہیں ہوگا۔

دیکھتا ہوں کہ عامر بھائی کب چار مقامات پر رفع یدین کی 255 احادیث پیش کرتے ہیں یا انہیں اپنے 255 جھوٹ شمار کرتے ہیں؟؟؟
 
شمولیت
مئی 12، 2014
پیغامات
226
ری ایکشن اسکور
68
پوائنٹ
42
عامر بھائی کا 256 واں جھوٹ ملاحظہ کریں ۔یہ امیج بھی عامر بھائی نے کسی کی اندھی تقلید میں لگائی ہے خود تحقیق نہیں کی
10334285_1443550415887807_7218229522125868287_n.png

عبد اللہ ابن عمر کی ایک حدیث کے بارےعلی بن مدینی کی عبارت پڑھیں : " ھٰذَا الْحَدِیْثُ عِنْدِیْ حُجّۃٌ عَلَی الْخَلْقِ کُلُّ مَنْ سَمِعَہٗ فَعَلَیْہِ اَنْ یَّعْمَلَ بِہٖ لِاَنَّہٗ لَیْسَ فِیْ اِسْنَادِہٖ شَئٌ "(تلخیص الجیر ص 81)
اس عبارت کے کس لفظ کا ترجمہ عامر بھائی نے یہ کیا (اس میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے فوت ہونے تک کا رفع الیدین ثابت ہے) ہے نشاندہی کریں ورنہ اسے اپنا 256 واں جھوٹ شمار کریں
 
شمولیت
مئی 09، 2014
پیغامات
93
ری ایکشن اسکور
46
پوائنٹ
18
اس دھاگہ میں عامر یونس صاحب کے 255 جھوٹوں کا پردہ فاش !
عامر یونس صاحب نے بلا تحقیق کسی کی اندھی تقلید کرتے ہوئے یہ امیج پوسٹ کی ہے۔7765 اٹیچمنٹ کو ملاحظہ فرمائیں

عامر بھائی نے اس کے شروع میں لکھا ہے کہ(1) شروع نماز کا رفع یدین (2) رکوع جاتے ہوئے رفع یدین(3) رکوع سے اُٹھتے ہوئے رفع یدین(4)دو رکعت کے بعد کا رفع یدین ۔یعنی نماز میں کُل چار جگہ رفع یدین کرنا چاہئیے۔(ان ہی چار مقامات کے رفع یدین کوصحیح سنت اور محمدی نماز کہا گیا ہے)

نماز میں چار مقامات کے رفع یدین کا ذکر کر کے عامر بھائی نے 23 کتابوں کے حوالہ سے نشاندہی کی کہ اِن میں اس رفع یدین کی 255 احادیث موجود ہیں

عامر بھائی کو چیلنج دیتا ہوں کہ وہ اِن 23 کتابوں سے 255 احادیث نقل کر دیں جن میں چار مقامات میں رفع یدین کرنے کا ذکر موجود ہو اور اگر پیش نہ کر سکیں ان شاء اللہ قیامت تک پیش نہ کر سکیں گے تو اسے اپنے 255 جھوٹ شمار کریں

یاد رہے کہ یہ دھاگہ عامر بھائی نے شروع کیا ہے وہی اس کے جواب کے پابند ہیں اس لئے کوئی اور بھائی اس میں مداخلت نہ کرے اگر پھر بھی کوئی بھائی مداخلت کرے گا تو اس کی کسی بات کے جواب کا بندہ پابند نہیں ہوگا۔

دیکھتا ہوں کہ عامر بھائی کب چار مقامات پر رفع یدین کی 255 احادیث پیش کرتے ہیں یا انہیں اپنے 255 جھوٹ شمار کرتے ہیں؟؟؟
بھائی یزید حسین صاحب: آپ نے تو عامر یونس صاحب کے جھوٹوں کی"لائن"لگا دی ۔

یزید بھائی یہ سب پتہ ہے کیوں ہوا ! صرف اس لئے کہ عامر یونس صاحب کی اپنی تحقیق تو ہے نہیں اِنہوں نے یہ سب لگایا کلیم حیدر صاحب کی اندھی تقلید میں جناب کلیم حیدر نے یہ سب لکھا جناب خالد گرجاکھی صاحب کی اندھی تقلید میں اور خالد گرجاکھی صاحب نے لکھا اپنے سے پہلے کے علماء کی اندھی تقلید میں ان حضرات کی اپنی کوئی تحقیق نہیں اسی اندھی تقلید کے نتیجہ میں یہ 255 جھوٹ سامنے آئے (تقلید کو حرام کہنے والے خود اندھے مقلد بنے ہوئے ہیں)

یزید بھائی آپ کی باتوں میں ایک بات کا اضافہ کرتا ہوں کہ چار مقامات کے رفع یدین کی 255 احادیث پر پر جن تئیس کتابوں کا حوالہ دیاگیا ہے یہ کہاں تک سچ یا جھوٹ ہے یہ تو عامر یونس صاحب ہی بتائیں گے میں صرف اتنا عرض کرتا ہوں چار مقامات کے رفع یدین کا ذکر کر کے 255 احادیث کا حوالہ دینا یہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم پر 255 جھوٹ گھڑنا ہے ایک جھوٹ رسول اللہ پر گھڑنے کی سخت وعید(«مَنْ كَذَبَ عَلَيَّ مُتَعَمِّدًا، فَلْيَتَبَوَّأْ مَقْعَدَهُ مِنَ النَّارِ») ہے 255 جھوٹ گھڑنے والے کی حالت کیا ہوگی! اس لئے عامر یونس صاحب 255 احادیث ایسی نقل کریں جن میں میں چار مقامات پر رفع یدین کرنے کا صریح ذکر موجود ہو
 
شمولیت
اگست 11، 2013
پیغامات
17,116
ری ایکشن اسکور
6,780
پوائنٹ
1,069
raf.jpg


مفتی محمد شفیع صاحب نے فرمایا ہے۔کہ کبھی کبھی رفع الیدین بھی کر لیا کرو۔کیونکہ اگرقیامت والے دن رسول اللہ صلٰی اللہ علیہ وسلم نے دریافت فرمالیا کہ تم تک میری یہ سنت بھی تو صحیح طریقہ پر پہنچھی تھی تو تم نے اس پرعمل کیوں نہیں کیا تو کوئی جواب نہیں بن پڑے گا۔
(ماہنامہ الشریعہ ۔۔۔صفحہ نمبر 22 نومبر 2005)
 
شمولیت
اگست 11، 2013
پیغامات
17,116
ری ایکشن اسکور
6,780
پوائنٹ
1,069
محترم عامر یونس بھائی:
سوچتا ہوں کہ اس دھاگہ کے کس جھوٹ سے بات شروع کروں؟جناب نے اس دھاگہ کی ابتدا ہی ایک صریح جھوٹ اور جھوٹی حدیث سے کی ہے ،کیوں جھوٹ پر کمر باندھی ہے اور کب تک جھوٹ لکھتے رہوگے ۔اور کب تک جھوٹی امیج لگاتے رہو گے
جناب نے یہ پوسٹ کرتے ہوئے یہ امیج لگائی ہے
7763 اٹیچمنٹ کو ملاحظہ فرمائیں
اس میں جناب نے بخاری کا حوالہ دیا ہے یہ حدیث بخاری تو کجا پوری صحاح ستہ میں چراغ لیکر ڈھونڈو تو نہیں ملے گی اگر ہے تو اسکا متن بخاری سے نقل کر دیں ورنہ جھوٹی امیج اور جھوٹی حدیث پیش کرنے پر اللہ سے معافی مانگیں
اس امیج کو لگے ایک ماہ ہونے کو ہے لیکن اس فورم کے کسی ذمہ دار نے ادھر توجہ نہیں کی بلکہ اسےعلمی اور زبردت کے تمغوں سے نوازتے رہے اتنی غیر ذمہ داری کا ثبوت آخر کیوں؟؟؟
144 - نا محمد بن عصمة ، نا سوار بن عمارة ، نا رديح بن عطية ، عن أبي زرعة بن أبي عبد الجبار بن معج قال رأيت أبا هريرة فقال لأصلين بكم صلاة رسول الله صلى الله عليه وسلم لا أزيد فيها ولا أنقص فأقسم بالله إن كانت هي صلاته حتى فارق الدنيا قال : فقمت عن يمينه لأنظر كيف يصنع ، فابتدأ فكبر ، ورفع يده ، ثم ركع فكبر ورفع يديه ، ثم سجد ، ثم كبر ، ثم سجد وكبر حتى فرغ من صلاته قال : أقسم بالله إن كانت لهي صلاته حتى فارق الدنيا

ابو عبدالجبار سے روایت ہے کی انہوں نے حضرت ابو ہریرہ کو دیکھا انہوں نے کہا کہ میں آپ کو رسول اللہ کی نماز پڑھاوں گا اس میں زیادہ کروں گا نہ کم پس انہوں نے اللہ کی قسم اٹھا کی کہا پس آپ کی یہی نماز تھی حتی کہ آپ اس دنیا سے تشریف لے گئے ، راوی نے کہا میں آپ کے دائیں جانب کھڑا ہوگیا کہ دیکھوں آپکیا کرتے ہیں ، پس انہوں نے نماز کی ابتدا کی اللہ اکبر کہا اور رفع الیدین کیا پھررکوع کیا ،پس تکبیر کہی اور رفع الیدین کیاپھر سجدہ کیا اور اللہ اکبر کہا حتی آپاپنی نماز سے فارغ ہو گئےحضرت ابو ہریرہ نے فرمایا نے اللہ کی قسم آپ کی یہی نماز تھی حتی کہ آپ اس دنیا سے تشریف لے گئے ۔

الكتاب : معجم ابن الأعرابي
 
شمولیت
اگست 11، 2013
پیغامات
17,116
ری ایکشن اسکور
6,780
پوائنٹ
1,069
اس دھاگہ میں عامر یونس صاحب کے 255 جھوٹوں کا پردہ فاش !
عامر یونس صاحب نے بلا تحقیق کسی کی اندھی تقلید کرتے ہوئے یہ امیج پوسٹ کی ہے۔7765 اٹیچمنٹ کو ملاحظہ فرمائیں

عامر بھائی نے اس کے شروع میں لکھا ہے کہ(1) شروع نماز کا رفع یدین (2) رکوع جاتے ہوئے رفع یدین(3) رکوع سے اُٹھتے ہوئے رفع یدین(4)دو رکعت کے بعد کا رفع یدین ۔یعنی نماز میں کُل چار جگہ رفع یدین کرنا چاہئیے۔(ان ہی چار مقامات کے رفع یدین کوصحیح سنت اور محمدی نماز کہا گیا ہے)

نماز میں چار مقامات کے رفع یدین کا ذکر کر کے عامر بھائی نے 23 کتابوں کے حوالہ سے نشاندہی کی کہ اِن میں اس رفع یدین کی 255 احادیث موجود ہیں

عامر بھائی کو چیلنج دیتا ہوں کہ وہ اِن 23 کتابوں سے 255 احادیث نقل کر دیں جن میں چار مقامات میں رفع یدین کرنے کا ذکر موجود ہو اور اگر پیش نہ کر سکیں ان شاء اللہ قیامت تک پیش نہ کر سکیں گے تو اسے اپنے 255 جھوٹ شمار کریں

یاد رہے کہ یہ دھاگہ عامر بھائی نے شروع کیا ہے وہی اس کے جواب کے پابند ہیں اس لئے کوئی اور بھائی اس میں مداخلت نہ کرے اگر پھر بھی کوئی بھائی مداخلت کرے گا تو اس کی کسی بات کے جواب کا بندہ پابند نہیں ہوگا۔

دیکھتا ہوں کہ عامر بھائی کب چار مقامات پر رفع یدین کی 255 احادیث پیش کرتے ہیں یا انہیں اپنے 255 جھوٹ شمار کرتے ہیں؟؟؟
میرے بھائی اس پوسٹ میں رفع الدین کے متعلق جتنی بھی حدیث آئی ہے وہ بتائی گئی ہے - چاہے وہ کسی بھی مقام کے مطالق ہو
 
Last edited:
شمولیت
مئی 12، 2014
پیغامات
226
ری ایکشن اسکور
68
پوائنٹ
42
144 - نا محمد بن عصمة ، نا سوار بن عمارة ، نا رديح بن عطية ، عن أبي زرعة بن أبي عبد الجبار بن معج قال رأيت أبا هريرة فقال لأصلين بكم صلاة رسول الله صلى الله عليه وسلم لا أزيد فيها ولا أنقص فأقسم بالله إن كانت هي صلاته حتى فارق الدنيا قال : فقمت عن يمينه لأنظر كيف يصنع ، فابتدأ فكبر ، ورفع يده ، ثم ركع فكبر ورفع يديه ، ثم سجد ، ثم كبر ، ثم سجد وكبر حتى فرغ من صلاته قال : أقسم بالله إن كانت لهي صلاته حتى فارق الدنيا

ابو عبدالجبار سے روایت ہے کی انہوں نے حضرت ابو ہریرہ کو دیکھا انہوں نے کہا کہ میں آپ کو رسول اللہ کی نماز پڑھاوں گا اس میں زیادہ کروں گا نہ کم پس انہوں نے اللہ کی قسم اٹھا کی کہا پس آپ کی یہی نماز تھی حتی کہ آپ اس دنیا سے تشریف لے گئے ، راوی نے کہا میں آپ کے دائیں جانب کھڑا ہوگیا کہ دیکھوں آپکیا کرتے ہیں ، پس انہوں نے نماز کی ابتدا کی اللہ اکبر کہا اور رفع الیدین کیا پھررکوع کیا ،پس تکبیر کہی اور رفع الیدین کیاپھر سجدہ کیا اور اللہ اکبر کہا حتی آپاپنی نماز سے فارغ ہو گئےحضرت ابو ہریرہ نے فرمایا نے اللہ کی قسم آپ کی یہی نماز تھی حتی کہ آپ اس دنیا سے تشریف لے گئے ۔

الكتاب : معجم ابن الأعرابي

عامر یونس بخاری کا متن پیش کرو ؟

اس حدیث پر جناب نے بخاری جلد 1 صفہ 110 کتاب الاذان کا حوالہ دیا تھا بندہ نے بخاری کے متن کا مطالبہ کیا تھا ۔معجم ابن الاعرابی کا حوالہ دیکر جناب نے تسلیم کر لیا کہ بخاری کا حوالہ دینا جناب کی اندھی تقلید کا نتیجہ اور بخاری پر جناب کا صریح جھوٹ گھڑنا تھا ۔(چلو ایک جھوٹ تو جناب نے مان لیا)

دوسری بات بندہ نے اس روایت کے بارے یہ لکھی تھی کہ" یہ روایت جھوٹی ہے" (اسکے راوی محمد بن عصمۃ کی توثیق ثابت نہیں) " جناب کو چاہئیے تھا کہ اس کے رویوں کی مکمل توثیق بیان کرتے ایک جھوٹی روایت کو رسول اللہ کی حدیث کہنا رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم پر بہتان لگانا ہے جس کی سزا جہنم کی اگ میں جلنا ہے توبہ کریں یا اس روایت کے راویوں کی مکمل توثیق بیان کریں

تیسری بات پر غور کریں : اس جھوٹی روایت میں صرف تکبیر تحریمہ اور رکوع میں جانے کا رفع یدین ہے اور بقول سیدنا ابوہریرہ کے یہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی یہی نماز تھی حتی کہ آپ اس دنیا سے تشریف لے گئے ۔

اس روایت میں رفع یدین نبی اکرم کی وفات تک صرف دو جگہ ثابت ہے اور تمام اہل حدیث نبی اکرم کی اس نماز کے خلاف نماز پڑھتے ہیں کیوں؟؟؟؟
 
Top