• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

صوفیاء کے کرامات

قاضی786

رکن
شمولیت
فروری 06، 2014
پیغامات
146
ری ایکشن اسکور
70
پوائنٹ
75
السلام علیکم

امید ہے سب برادران خیریت سے ہوں گے

پچھلے کچھ عرصے سے کافی مسائل درپیش رہیں، مگر سب سے زیادہ مجھے ایک ذہنی کوفت ہو رہی ہے
اور شاید تنگ بھی اسی نے کیا

آج موقع ملا تو سوچا کہ اہل علم سے اس بابت سوال کیا جائے

واقعہ کچھ یوں ہے کہ ہمارے ایک جاننے والے ہیں

ہمارے کلاس فیلو تھے
کافی اچھے اخلاق کے حامل تھے

پہلے دیوبندی مسلک سے تعلق تھا
مگر کچھ عرصہ سے
ان صاحب سے جب بھی بات ہوتی، وہ فقیروں اور خانقاہوں کے باتیں کرتے

میں نے سوچا چلو ان کی مرضی، خیر میرے بھائی نے امتحان دیا تھا
کافی پریشان تھا، اچھا نہیں ہوا تھا تو اسی صاحب سے ملاقات ہوئی، میرا بھائی بھی ساتھ ہی تھا
اس نے امتحان کا پوچھا، تو اس نے بتایا کہ اچھا نہیں ہوا
اس نے کہا کہ کوئی مسئلہ نہیں، میں حضرت جی سے بات کرتا ہوں، آپ کا مسئلہ حل ہو جائے گا
پھر انہوں نے فون ملایا، تو حضرت جی سے بات کی جس پر وہ جو بھی موصوف تھے
انہوں نے کہا کہ فکر نہ کرو، آپ پاس ہو اور اچھی کامیابی ملے گی

رزلٹ آیا تو میرا بھائی پاس ہو گیا

اب مجھے بھی خوشی تھی کہ چلو بھائی پاس ہو گیا

اتنے میں ہمارے ایک اور عزیز کی طبعیت کافی خراب ہوئی، بلڈ پریشر آسمانوں میں تھا
کم ہونے کا نام ہی نہیں لے رہا تھا
مجھے علم ہی نہیں کہ میرا بھائی اس شخص کے پاس گیا، اور اس نے اس حضرت جی سے کوئی تعویذ لے کر دی، جو اس نے لا کر جلائی، اور ان کا بلڈ پریشر نارمل ہو گیا

میرے بھائی کا تو کوئی شدید قسم کا ایمان بن گیا اس موصوف پر

میرے کلاس فیلو نے تو مجھے کچھ نہ بتایا مگر بھائی مجھے کہتا ہے کہ آپ کو علم نہیں
یہ بہت پہنچے ہوئے ہیں
یہ روحانیات میں بہت آگے ہیں
اور یہ اپنے آپ کو زمان و مکان کی قید سے آزاد کر دیتے ہیں
اور ان کو زیارت پاک بھی اس حال میں نصیب ہوئی ہے
آپ بھی ان کے پاس چلیں
وہ وظائف دیں گے
وغیرہ وغیرہ

مجھے بھائی کو لے کر سخت پریشانی ہے کہ یہ کس مسئلے میں پھنس گیا ہے

میں نے اسے سمجھایا کہ دیکھو یہ صوفی حضرات سے بچ کر رہو
مگر اس کا کہنا یہ ہے کہ دیکھو ان کی کتنی کرامات ہیں

ان کو زیارت بھی ملتی ہے

اس طرح کی باتیں

میں بہت معذرت خواہ ہوں کہ اتنا لمبا چوڑا پوسٹ کر رہا ہوں

مگر پریشانی کے باعث اور کوئی حل نہیں

امید ہے اہل علم حضرات رہنمائی کریں گے

شکریہ
 

اسحاق سلفی

فعال رکن
رکن انتظامیہ
شمولیت
اگست 25، 2014
پیغامات
6,372
ری ایکشن اسکور
2,534
پوائنٹ
791
سب نظر کا فریب ،اور شیطان کا دھوکہ ہے ،
قرآن کا بیان ہے :
(قَالُوا يَا مُوسَى إِمَّا أَنْ تُلْقِيَ وَإِمَّا أَنْ نَكُونَ أَوَّلَ مَنْ أَلْقَى (65) قَالَ بَلْ أَلْقُوا فَإِذَا حِبَالُهُمْ وَعِصِيُّهُمْ يُخَيَّلُ إِلَيْهِ مِنْ سِحْرِهِمْ أَنَّهَا تَسْعَى (66) فَأَوْجَسَ فِي نَفْسِهِ خِيفَةً مُوسَى (67) قُلْنَا لَا تَخَفْ إِنَّكَ أَنْتَ الْأَعْلَى (68) وَأَلْقِ مَا فِي يَمِينِكَ تَلْقَفْ مَا صَنَعُوا إِنَّمَا صَنَعُوا كَيْدُ سَاحِرٍ وَلَا يُفْلِحُ السَّاحِرُ حَيْثُ أَتَى (69) فَأُلْقِيَ السَّحَرَةُ سُجَّدًا قَالُوا آمَنَّا بِرَبِّ هَارُونَ وَمُوسَى (70) )
(جادو گر) بولے کہ اے موسیٰ (پہلے) آپ (اپنا عصا) ڈالیں گے یا ہمیں پہلے ڈالنے والے بنیں ؟
(موسی (علیہ السلام) نے) کہا نہیں تم ہی ڈالو۔ پس یکایک ان کی رسیاں اور ان کی لاٹھیاں موسیٰ کے خیال میں ان کے جادو کے زور سے ایسی نظر آنے لگیں کہ گویا (وہ سانپ ہیں ) جو دوڑ رہے ہیں ۔(اللہ فرماتا ہے ) ہم نے موسیٰ سے کہا ڈرو نہیں، غالب تو یقیناً تم ہی رہوگے،
تمہارے داہنے ہاتھ میں جو (عصا) ہے اسے ڈال دو اس ( ڈھونگ ،سوانگ) کو وہ بالکل نگل جائے گا جو انہوں نے بنا کھڑا کیا ہے یہ انہوں نے تو بس جادوکا سوانگ بنا کھڑا کیا ہے اور جادو گر کہیں جائے کامیاب نہیں ہوتا،۔‘‘ سورہ طہ
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔یہ تو ایک عظیم الشان نبی علیہ السلام کی بات تھی ،

اب چند حقیقی اولیاء اللہ ۔۔۔جن کی ولایت کی حقانیت پر قرآن گواہ ہے ،
خود اللہ تعالی بتاتا ہے کہ واقعی بڑے محبوب ولی تھے ۔۔۔۔۔۔
لیکن کفار سے اپنی جان و ایمان بچانے ایک غار میں پناہ لیتے ہیں ، اور سو جاتے ہیں ،
جب بیدار ہوتے ہیں تو بھوک دامن گیر ہوتی ہے اور کھانے لانے اپنے ایک ساتھی کو شہر بھیجتے ہیں
اور اسے یہ تاکید کرتے ہیں کہ ۔۔۔ بچ بچاکر جانا ۔۔ کہیں کوئی تمہیں پہچان کر ہم تک نہ پہنچ جائے ،
اور انہیں اتنا علم بھی نہیں ہوتا کہ اسے جو پیسے کھانا لانے کیلئے دے رہے ہیں وہ صدیوں پہلے کی کرنسی ہے ، جو اب منسوخ ومتروک ہوچکی
اور پھر وہ اللہ کا سچا ولی اپنے آپ کو مخفی رکھ کر لوگوں سے نہ بچا سکا ، نہ چھپا سکا اور یوں ان کا راز عیاں ہوگیا ،
اور لوگ ان کے ٹھکانے تک پہنچ گئے ،
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
جب مصدقہ اولیاء اللہ اپنی اتنی سی مشکل حل نہ کرسکے ، تو ہم یہ کیسے مان لیں کہ ،کوئی ’’ صوفی ‘‘ بےچارہ جس کی ولایت تو دور کی بات محض
ابتدائی ایمان بھی وحی الہی سے تصدیق شدہ نہیں ،وہ کچھ کرتب دکھا ئے، اور ہم مان لیں کہ وہ غاروالوں سے بڑاولی ہے ، اورولایت کے جھنڈے گاڑ رہا ہے ،اور مشکل کشا بن گیا ہے

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
 
Last edited:

قاضی786

رکن
شمولیت
فروری 06، 2014
پیغامات
146
ری ایکشن اسکور
70
پوائنٹ
75
السلام علیکم محترم اسحاق سلفی بھائی

میں آپ کی بات سے متفق ہوں
جہاں تک ان کی کرامات کی بات ہے، اس ضمن میں
وہ ایک لطیفہ بھی ہے کہ ایک بار ایک کشتی ڈوبنے لگی، سب شور مچا رہے تھے۔ ایک بزرگ ایک کونے میں جائے نماز بچھا کر دعاؤں میں مشغول ہو گئے
ایک شخص ان کے پاس گیا اور پوچھا کہ سب پریشان ہیں اور آپ اسطرح بیٹھے ہیں
اس نے جواب دیا کہ بیٹا! اگر تو کشتی نے ڈوبنا ہے، تو سب ہی مر جائیں گے
اگر یہ بچ گئی، تو سمجھ لو میری لاٹری نکل آئی

میں اس بات سے آگاہ ہوں کہ کئی باتیں چانس پر بھی ہو جاتی ہیں
مثال کے طور پر جو بلڈ پریشر والی بات میں نے آپ کو بتائی
آخر کو وہ دوائی بھی تو کھا رہے تھے۔ اس کا بھی اثر ہو سکتا ہے

مسئلہ یہ نہیں
بات یہ ہے کہ میں نے اپنے بھائی کو جب کہا کہ دیکھو بات یہ ہے کہ اگر اس طرح کی کرامات سے تم متاثر ہوتے رہے، تو تم تو دجال سے بھی متاثر ہو جاؤ گے
اس کا کہنا یہ ہے کہ وہ اللہ کی طرف تو نہیں بلائے گا ناں

ان کو تو زیارت نصیب ہوتی ہے
وغیرہ وغیرہ

مجھے تو مسئلہ اپنے بھائی کا ہے
اس کا کیا کروں

شکریہ
 

قاضی786

رکن
شمولیت
فروری 06، 2014
پیغامات
146
ری ایکشن اسکور
70
پوائنٹ
75
السلام علیکم

جاوید غامدی صاحب کی 6 ویڈیوز ہیں اس موضوع پر یعنی صوفیاء کے موضوع پر ایک بحث ہوئی پروگرام الف میں

لنک ملاحظہ ہو


میں نے صرف پہلے کا لنک دیا ہے
وہیں سے باقی ملاحظہ کریں

شکریہ
 

Dua

سینئر رکن
شمولیت
مارچ 30، 2013
پیغامات
2,579
ری ایکشن اسکور
4,434
پوائنٹ
463
السلام علیکم ورحمتہ اللہ!
اسحاق سلفی بھائی آپ جو بات کہہ رہیں وہ بھائی کے مسئلے سے الگ ہے۔کیونکہ زمان و مکان کی قید سے آزاد ہونا اور اس جیسی دیگر باتیں وہ کیفیات ہیں جو مختلف علوم سے پریکٹس کر کے حاصل کی جاتی ہیں۔یاد رہے کہ یہ علوم اللہ تعالی کی مرضی و منشا سے ہی معاشرے میں "ایگزسٹ" کرتے ہیں۔یہ انسان پر آزمائش ہے۔قاضی بھائی آپ بالخصوص اپنے بھائی سے اللہ تعالی کے علم و وسعت اور صفات و قدرت پر سیر حاصل تبصرہ کیجیئے، تاکہ ان کی توجہ کا محور و مرکز اللہ رب العزت کے ذات مبارکہ رہے۔ ناکہ اولیاء کی کرامتیں۔
 
Top