• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

کیا احرام کی حالت میں نکوٹین (nicotine) استعمال کیا جاسکتا ہے

شمولیت
جون 01، 2017
پیغامات
25
ری ایکشن اسکور
2
پوائنٹ
36
السلام علیکم ورحمتہ اللہ و برکاتہ

کیا احرام کی حالت میں نکوٹین کا استعمال کرسکتے ہیں

میرے دوست کے بڑے بھائ ہیں جو سگرٹ کے عادی ہیں ایک دن میں وہ بیس سگرٹ پی جاتے ہیں

اور وہ ارادہ کررہے ہیں کہ چھوڑ دیں گے اسلے وہ نکوٹین استعمال کر رہے ہیں تو کیا اس نکوٹین کو احرام میں بھی استعمال کرسکتے ہیں

@خضر حیات
@اسحاق سلفی
 

خضر حیات

علمی نگران
رکن انتظامیہ
شمولیت
اپریل 14، 2011
پیغامات
8,774
ری ایکشن اسکور
8,441
پوائنٹ
964
و علیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
نکوٹین پتہ نہیں کیا ہوتی ہے ؟
اگر سگریٹ کی طرح کا کوئی نشہ ہے، تو یہ ہر حالت میں حرام ہے، چاہے احرام کی حالت میں ہو یا احرام کے بغیر۔
البتہ اس سے احرام باطل نہیں ہوتا۔
البتہ چونکہ گناہ ہے، اس لیے ظاہر ہے حج یا عمرے کے ثواب پر اثر انداز ہوگا۔ واللہ اعلم۔
 

اسحاق سلفی

فعال رکن
رکن انتظامیہ
شمولیت
اگست 25، 2014
پیغامات
6,372
ری ایکشن اسکور
2,502
پوائنٹ
791
وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

النيكوتين هو مركب عضوي شبه قلوي وسام. يوجد في الطبيعة في جميع أجزاء نبات التبغ، مع تركيز أكبر في الأوراق على شكل سيترات أو مالات. يشكل من 0.3 إلى 5% من النبات بالوزن الجاف، والتركيب الحيوي يوجد في الجذور، ويجمع في الأوراق. يوجد النيكوتين كذلك، إلى جانب التبغ، في الطماطم، البطاطس، الفلفل الأخضر، والباذنجان وغيرها. كما أنه يوجد أيضاً في أوراق نبات الكوكا. تستخدم النباتات وخاصة التبغ النيكوتين كوسيلة للدفاع عن نفسها ضد الحشرات.


نکوٹین مالیکیول کا ایک نمونہ
نکوٹین ایک الکلی نما ہے جو تمباکو کے پتوں میں موجود ایک زہریلا مادہ ہوتا ہے۔ یہ ہیروئن اور کوکین کی طرح انتہائی نشہ آور کیمیائی مادہ ہے۔ انسانی جسم اور دِماغ اس کے بہت عادی ہو جاتے ہیں اور اچھا محسوس کرنے کے لیے بار بار اِس کی طلب ہوتی ہے۔ تمباکو نوشی شروع کرنے کے لیے کوئی جسمانی وجوہات نہیں ہوتیں۔ جسم کو خوراک، پانی، نیند اور ورزش کی طرح نِکوٹین کی ضرورت نہیں ہوتی۔ در حقیقت نِکوٹین اور سایانائیڈ جیسے کیمیائی مادے اگر زیادہ مقدار میں لے لیے جائیں تو مہلک ثابت ہو سکتے ہیں۔

جدید دور میں تو نکوٹین فلٹر بھی مارکیٹ میں موجود ہے جو سگریٹ کے فلٹر کے پیچھے لگا کر سگریٹ پینے سے سگریٹ کا 100 فیصد نکوٹین فلٹر میں جمع ہوجاتا ہے اور جسم میں داخل نہیں ہوتا۔ یوں یہ سگریٹ ”بے ضرر“ ہوجاتا ہے۔

_____________________
نکوٹین

نکوٹین تمباکو کے پودے میں پایا جانے والا ایک محرک ہے اور سگریٹ کا اہم منشیاتی جزو ہے۔ اسے اکثر پیا جاتا ہے، تاہم چبایا بھی جا سکتا ہے اور کبھی کبھار جلائے بغیر سانس کے ذریعے کھینچا بھی جا سکتا ہے۔ نکوٹین دستیاب منشیاتی ادویات میں سے بدنام ترین دوا ہے، حتی کہ اگر انحصار کے اعتبار سے اسے ہیروئن اور کوکین کے مقابلے پہ بھی دیکھا جائے، اور یہ صحت کے بہت سے مسائل کے ساتھ منسلک ہے۔ ہر سال تمباکو نوشی سے دنیا بھر میں لاکھوں اموات ہوتی ہیں۔

نکوٹین تقریبا ہر ملک میں بڑے پیمانے پر دستیاب ہے، اگرچہ ترقی یافتہ دنیا میں تمباکو نوشی کو معاشرے سے ختم کرنے کے لیے مستقل کوششیں کی جا تی رہی ہیں۔ اپنے طویل المعیاد مضر اثرات کی بنا پر یہ صارف کو صحت کے مسائل اور آخر کار موت سے ہمکنار کی دیتی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ اس عادت کو سماج دشمن گردانا جانا بھی استعمال کرنے والے کے لیے اچھی خبر نہیں ہوتی۔ تمباکو نوشی کو دل کے دورے اور سرطان سمیت دیگر سنجیدہ نوعیت کے صحت کے متعدد مسائل سے منسلک پایا جاتا ہے۔ یہ ناخوشگوار سے لے کر زندگی کے لیے خطرناک دیگر بہت سے صحت کے قلیل اور طویل المعیادی مسائل پیدا کر سکتی ہے۔

اس کو لینے کے لیے استعمال کیے جانے والے طریقے کے پیش نظر دماغ اور خون میں موجود نکوٹین کی مقدار پر کرنے والے اپنے اثرات کی بنا پر اگر متقاضانہ انداز میں کہیے تو نکوٹین محرک بھی ہے اور سکون آور بھی۔ یہ دوا کس طریقے سے لی گئی ہے اس پر انحصار کرتے ہوئے اس کو استعمال کرنے والا چاک و چوبند یا پرسکون محسوس کر سکتا ہے۔ مختصر مگر مرتکز کش تحریکی اثر پیدا کریں گے، جبکہ طویل اور زیادہ پرسکون کش آدمی کو سکون و آرام دے سکتے ہیں۔

بذات خود یہ دوا بہت نشہ آور نہیں سمجھی جاتی، تاہم جب تمباکو میں پائے جانے والے دیگر کیمیکلز اور دوسرے مادوں کے ساتھ اس کو ملا لیا جائے اس میں نشہ آور ہونے کی خاصی صلاحیت پیدا ہو جاتی ہے۔ تمباکو نوشی کو چھوڑنا بہت مشکل سمجھا جاتا ہے اور اس عمل کو آسان بنانے کے لیے نکوٹین کی چیپیاں اور بجلی سے چلنے والے سگریٹ دستیاب ہیں۔ تاہم بہت سے لوگ اسے چھوڑنے کی بار بار کوشش کرنے کے باوجود تمباکو نوشی کو دوبارہ شروع کر لیتے ہیں۔
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
حكم شرب الدخان في الحج
السؤال: من جمهورية مصر العربية السائل يقول: هل شرب الدخان في الحج والإنسان محرم يفسد في ذلك الحج ولا تقبل؟
ـــــــــــــــــــــــ
الجواب: شرب الدخان ما يجوز، وفيه مضار كثيرة لا يجوز شربه، لا في الحج ولا في غيره، يجب تركه، ولكن شربه بالحج وفي العمرة لا يبطل العمرة، لكن نقص، نقص في الثواب، وإلا الحج صحيح والعمرة صحيحة ولو كان يشرب الدخان، لكن الواجب ترك التدخين كما يجب ترك شرب المسكرات والمخدرات، يجب على المؤمن أن يحذر المخدرات والمسكرات والتدخين جميعاً؛ لأن الله حرم ذلك، نعم.

https://binbaz.org.sa/fatwas/13644/
 
Last edited:
شمولیت
جون 01، 2017
پیغامات
25
ری ایکشن اسکور
2
پوائنٹ
36
وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ

النيكوتين هو مركب عضوي شبه قلوي وسام. يوجد في الطبيعة في جميع أجزاء نبات التبغ، مع تركيز أكبر في الأوراق على شكل سيترات أو مالات. يشكل من 0.3 إلى 5% من النبات بالوزن الجاف، والتركيب الحيوي يوجد في الجذور، ويجمع في الأوراق. يوجد النيكوتين كذلك، إلى جانب التبغ، في الطماطم، البطاطس، الفلفل الأخضر، والباذنجان وغيرها. كما أنه يوجد أيضاً في أوراق نبات الكوكا. تستخدم النباتات وخاصة التبغ النيكوتين كوسيلة للدفاع عن نفسها ضد الحشرات.


نکوٹین مالیکیول کا ایک نمونہ
نکوٹین ایک الکلی نما ہے جو تمباکو کے پتوں میں موجود ایک زہریلا مادہ ہوتا ہے۔ یہ ہیروئن اور کوکین کی طرح انتہائی نشہ آور کیمیائی مادہ ہے۔ انسانی جسم اور دِماغ اس کے بہت عادی ہو جاتے ہیں اور اچھا محسوس کرنے کے لیے بار بار اِس کی طلب ہوتی ہے۔ تمباکو نوشی شروع کرنے کے لیے کوئی جسمانی وجوہات نہیں ہوتیں۔ جسم کو خوراک، پانی، نیند اور ورزش کی طرح نِکوٹین کی ضرورت نہیں ہوتی۔ در حقیقت نِکوٹین اور سایانائیڈ جیسے کیمیائی مادے اگر زیادہ مقدار میں لے لیے جائیں تو مہلک ثابت ہو سکتے ہیں۔

جدید دور میں تو نکوٹین فلٹر بھی مارکیٹ میں موجود ہے جو سگریٹ کے فلٹر کے پیچھے لگا کر سگریٹ پینے سے سگریٹ کا 100 فیصد نکوٹین فلٹر میں جمع ہوجاتا ہے اور جسم میں داخل نہیں ہوتا۔ یوں یہ سگریٹ ”بے ضرر“ ہوجاتا ہے۔

_____________________
نکوٹین

نکوٹین تمباکو کے پودے میں پایا جانے والا ایک محرک ہے اور سگریٹ کا اہم منشیاتی جزو ہے۔ اسے اکثر پیا جاتا ہے، تاہم چبایا بھی جا سکتا ہے اور کبھی کبھار جلائے بغیر سانس کے ذریعے کھینچا بھی جا سکتا ہے۔ نکوٹین دستیاب منشیاتی ادویات میں سے بدنام ترین دوا ہے، حتی کہ اگر انحصار کے اعتبار سے اسے ہیروئن اور کوکین کے مقابلے پہ بھی دیکھا جائے، اور یہ صحت کے بہت سے مسائل کے ساتھ منسلک ہے۔ ہر سال تمباکو نوشی سے دنیا بھر میں لاکھوں اموات ہوتی ہیں۔

نکوٹین تقریبا ہر ملک میں بڑے پیمانے پر دستیاب ہے، اگرچہ ترقی یافتہ دنیا میں تمباکو نوشی کو معاشرے سے ختم کرنے کے لیے مستقل کوششیں کی جا تی رہی ہیں۔ اپنے طویل المعیاد مضر اثرات کی بنا پر یہ صارف کو صحت کے مسائل اور آخر کار موت سے ہمکنار کی دیتی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ اس عادت کو سماج دشمن گردانا جانا بھی استعمال کرنے والے کے لیے اچھی خبر نہیں ہوتی۔ تمباکو نوشی کو دل کے دورے اور سرطان سمیت دیگر سنجیدہ نوعیت کے صحت کے متعدد مسائل سے منسلک پایا جاتا ہے۔ یہ ناخوشگوار سے لے کر زندگی کے لیے خطرناک دیگر بہت سے صحت کے قلیل اور طویل المعیادی مسائل پیدا کر سکتی ہے۔

اس کو لینے کے لیے استعمال کیے جانے والے طریقے کے پیش نظر دماغ اور خون میں موجود نکوٹین کی مقدار پر کرنے والے اپنے اثرات کی بنا پر اگر متقاضانہ انداز میں کہیے تو نکوٹین محرک بھی ہے اور سکون آور بھی۔ یہ دوا کس طریقے سے لی گئی ہے اس پر انحصار کرتے ہوئے اس کو استعمال کرنے والا چاک و چوبند یا پرسکون محسوس کر سکتا ہے۔ مختصر مگر مرتکز کش تحریکی اثر پیدا کریں گے، جبکہ طویل اور زیادہ پرسکون کش آدمی کو سکون و آرام دے سکتے ہیں۔

بذات خود یہ دوا بہت نشہ آور نہیں سمجھی جاتی، تاہم جب تمباکو میں پائے جانے والے دیگر کیمیکلز اور دوسرے مادوں کے ساتھ اس کو ملا لیا جائے اس میں نشہ آور ہونے کی خاصی صلاحیت پیدا ہو جاتی ہے۔ تمباکو نوشی کو چھوڑنا بہت مشکل سمجھا جاتا ہے اور اس عمل کو آسان بنانے کے لیے نکوٹین کی چیپیاں اور بجلی سے چلنے والے سگریٹ دستیاب ہیں۔ تاہم بہت سے لوگ اسے چھوڑنے کی بار بار کوشش کرنے کے باوجود تمباکو نوشی کو دوبارہ شروع کر لیتے ہیں۔
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
حكم شرب الدخان في الحج
السؤال: من جمهورية مصر العربية السائل يقول: هل شرب الدخان في الحج والإنسان محرم يفسد في ذلك الحج ولا تقبل؟
ـــــــــــــــــــــــ
الجواب: شرب الدخان ما يجوز، وفيه مضار كثيرة لا يجوز شربه، لا في الحج ولا في غيره، يجب تركه، ولكن شربه بالحج وفي العمرة لا يبطل العمرة، لكن نقص، نقص في الثواب، وإلا الحج صحيح والعمرة صحيحة ولو كان يشرب الدخان، لكن الواجب ترك التدخين كما يجب ترك شرب المسكرات والمخدرات، يجب على المؤمن أن يحذر المخدرات والمسكرات والتدخين جميعاً؛ لأن الله حرم ذلك، نعم.

https://binbaz.org.sa/fatwas/13644/
جزاک اللہ خیرا

معذرت خواہ عربی کا ترجمہ بھی کردیں
 

اسحاق سلفی

فعال رکن
رکن انتظامیہ
شمولیت
اگست 25، 2014
پیغامات
6,372
ری ایکشن اسکور
2,502
پوائنٹ
791
علامہ شیخ عبدالعزیزبن عبداللہ بن بازؒ سے سوال ہواکہ :
ـــــــــــــــــــــــــــــــ
حكم شرب الدخان في الحج
السؤال: من جمهورية مصر العربية السائل يقول: هل شرب الدخان في الحج والإنسان محرم يفسد في ذلك الحج ولا تقبل؟

سوال :
حج کے دوران سگریٹ پینے کا شرعی حکم
جمہوریہ مصر سے سائل نے سوال کیا کہ حج کے دوران حالت احرام میں سگریٹ نوشی کیا حج فاسد ہوجاتا ہے ؟
ـــــــــــــــــــــــ
الجواب: شرب الدخان ما يجوز، وفيه مضار كثيرة لا يجوز شربه، لا في الحج ولا في غيره، يجب تركه، ولكن شربه بالحج وفي العمرة لا يبطل العمرة، لكن نقص، نقص في الثواب، وإلا الحج صحيح والعمرة صحيحة ولو كان يشرب الدخان، لكن الواجب ترك التدخين كما يجب ترك شرب المسكرات والمخدرات، يجب على المؤمن أن يحذر المخدرات والمسكرات والتدخين جميعاً؛ لأن الله حرم ذلك، نعم.

جواب :
سیگریٹ نوشی شرعاً جائز نہیں ، اس میں انسانی صحت کیلئے بہت سارے نقصان ہیں ، اس لئے حج کے دوران اور حج کے علاوہ کسی بھی وقت سگریٹ پینا جائز نہیں ،
لیکن اس کے پینے حج و عمرہ باطل نہیں ہوتا ، البتہ ناقص ہوجاتا ہے ،
یعنی ثواب میں کمی ہوجاتی ہے ۔تاہم ادا ہوجاتا ہے ،
لیکن اسے چھوڑنا واجب ہے جیسے شراب نوشی اور دیگر منشیات ترک کرنا واجب ہے ایک مومن کیلئے ہر طرح کی نشہ آور چیزیں ترک کرنا ضروری ہے ،کیونکہ اللہ تعالی نے یہ نشہ آور اشیاء حرام قرار دی ہیں ۔
 
Top