• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

73 فرقوں والی حدیث کا پوسٹ مارٹم، کون سا فرقہ جنتی ہے (ناقابل تردید دلائل کے ساتھ)

شاہد نذیر

سینئر رکن
شمولیت
فروری 17، 2011
پیغامات
2,067
ری ایکشن اسکور
6,267
پوائنٹ
437
تمہارے پاس کوئی سند نہیں ایسی ادھر ادھر کی پہیلیاں اور کہانی سنا رہے ہو مجھے اس طرح کی شعر و شاعری پسند نہیں ہتمہارے ساتھ بات کرنا فضول ہے اور ویسے بھی دنیا نے دیکھ لیا کہ تم یہ فرقہ واریت کا مقدمہ ہار چکے ہیں اور اپنے ہار کو تسلیم کرواور تم نے اپنی جہالت سے جو دوسرے لوگوں کو گمراہ کیا ان سے معافی مانگو اور اپنی اصلاح کرو اور دوسرے لوگوں کی بھی اصلاح کرو اور اس فرقہ واریت سے توبہ کرو
ارے نہیں بھائی ابھی اتنی جلدی فرار ہونے کی کوشش مت کرو ابھی تو پارٹی شروع ہوئی ہے ابھی آپ نے بہت بے عزت ہونا ہے اپنی تحریر کے تضاد سے اور اپنی کذب بیانیوں سے۔ صبر کریں ابھی فلم باقی ہے۔
 

شاہد نذیر

سینئر رکن
شمولیت
فروری 17، 2011
پیغامات
2,067
ری ایکشن اسکور
6,267
پوائنٹ
437
تمہارے پاس کوئی سند نہیں
آپ کے پاس کون سی دلیل ہے اتنی دیر سے صرف پہلیاں ہی تو بجھوا رہے ہو۔ کس حدیث میں نبی ﷺ نے فرمایا کہ جو فرقہ جنت میں جائے گا اس کا نام مسلمان ہوگا؟ چلیں آپ کی بونگیوں کی دلیل حدیث سے نہیں مانگتے آپ کسی ایک بڑے عالم یا محدث کا صرف ایک قول پیش کردیں کہ ناجی فرقے کا نام مسلمان ہوگا۔ چلو شاباش ایک حوالہ پیش کرو یہ کوئی مشکل مطالبہ نہیں ہے ورنہ شرم سے منہ چھپالو۔
 

شاہد نذیر

سینئر رکن
شمولیت
فروری 17، 2011
پیغامات
2,067
ری ایکشن اسکور
6,267
پوائنٹ
437
آپ نے اس بات کو کہ سلف صالحین لفظ اہل حدیث کو بطور فرقہ نہیں بلکہ محدثین کی جماعت کے لئے استعمال کرتے تھےاپنے موقف کی دلیل کے طور پر پیش کیا ہے حالانکہ یہ دلیل نہیں بلکہ جھوٹ، فریب اور دروغ گوئی ہے۔اس کا جواب میں دوسر ے تھریڈ میں بھی دے چکا ہوں لیکن وہاں جواب نہ ہونے کی وجہ سے آپ نے مکمل خاموشی اختیار کی تھی ۔ اخلاقی طور پر تو یا تو آپ کا اس کا جواب دینا چاہئے تھا یا پھر اسے دوبارہ دہرانے سے پرہیز کرنا چاہیے تھا۔ لیکن آپ نے نہ جواب دیا اور نہ خاموشی اختیار کی بلکہ دوبارہ ایک بے حیا کی طرح اسی بات کو رٹناشروع کردیا ۔ اس لئے میں مکرر اس کو پیش کررہا ہوں ۔ ملاحظہ فرمائیں:

حضرت ثوبان رضی ‌اللہ ‌عنہ سے روایت ہے رسول اﷲ صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وسلم نے فرمایا لَا تَزَالُ طَائِفَةٌ مِنْ أُمَّتِي ظَاهِرِينَ عَلَى الْحَقِّ، لَا يَضُرُّهُمْ مَنْ خَذَلَهُمْ حَتَّى يَأْتِيَ أَمْرُ اللَّهِ وَهُمْ كَذَلِكَ ،..
ہمیشہ میری امت کا ایک گروہ حق پر قائم رہے گا کوئی ان کا نقصان نہ پہنچا سکے گا یہاں تک کہ اﷲ تعالیٰ کا حکم آوے ( یعنی قیامت ) اور وہ اسی حال میں ہوں گے۔(صحیح مسلم)

سب کے نزدیک اس گروہ کا اصل مصداق جماعت اہل حدیث ہے ۔ دیکھئے:

1- عبد اللہ بن مبارک رحمہ اللہ فرماتے ہیں: "میرے نزدیک وہ اہل حدیث ہیں"(شرف أصحاب الحدیث، ص:61).
2- یزید بن ہارون رحمہ اللہ فرماتے ہیں کہ:"اگر وہ اہل حدیث نہیں ہیں تو پھر مجھے نہیں معلوم کہ کون ہیں"(شرف اہل الحديث، ص:59).
3- علی بن مدینی رحمہ اللہ فرماتے ہیں:"حدیث میں مذکورہ گروہ؛ جو حق پر غالب رہے گا، وہ میرے نزدیک اہل حدیث ہیں"(فتح البخاری شرح صحیح البخاری:13/294).
4- امام بخاری رحمہ اللہ اس طائفہ منصورہ کے بارے میں فرماتے ہیں:" یعنی اہل حدیث ہیں"(الحجة في بيان المحجة:1/246).
5- امام أحمد بن حنبل رحمہ اللہ فرماتے ہیں:" اگر وہ اہل حدیث نہیں ہیں تو پھر مجھے معلوم نہیں کہ وہ کون ہیں"(شرف اہل الحدیث، ص:14).

یہ ناقابل تردید دلائل آپ کے دعویٰ کو سفیدجھوٹ ثابت کرتے ہیں۔اب آپ یا تو اپنی بات کو ثابت کریں کہ یہاں بھی اہل حدیث سے مراد صرف محدثین کا گروہ ہے جماعت اہل حدیث اس سے مراد نہیں یا پھر آئندہ اس بات کو اپنی زبان پر مت لانااگر تھوڑی سی شرم باقی ہے تو۔
 

شاہد نذیر

سینئر رکن
شمولیت
فروری 17، 2011
پیغامات
2,067
ری ایکشن اسکور
6,267
پوائنٹ
437
حضرت ثوبان رضی ‌اللہ ‌عنہ سے روایت ہے رسول اﷲ صلی ‌اللہ ‌علیہ ‌وسلم نے فرمایا ہمیشہ میری امت کا ایک گروہ حق پر قائم رہے گا کوئی ان کا نقصان نہ پہنچا سکے گا یہاں تک کہ اﷲ تعالیٰ کا حکم آوے (یعنی قیامت) اور وہ اسی حال میں ہوں گے۔(صحیح مسلم

اب ائیں ذرا جائزہ لیتے ہیں یہ کون سا فرقہ ہے اور اس کے بارے میں معتبر محدثین و ائمہ کرام کی کیا رائے ہے


امام بخاری رحمہ اللہ تعالی کا قول ہے کہ : وہ اہل علم ہیں ۔
آپ نے اپنے دعویٰ میں جو پہلا نام پیش کیا ہے وہ امام بخاری کا ہے لیکن یہ نام بھی ہمارے حق میں ہے اور آپ کے خلاف ہے کیونکہ امام بخاری رحمہ اللہ نے’’ اہل علم‘‘ سے مراد اہل حدیث کی جماعت لی ہے۔
امام بخاری رحمہ اللہ اس طائفہ منصورہ کے بارے میں فرماتے ہیں:" یعنی اہل حدیث ہیں"(الحجة في بيان المحجة:1/246)

امام نووی رحمہ اللہ تعالی کہتے ہیں کہ یہ گروہ مومن لوگوں کی انواع میں پیھلا ہوا ہے : ان میں سے کچھ تو بہادری کے ساتھ لڑنے والے ہیں ، اور ان میں سے فقھاء بھی ہیں ، اور اسی طرح ان میں محدثین بھی ہیں ، اور ان میں عابدوزاھد لوگ بھی ہیں ، اور ان میں امر بالمعروف اور نہی عن المنکر کرنے والے بھی ہیں ، اور اسی طرح ان میں اور بھی انواع ہیں
۔
اور ان کا یہ بھی قول ہے کہ : یہ جائز ہے کہ یہ طا‏ئفہ اور گروہ مومنوں کی متعدد انواع میں ہو ، ان میں قتال وحرب کے ماہر اور فقیہ اور محدث اور امر بالمعروف اور نہی عن المنکر پر عمل کرنے والے ، اور زاھد اور عابد شامل ہيں۔
اب رہ گئے صرف د و نام یعنی امام نووی اور حافظ ابن حجر رحمہ اللہ تعالیٰ۔ تو امام نووی کی بیان کی گئی یہ خصوصیات جماعت اہل حدیث میں پوری طرح موجود ہیں کیونکہ گروہ اہل حدیث میں محدثین بھی ہیں، مجاہدین بھی، عابد اور زاہد بھی ، فقیہ بھی اورداعی حضرات بھی۔
تو اگر ہم یہ دعویٰ کریں کہ امام نووی کی مراد بھی یہاں دیگر ائمہ کی طرح اہل حدیث گروہ سے ہے تو غلط نہ ہوگا۔

حافظ ابن حجر رحمہ اللہ تعالی کا کہنا ہے کہ : ( انہوں نے اس مسئلہ میں تفصیل بیان کرتے ہوۓ کہا ہے ) یہ لازم نہیں کہ وہ کسی ایک ملک میں ہی جمع ہوں بلکہ یہ جائز ہے کہ وہ دنیا کے کسی ایک خطہ میں جمع ہوں جائيں ، اور دنیا کے مختلف خطوں میں بھی ہو سکتے ہیں ، اور یہ بھی ہے کہ وہ کسی ایک ملک میں بھی جمع ہوجائيں ، اور یا پھر مختلف ممالک میں ، اور یہ بھی ہے کہ ساری زمیں ہی ان سے خالی ہوجاۓ اور صرف ایک ہی گروہ ایک ہی ملک میں رہ جاۓ تو جب یہ بھی ختم ہوجاۓ تو اللہ تعالی کا حکم آجاۓ گا ۔
حافظ ابن حجر رحمہ اللہ کے بیان کردہ اوصاف بھی اہل حدیث جماعت میں پائے جاتے ہیں کیونکہ دنیا میں اکثر جگہوں پر جماعت اہل حدیث کا وجود پایا جاتا ہے۔ لہٰذا حافظ ابن حجر کا اشارہ بھی یہاں جماعت اہل حدیث کی طرف ہی ہے۔ اگر آپ سمجھتے ہیں کہ اس سے مراد اہل حدیث نہیں تو ان اوصاف کی اہل حدیث جماعت میں نفی کا ثبوت پیش کریں۔
الحمدللہ ثابت ہوا کہ سلف صالحین کے نزدیک بھی ناجی فرقہ اہل حدیث کے سوا کوئی دوسرا نہیں ہے۔
 

126muhammad

مبتدی
شمولیت
اکتوبر 26، 2022
پیغامات
167
ری ایکشن اسکور
10
پوائنٹ
28
آپ کے پاس کون سی دلیل ہے اتنی دیر سے صرف پہلیاں ہی تو بجھوا رہے ہو۔ کس حدیث میں نبی ﷺ نے فرمایا کہ جو فرقہ جنت میں جائے گا اس کا نام مسلمان ہوگا؟ چلیں آپ کی بونگیوں کی دلیل حدیث سے نہیں مانگتے آپ کسی ایک بڑے عالم یا محدث کا صرف ایک قول پیش کردیں کہ ناجی فرقے کا نام مسلمان ہوگا۔ چلو شاباش ایک حوالہ پیش کرو یہ کوئی مشکل مطالبہ نہیں ہے ورنہ شرم سے منہ چھپالو
میں نے تو سنا ہےکہ جمعیت اہل حدیث کے اکابرین حلال و حرام، اصول اخذ کرنے کے لیے صرف قران و حدیث پر ہی اکتفا کرتے ہیں کہیں ایسا تو نہیں کیا اپ ڈبل گیم کھیل رہے ہیں ایک طرف اپنی جماعت سے چندہ لے کے اسے دھوکہ دے رہے ہو دوسری طرف لوگوں کو اپنی جہالت سے گمراہ کر رہے ہو یا پھر اپ دیوانے ہو

شاید اسی لیے لفظ 'اہل حدیث' پر بے بنیاد تکرار اور فرقہ ورانہ شیطانی کتھا مذکورہ شخص کا ایک نہ رکنے والا تسلسل ہے

اپ کو قران و سنت سے پیش کردہ فرقہ واریت کے خلاف اس قدر صاف شفاف اور غیر مبہم دلائل کے بعد بھی ائمہ کے طلب کیوں محسوس ہو رہی ہے، بے حد معنی خیز ہے (ہا ہا ہا ہا ہا)
 

126muhammad

مبتدی
شمولیت
اکتوبر 26، 2022
پیغامات
167
ری ایکشن اسکور
10
پوائنٹ
28
یہ ناقابل تردید دلائل آپ کے دعویٰ کو سفیدجھوٹ ثابت کرتے ہیں۔اب آپ یا تو اپنی بات کو ثابت کریں کہ یہاں بھی اہل حدیث سے مراد صرف محدثین کا گروہ ہے جماعت اہل حدیث اس سے مراد نہیں یا پھر آئندہ اس بات کو اپنی زبان پر مت لانااگر تھوڑی سی شرم باقی ہے تو۔
تم کس قدر بد فطرت انسان ہو کہ حق کو سامنے دیکھ کر انکھیں موند لیتے ہو میرے صبر کا امتحان مت لو اب مان بھی جاؤ کہ فرقہ واریت حرام ہے اور جنتی فرقہ اسلام ہے
 

126muhammad

مبتدی
شمولیت
اکتوبر 26، 2022
پیغامات
167
ری ایکشن اسکور
10
پوائنٹ
28
لِيَحْمِلُوا أَوْزَارَهُمْ كَامِلَةً يَوْمَ الْقِيَامَةِ وَمِنْ أَوْزَارِ الَّذِينَ يُضِلُّونَهُمْ بِغَيْرِ عِلْمٍ أَلَا سَاءَ مَا يَزِرُونَ(16-النحل:25)


(اے پیغمبر ان کو بکنے دو) اسی کا نتیجہ ہوگا کہ قیامت کے دن یہ لوگ اپنے پورے گناہوں کا بوجھ اٹھائیں گے اور ان کے گناہوں کا بوجھ بھی جنہیں اپنی جہالت سے گمراہ کرتے ہیں۔ دیکھو تو کیسا برا بوجھ اٹھا رہے ہیں

........................................
 

شاہد نذیر

سینئر رکن
شمولیت
فروری 17، 2011
پیغامات
2,067
ری ایکشن اسکور
6,267
پوائنٹ
437
طائفہ منصورہ سے متعلق محمد صاحب نے حافظ ابن حجر رحمہ اللہ کا مندرجہ ذیل کلام نقل کیا تھا:
حافظ ابن حجر رحمہ اللہ تعالی کا کہنا ہے کہ : ( انہوں نے اس مسئلہ میں تفصیل بیان کرتے ہوۓ کہا ہے ) یہ لازم نہیں کہ وہ کسی ایک ملک میں ہی جمع ہوں بلکہ یہ جائز ہے کہ وہ دنیا کے کسی ایک خطہ میں جمع ہوں جائيں ، اور دنیا کے مختلف خطوں میں بھی ہو سکتے ہیں ، اور یہ بھی ہے کہ وہ کسی ایک ملک میں بھی جمع ہوجائيں ، اور یا پھر مختلف ممالک میں ، اور یہ بھی ہے کہ ساری زمیں ہی ان سے خالی ہوجاۓ اور صرف ایک ہی گروہ ایک ہی ملک میں رہ جاۓ تو جب یہ بھی ختم ہوجاۓ تو اللہ تعالی کا حکم آجاۓ گا ۔
اس کے متعلق راقم الحروف نے خیال ظاہر کیا تھا کہ یہاں ابن حجر رحمہ اللہ کا اشارہ اہل حدیث کی جانب ہے۔ اب راقم الحروف جو دلیل پیش کرنے جارہا ہے اس سے ثابت ہوتا ہے کہ راقم کا خیال صد فیصد درست تھا کیونکہ حافظ ابن حجر رحمہ اللہ خود بھی ’’اہل حدیث‘‘ تھے۔ ملاحظہ ہو:
حافظ ابن حجر العسقلانی رحمہ اللہ نے فرمایا:لانا معشراہل الحدیث نقطع بکذب من ادعی الصحبۃ بعد ابی الطفیل عامر بن واثلۃ، واللہ الھادی الی الصواب۔ متمسکین بالحدیث الصحیح المتواتر عنہ ﷺ: ان علی راس مائۃسنۃ۔من حین مقالتہ۔ لایبقی علی وجہ الارض ممن ھو اذذاک علیھا احد۔کیونکہ ہم تمام اہل حدیث اس شخص کو قطعی طور پر جھوٹا سمجھتے ہیں جو ابو الطفیل عامر بن واثلہ (رضی اللہ عنہ ) کے بعد صحابی ہونے کا دعویٰ کرے اور اللہ ہی حق کی طرف ہدایت دینے والا ہے۔ ہم اس صحیح متواتر حدیث سے حجت پکڑتے ہیں جس میں آیا ہے کہ آپ ﷺ نے فرمایا: سو سال کے بعد۔ آپ کے قول مذکورکے وقت سے لے کر ۔ روئے زمین پر کوئی شخص باقی نہیں رہے گا، جو کہ اس قول کے وقت موجود تھا۔ (المجمع الموسس للمجعم المفہرس۵۵۲/۲ طبع دارالمعرفۃ بیروت لبنان) بحوالہ ماہنامہ الحدیث، شمارہ 89، صفحہ29)
قابل غور بات یہ ہے کہ یہاں ابن حجر نے محدثین کا لفظ استعمال نہیں کیا کیونکہ محدث ایک رتبہ ہے ایک مقام ہے یہاں ابن حجر چونکہ ایک عقیدے کی وضاحت کررہے ہیں اسلئے انہوں نے اپنے مسلک و مذہب کا نام یعنی اہل حدیث ذکر کیا ہے۔ اگر اہل حدیث سے محدثین مراد ہے تو ابن حجر نے محدثین کا لفظ استعمال کیوں نہیں کیا اور اہل حدیث کا لفظ استعمال کیوں کیا؟ وجہ صاف ظاہر ہے کہ اہل حدیث سے مراد محدثین نہیں ہے۔
 
Top