1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

السلام علیکم حضرات یہ سوال اک بھائی کا آپ کے چیٹ روم میں موجود ہے اس پے توجہ کریں

'جدید فقہی مسائل' میں موضوعات آغاز کردہ از Naeem Mukhtar, ‏اگست 10، 2016۔

  1. ‏اگست 10، 2016 #1
    Naeem Mukhtar

    Naeem Mukhtar رکن
    جگہ:
    جدہ سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏اپریل 13، 2016
    پیغامات:
    81
    موصول شکریہ جات:
    25
    تمغے کے پوائنٹ:
    32

    [​IMG]

    Sent from my SM-J500F using Tapatalk
     
  2. ‏اگست 10، 2016 #2
    یوسف ثانی

    یوسف ثانی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    پاکستان
    شمولیت:
    ‏ستمبر 26، 2011
    پیغامات:
    2,760
    موصول شکریہ جات:
    5,268
    تمغے کے پوائنٹ:
    562

    وعلیکم السلام و رحمۃ اللہ و برکاتہ
    کشمیری بھائی!
    جی ہاں آپ کشمیری پولس یا فوج کے جوانون کو قتل کرسکتے ہیں بشرطیکہ:
    1. وہ آپ کی جان و مال یا عزت و آبرو پر حملہ کریں اور آپ اپنا دفاع کرتے ہوئے، اُن سے مقابلہ کرتے ہوئے انہیں قتل کریں
    2. آپ کو سو فیصد یہ یقینی اطلاع ملے کہ فلاں مقام پر موجود کشمیری پولس یا فوجی جوانوں کا دستہ آپ کی بستی پر حملہ آور ہونے کے لئے تیاری کرر رہا ہے یا وہاں سے روانہ ہوچکا ہے، ایسے میں آپ اور دیگر مجاہدین اس متوقع حملہ آور لشکر پر پیشگی حملہ کرکے انہیں قتل کرسکتے ہیں۔
    3. عام انتظامی امور پر متعین یا گشت کرنے والے پولس یا فوجی جوانوں کو قتل کرنے کا کوئی شرعی جواب نہیں ہے۔
    واللہ اعلم بالصواب
    یہ میری ذاتی رائے ہے۔ فتویٰ دینے کا مجھے کوئی اختیار نہیں ہے۔ اہل علم حضرات میری اس رائے پر تبصرہ کرکے مستند رائے پیش کرسکتے ہیں۔
     
  3. ‏اگست 10، 2016 #3
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,372
    موصول شکریہ جات:
    2,398
    تمغے کے پوائنٹ:
    791

    اس سوال کے جواب کیلئے محترم شیخ @خضر حیات صاحب توجہ فرمائیں ؛
     
  4. ‏اگست 11، 2016 #4
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,769
    موصول شکریہ جات:
    8,335
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    و علیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
    کافی مشکل سوال ہے ۔
    اصولی طور پر اس کا جواب کشمیر کے علماء کرام سے ہی لینا چاہیے ، کیونکہ وہ وہاں کے حالات سے بخوبی واقف ہیں ۔
    ہمیں جو دور بیٹھے نظر آرہا ہے ، وہ یہی ہے کہ کشمیر ’ میدان جنگ ‘ ہے ، جبکہ کشمیری عوام اور مجاہدین ایک فریق ، اور بھارتی فوج اور پولیس دوسرا فریق ہے ۔
    جن پر ظلم ہورہا ہے ، وہ اس کے توڑ کے لیے ، اپنے دفاع کے طور پر ظالموں کو کیفر کردار تک پہنچا سکتے ہیں ، بلکہ پہنچانا چاہیے ، چاہے وہ فوج ہو یا پولیس ۔ واللہ اعلم ۔
     
    • پسند پسند x 2
    • متفق متفق x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں