1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

بھارت کا سیکولرازم چہرہ بے نقاب، اسلامی اسکالر ذاکر نائیک کا کرناٹک میں داخلہ بند !

'ہندو مت' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد عامر یونس, ‏دسمبر 30، 2015۔

  1. ‏دسمبر 30، 2015 #1
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,968
    موصول شکریہ جات:
    6,506
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    بھارت کا سیکولرازم چہرہ بے نقاب، اسلامی اسکالر ذاکر نائیک کا کرناٹک میں داخلہ بند
    آئی این پی 2 گھنٹے پہلے


    ڈاکر ذاکر پر یہ پابندی دفعہ144کے تحت عائدکی گئی ہے، کمشنر منگلورو پولیس۔ فوٹو: فائل

    مینگلورو: بھارت کی ریاست کرناٹک کی حکومت نے معروف اسلامی اسکالر ڈاکٹر ذاکر نائیک پر پابندی عائد کر دی۔

    بھارتی میڈیاکے مطابق منگلورو سٹی پولیس کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن میں کہا گیا ہے کہ ذاکرنائیک پابندی کے دوران منگلورو شہر میں داخل ہو سکتے ہیں اورنہ ہی کسی پروگرام میں حصہ لے سکتے ہیں۔ ڈاکٹر ذاکر نائیک اس پابندی کے تحت 31 دسمبر 2015ء سے6 جنوری 2016ء تک منگلورو نہیں جا سکتے۔

    منگلورو پولیس کمشنر ایس موروگن کاکہناکہ یہ پابندی دفعہ144کے تحت عائدکی گئی ہے۔ انتہاپسند ہندوؤں کے احتجاج کے خدشے کی وجہ سے یہ پابندی عائدکی گئی ہے۔

    خیال رہے کہ ذاکرنائیک پیشے کے لحاظ سے ڈاکٹر ہیں تاہم انھوں نے 1991ء سے اسلام کی تبلیغ کو اپنی مکمل توجہ دینا شروع کردی تھی۔ بہت سے لوگوں نے ان کے ہاتھ اسلام قبول کیا۔ وہ ممبئی میں اسلامی تحقیق سینٹرکے صدرہیں اور ’’پیس‘‘ کے نام سے اسلامی چینل چلارہے ہیں۔
     
  2. ‏دسمبر 30، 2015 #2
    کنعان

    کنعان فعال رکن
    جگہ:
    برسٹل، انگلینڈ
    شمولیت:
    ‏جون 29، 2011
    پیغامات:
    3,564
    موصول شکریہ جات:
    4,376
    تمغے کے پوائنٹ:
    521

    السلام علیکم

    حالات کی پیش نظر یہ پابندی وقتی طور ان کی سیفٹی کے لئے ھے کوئی بری بات نہیں۔

    والسلام
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں