1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

تاریخ علوم میں تہذیب اسلامی کا مقام

'پی ڈی ایف' میں موضوعات آغاز کردہ از عبد الرشید, ‏اگست 27، 2013۔

  1. ‏اگست 27، 2013 #1
    عبد الرشید

    عبد الرشید رکن ادارہ محدث
    شمولیت:
    ‏مارچ 02، 2011
    پیغامات:
    5,165
    موصول شکریہ جات:
    9,941
    تمغے کے پوائنٹ:
    667

    کتاب کا نام
    تاریخ علوم میں تہذیب اسلامی کا مقام
    مصنف
    ڈاکٹر فواد سیزگین
    مترجم
    ڈاکٹر خورشید رضوی
    ناشر
    ادارہ تحقیقات اسلامی،اسلام آباد
    [​IMG]
    تبصرہ
    ازمنہ وسطی میں یورپ جہالت کی تاریکیوں میں ڈوبا ہوا تھا ۔ توہمات و خرافات اس کے دینی عقائد کی حیثیت رکھتے تھے ۔ پھر یکایک تاریخ کے افق پرنشاۃ ثانیہ کے دور کا آغاز ہوا ۔جس میں یورپ بیدار ہو گیا ۔ اس نے مذہبی توہمات کو دفن کر کے سائنس کو اپنا رہبر بنا لیا ۔ تاہم اس کےساتھ ساتھ مذہب کےخلا کو پرکرنے کے لیے الحاد کی طرف مائل ہوگیا ۔ یورپ میں عام طور پر یہ متصور کرایا جاتا ہے کہ اہل یورپ کی یہ بیداری کا سفر یونان سے شروع ہوا ۔ اور یونان سے یورپ اس شاہراہ پر گامزن ہوا ۔ اس دوران مسلمانوں کو تاریخ کے صفحات سے حذف کر دیا جاتا ہے ۔ زیرنظر کتاب اس اعتراض کو یا اس طرح دیگر اعتراضات کو رفع کرنے کے لیے خطبات کا ایک مجموعہ ہے جو محترم نو مسلم موصوف نے ریاض یونیورسٹی میں دیے تھے ۔ جن میں اسلام کی ابتدا سے لے کر چار سو تیس ہجری تک کے عربی زبان میں مختلف علوم و فنون کا ایک فاضلانہ جائزہ لیا گیا ہے ۔ چناچہ اس سلسلے میں اس کتاب کا مقصد قرآن ، حدیث ، تاریخ ، فقہ ، عقائد ، تصوف ، شاعری ، لغت ، نحو ، بلاغت ، طب ، بیطرہ ، علم الحیوان ،کیمیا ، نباتیات ، زراعت ، ریاضیات ، فلکیات ، احکامالنجوم ، آثارعلویہ ، فلسفہ ، منطق ، نفسیات ، اخلاق ، سیاسیات ، علم الاجتماع ، جغرافیہ ، طبعیات ، ارضیات اور موسیقی جیسے متنوع میدانوں میں مسلمانوں اور عربوں کے کام کا تعارف کروانا ہے ۔ اور ان علوم پر پائے جانے والے دنیا بھر میں عربی مخطوطات کی نشاندہی کرنا ہے ۔ (ع۔ح)
     
  2. ‏اگست 27، 2013 #2
    عبد الرشید

    عبد الرشید رکن ادارہ محدث
    شمولیت:
    ‏مارچ 02، 2011
    پیغامات:
    5,165
    موصول شکریہ جات:
    9,941
    تمغے کے پوائنٹ:
    667

    فہرست مضامین

    حرفے چند
    پیش گفتار
    تاریخ التراث العربی : تالیف کے مقاصد اور طریق کار
    تاریخ علوم میں مسلمانوں اور عربوں کا مقام
    تاریخ طب میں مسلمانوں اور عربوں کا مقام
    علم کیمیا کی تاریخ میں مسلمانوں اور عربوں کا مقام
    ریاضیات کی تاریخ میں مسلمانوں اور عربوں کا مقام
    فلکیات کی تاریخ میں مسلمانوں اور عربوں کا مقام
    عربوں کی فلکیات اور یورپ کا اثر
    آثار علویہ کی تاریخ میں مسلمانوں اور عربوں کا مقام
    یورپ کی تحریک احیاء پر عربی واسلامی علوم کا اثر
    عربی واسلامی علوم میں اسناد کی اہمیت
    کتاب الاغانی کے مآخد
    قدیم عربی شاعری حقیقت یا افسانہ ؟
    اسلامی ثقافت میں جمود کے اسباب
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں