1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

تعلیم ہمارے لیے ضروری کیوں؟؟

'تعلیم وتربیت' میں موضوعات آغاز کردہ از afrozgulri, ‏جون 23، 2019۔

  1. ‏جون 23، 2019 #1
    afrozgulri

    afrozgulri مبتدی
    شمولیت:
    ‏جون 23، 2019
    پیغامات:
    12
    موصول شکریہ جات:
    2
    تمغے کے پوائنٹ:
    9

    تعليم ہمارے لیے ضروری کیوں ؟؟

    از قلم : افروز عالم بن ذکراللہ سلفی،گلری, ممبئی

    اللہ تعالیٰ نے بنی نوع انسان کو علم اور عقل جیسی دو بڑی اہم امتیازی نعمتیں عطا کی ہیں ۔اور علم وفہم کو بنیادی حیثیت دیتے ہوئے علم کو عمل پر مقدم کیا ہے .
    لفظ "اقرأ" کے ذریعہ قرآن کا آغازکیا ۔یعنی یہ پڑھو اور جانو کہ شریعتِ اسلامیہ کیا ہے ؟

    اس نے اپنے ماننے والوں سے مطالبہ کیا کیا ہے؟؟
    اس پر عمل کیسے کیا جائے؟؟؟۔

    لفظ "اقرأ" نے علم کو جو مقام دیا ہے اس کی مثال کسی بھی دھرم ومذہب میں نہیں ملتی ،کیونکہ کسی بھی عقلمند کے دماغ میں یہ بات نہیں آئے گی کہ شروفساد ،قتل وغارت گری ،ظلم وعدوان ،چوری ڈکیتی ،غیبت وبھتان ،زناکاری و سودخوری،اس طرح کی برائیاں جب عام ہوں تو وہ یہ کہے کہ آپ علم سیکھئے ۔لیکن رب کائنات نے قرآن کا نزول ایسے ہی برائیوں والے دور میں آیاتِ تعلیم(اقرأ) کو عام کرکے علم کے ذریعے ان برائیوں کا سد باب کیا ،سالہا سال کی جنگیں و لڑائیاں ختم ہوئیں ،برائیاں مٹ گئیں ،حق آیا باطل سرنگوں ہوا ، ___________________ لیکن افسوس آج پھر وہی ماحول آگیا ہے ۔ موجودہ شروفساد اور بگاڑ میں ہم تعلیم کے ذریعے قوموں کی تقدیر بدل سکتے ہیں،تعلیم ہی کے ذریعے ہم اپنی تہذیب و ثقافت،اصول زندگی،اور اپنی اعلیٰ ترین پاکیزہ روایات سے واقف رہ سکتے ہیں اور اسے آنے والی نسلوں تک منتقل کرسکتے ہیں ،ابلیسی آگ میں جھلسی ہوئی انسانیت کو ترو تازہ اور ہرا بھرا،بناسکتے ہیں ۔

    اسی تعلیم کے ذریعے ہم قوم کو مایہ ناز خطیب،قلمکار (صحافی)ادیب ومؤرخ اور انسانیت کا علمبردار اور نسل نو کا معمار دے سکتے ہیں۔


    اللہ تعالیٰ ہمیں علم کے زیور سے آراستہ و پیراستہ فرمائے اور اس علم کو دنیا و آخرت میں ہمارے لیے کامیابی کا ذریعہ بنائے ۔( آمین)


    afrozgulri@gmail.com
    19/06/2019
    Sent from my TA-1053 using Tapatalk
     
    Last edited by a moderator: ‏جون 23، 2019
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں