1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

سعودی عرب کے علماء کا شیخ عبدالعزیز الطریفی و اصحاب منھجہ سے اختلاف کے اسباب

'سلفیت' میں موضوعات آغاز کردہ از سید طہ عارف, ‏ستمبر 11، 2019۔

  1. ‏ستمبر 11، 2019 #1
    سید طہ عارف

    سید طہ عارف مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 18، 2016
    پیغامات:
    725
    موصول شکریہ جات:
    135
    تمغے کے پوائنٹ:
    104

    میری ناقص رائے میں اصل اختلاف سیاسی ہے
    علماء کے ایک گروہ کا موقف یہ ہے کہ اگر حکام پر تنقید کی تو جو خیر موجود ہے وہ بھی ہاتھ سے جائے گی
    جبکہ دوسرے طبقہ کا خیال یہ ہے کہ اگر ابھی امر بالمعروف والنھی عن المنکر نہیں کیا تو سیکولرزم کا سیلاب بہا لے جائے گا (اس گروہ کی خوبی یہ بھی ہے کہ یہ مغربی علوم اور مغربی تاریخ مغرب کے زیر اثر جو افکار مسلم دنیا میں آئے اس کی تاریخ اور اس کے مقابل مسلمانوں کے مواقف کی تاریخ پر گہری نظر رکھتا ہے...شاید یہ بھی وجہ ہے کہ پہلا گروہ ان کی بات سمجھ نہیں پاتا)

    ولکلیھما دلائل

    باقی تطبیق کے علاوہ نظری اعتبار سے دیکھیں تو دونوں میں بنیادی اختلاف نہیں
    بعض فروعی قسم کے مسائل میں اختلاف ہے.

    مگر بدقسمتی یہ کہ پہلے گروہ اپنے موقف میں ایسی قطعیت کا حامل ہے کہ اس کا مخالف ان کے نزدیک خارجیت کا علمبردار ہے اور اخوانی ہے اور پتہ نہیں کیا کیا.
    واللہ اعلم
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  2. ‏ستمبر 11، 2019 #2
    abu khuzaima

    abu khuzaima رکن
    شمولیت:
    ‏جون 28، 2016
    پیغامات:
    66
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    46

    آپ کی ناقص و کمزور رائے کو علماء سلف کی روشنی میں بیان کریں، کھلے عام تنقید کرنے والوں کو اخوانی نہیں تو اور کیا کہیں گے!

    Sent from my SM-G920F using Tapatalk
     
  3. ‏ستمبر 11، 2019 #3
    سید طہ عارف

    سید طہ عارف مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 18، 2016
    پیغامات:
    725
    موصول شکریہ جات:
    135
    تمغے کے پوائنٹ:
    104

    جہاں تک تعلق ہے امام کی موجودگی میں علانیہ انکار منکر کرنا تو یہ تو سلف سے منقول ہے.
    اب یہ سوال کہ اس کے پیٹھ پیچھے اس کی برائی کا کیا حکم ہے
    اول تو وہ مقام جہاں غیبت کی اجازت ہے اس میں سے ایک یہ ہے
    کہ مجاھر کی برائی بیان کرنا
    اس کی وجہ یہ ہے کہ مجاھر کا علی الاعلان برائی کرنا شاھدین میں جرأۃ علی المنکر پیدا کرنا ہے.

    بہرحال علماء اس کو مصالح کے باب سے دیکھتے ہیں اور اس کی مندرجہ ذیل تفصیل بیان کی گئی ہے.
    اگر مصلحت کا (اور مصلحت سے مراد شرعی مصلحت ہے) کا تقاضا ہو کہ اس پر اعلانیہ انکار ہو تو اعلانیہ انکار کیا جائے گا ورنہ نہیں.
    اللہ اعلم
     
  4. ‏ستمبر 11، 2019 #4
    سید طہ عارف

    سید طہ عارف مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 18، 2016
    پیغامات:
    725
    موصول شکریہ جات:
    135
    تمغے کے پوائنٹ:
    104

  5. ‏ستمبر 15، 2019 #5
    Ukashah

    Ukashah رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 14، 2011
    پیغامات:
    52
    موصول شکریہ جات:
    213
    تمغے کے پوائنٹ:
    65

    شاید آپ علماء کے اس پہلے گروہ کا تعارف نہیں رکھتے. اس لیے دوسرے گروہ کے عام مبلغین و علماء کو بڑے مفکرین سمجھ رہے ہیں. عربی جانتے ہیں تو گوگل کرلیں.
     
  6. ‏ستمبر 15، 2019 #6
    ابن داود

    ابن داود فعال رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    3,313
    موصول شکریہ جات:
    2,650
    تمغے کے پوائنٹ:
    556

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    علماء کا اتنا شدید اور اس نوعیت کا اختلاف غالباً نہیں ہوتا، جتنا متشدد اختلاف ان کے پیروکار کرنا شروع ہو جاتے ہیں!
     
    • متفق متفق x 2
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں