1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

ملحد اور بے دین لوگوں پر حدیث سننا ،سنانا بہت تکلیف دہ ہے ،

'حدیث وعلومہ' میں موضوعات آغاز کردہ از عدیل سلفی, ‏جنوری 27، 2017۔

  1. ‏جنوری 27، 2017 #1
    عدیل سلفی

    عدیل سلفی مشہور رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏اپریل 21، 2014
    پیغامات:
    1,551
    موصول شکریہ جات:
    410
    تمغے کے پوائنٹ:
    197

    السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ

    شیخ محترم اسکا حوالہ درکار ہے

    امام ابو نصر بن سلام الفقیہ فرماتے ہیں:

    ملحد اور بے دین لوگوں پر حدیث سننے اور اسے بالاسناد روایت کرنے سے زیادہ گراں اور مبغوض چیز کچھ بھی نہیں

    اور میں نے امام حاکم رحمتہ اللہ کو فرماتے ہوئے سنا:

    کہ میں نےشیخ ابو بکر احمد بن اسحاق بن ایوب الفقیہ کو ایک شخص سے مناظرہ کرتے ہوئے سنا انہوں نے فرمایا: حدثنا فلان ہم سے فلاں نے حدیث بیان کی تو اس شخص نے کہا: ارے حدثنا چھوڑو کب تک حدثنا کی گردان ہوتی رہے گی؟ تو شیخ نے اس سے کہا: چل نکل یہاں سے کافر کہیں کا آج کے بعد سے میرے گھر میں کبھی داخل نہ ہونا! پھر ہماری طرف متوجہ ہو کر فرمایا: اس کے سوا میں نے کبھی کسی کو اپنے گھر میں داخل ہونے سے منع نہیں کیا
     
  2. ‏جنوری 27، 2017 #2
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,361
    موصول شکریہ جات:
    2,395
    تمغے کے پوائنٹ:
    791

    امام أبو عبد الله الحاكم (المتوفى: 405 ھ) اپنی کتاب ( معرفۃ علوم الحدیث ) کی ابتدا میں فرماتے ہیں :
    سمعت أبا نصر أحمد بن سهل الفقيه ببخارى يقول: سمعت أبا نصر أحمد بن سلام الفقيه يقول: «ليس شيء أثقل على أهل الإلحاد ولا أبغض إليهم من سماع الحديث وروايته بإسناد»
    ملحد اور بے دین لوگوں پر حدیث سننے اور اسے بالاسناد روایت کرنے سے زیادہ گراں اور مبغوض چیز کچھ بھی نہیں ‘‘
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    دوسری روایت :
    سمعت الشيخ أبا بكر أحمد بن إسحاق الفقيه وهو يناظر رجلا، فقال: الشيخ: حدثنا فلان، فقال له الرجل: دعنا من حدثنا، إلى متى حدثنا، فقال له الشيخ: «قم يا كافر، ولا يحل لك أن تدخل داري بعد هذا» ، ثم التفت إلينا، فقال: «ما قلت قط لأحد لا تدخل داري إلا لهذا»
    امام حاکم رحمہ اللہ فرماتے ہیں:
    کہ میں نےشیخ ابو بکر احمد بن اسحاق بن ایوب الفقیہ کو ایک شخص سے مناظرہ کرتے ہوئے سنا انہوں نے فرمایا: حدثنا فلان ہم سے فلاں نے حدیث بیان کی تو اس شخص نے کہا: ارے حدثنا چھوڑو کب تک حدثنا کی گردان ہوتی رہے گی؟ تو شیخ نے اس سے کہا: چل نکل یہاں سے کافر کہیں کا آج کے بعد سے میرے گھر میں کبھی داخل نہ ہونا! پھر ہماری طرف متوجہ ہو کر فرمایا: اس کے سوا میں نے کبھی کسی کو اپنے گھر میں داخل ہونے سے منع نہیں کیا ‘‘
     
    • علمی علمی x 2
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  3. ‏جنوری 28، 2017 #3
    عدیل سلفی

    عدیل سلفی مشہور رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏اپریل 21، 2014
    پیغامات:
    1,551
    موصول شکریہ جات:
    410
    تمغے کے پوائنٹ:
    197

    جزاک اللہ خیرا محترم شیخ
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں