1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

ناخن کاٹنے کی ترتیب کی حقیقت

'تحقیق حدیث سے متعلق سوالات وجوابات' میں موضوعات آغاز کردہ از مزمل حسین, ‏دسمبر 28، 2013۔

  1. ‏دسمبر 28، 2013 #1
    مزمل حسین

    مزمل حسین رکن
    شمولیت:
    ‏نومبر 07، 2013
    پیغامات:
    76
    موصول شکریہ جات:
    54
    تمغے کے پوائنٹ:
    47

    اسلام و علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ
    شیخ کیا ناخن کاٹنے کی کوئی ترتیب احادیث صحیحہ سے ثابت ہے؟ یا پھر یہ مدنی منوں کی خود ساختہ سنت ہے۔ 1462894_10152453114293065_56203438_n.png
     
    • شکریہ شکریہ x 2
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  2. ‏دسمبر 29، 2013 #2
    کفایت اللہ

    کفایت اللہ عام رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 14، 2011
    پیغامات:
    4,770
    موصول شکریہ جات:
    9,777
    تمغے کے پوائنٹ:
    722

    اس سلسلے میں ایک روایت اس طرح ملتی ہے :
    امام سيوطي رحمه الله (المتوفى911)نے :
    قال القاضي وقد روى وكيعٌ بإسناده عن عائشةَ رضي الله عنها قالت: قال رسول الله صلّى الله عليه وسلّم: إذا أنتِ قلّمتِ أظفارَكِ فابدئي بالوسطى ثمّ بالخنصر ثمّ الإبهام ثمّ البنصر ثمّ السبّابة فإنّ ذلك يورث الغنى.[الإسفار عن قلم الأظفار:ق 7أ]

    اسی طرح ایک روایت اس طرح ہے:
    امام سيوطي رحمه الله (المتوفى911)نے :
    وأخرج الديلميّ في "مسند الفردوس" بسندٍ واهٍ عن أبي هريرة مرفوعًا: من أراد أن يأمن الفقر وشكاية العمى والبرص والجنون فليقلم أظفاره يوم الخميس بعد العصر وليبدأ بخنصر اليسرى.[الإسفار عن قلم الأظفار: ق 3أ ]

    پہلی روایت کی کوئی سند دستیاب نہیں ہے۔
    اور دوسری روایت کی سند کو خود امام سیوطی رحمہ اللہ نے سخت ضعیف کہا ہے۔

    یعنی ناخن کاٹنے میں ترتیب سے متعلق ایک بھی صحیح روایت موجود نہیں ہے۔

    حافظ ابن حجر رحمه الله (المتوفى852)نے کہا:
    ولم يثبت في ترتيب الأصابع عند القص شيء من الأحاديث
    ناخن کاٹتے وقت انگلیوں کی ترتیب سے متعلق کوئی حدیث ثابت نہیں ہے[فتح الباري لابن حجر: 10/ 345]
     
    • شکریہ شکریہ x 5
    • پسند پسند x 3
    • علمی علمی x 3
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں