1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

نسیان کے اسباب

'عربی زبان وادب' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد فراز, ‏اگست 26، 2016۔

  1. ‏اگست 26، 2016 #1
    محمد فراز

    محمد فراز رکن
    شمولیت:
    ‏جولائی 26، 2015
    پیغامات:
    515
    موصول شکریہ جات:
    124
    تمغے کے پوائنٹ:
    98

    السلام عليكم
    میری گزارش ہے اہل علم سے کے مجھے ان کا ترجمعہ کر کے دیے دے
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    أسباب نسيان الحفظ
    السؤال:
    يعاني الكثير من الطلاب نسيان المحفوظات وضياع فوائد المقروءات، فما هو الحل الأمثل في نظرك يا فضيلة الشيخ؟
    الجواب:
    الشيخ: أسباب ضعف الحفظ كثيرة: منها:
    المعاصي؛ فإن المعاصي توجب النسيان، قال الله تبارك وتعالى: ﴿ فَبِمَا نَقْضِهِمْ مِيثَاقَهُمْ لَعَنَّاهُمْ وَجَعَلْنَا قُلُوبَهُمْ قَاسِيَةً يُحَرِّفُونَ الْكَلِمَ عَنْ مَوَاضِعِهِ وَنَسُوا حَظّاً مِمَّا ذُكِّرُوا﴾ [المائدة:13] وقال الشافعي رحمه الله: شكوت إلى وكيع سوء حفظي * فأرشدني إلى ترك المعاصي وقال اعلم بأن العلم نورٌ * ونور الله لا يؤتاه عاصي
    - من أسباب النسيان: ألا يتعاهد الإنسان ما حفظ; يعني: لا يكرره. دليل ذلك قول النبي صلى الله عليه وعلى آله وسلم: «تعاهدوا القرآن» يعني كرروه «فوالذي نفسي بيده لهو أشد تفلتاً من الإبل في عقلها».
    - ثالثاً: كثرة المشاغل، إذا كان إنسان عنده أشغال كثيرة فإنه ينسى؛ لأن القلب وعاءٌ وهو الإناء، والإناء هذا له حد، له طاقة إذا امتلأ بشيءٍ لم يسع غيره، فإذا كان الإنسان غير متفرغ وعنده شواغل، فإن هذه الشواغل ينسي بعضها بعضاً.
    ومن أسباب النسيان أيضاً: عدم العمل بالعلم، فأنت إذا عملت بما تعلم فعملك دراسة دراسة للعلم مثلاً: إذا علمت أنه يجب الترتيب في الوضوء، ثم كنت تتوضأ مرتباً فهذه دراسة بلا شك.
    المصدر: سلسلة لقاءات الباب المفتوح > لقاء الباب المفتوح [197]
     
    Last edited by a moderator: ‏اگست 27، 2016
  2. ‏اگست 27، 2016 #2
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,168
    موصول شکریہ جات:
    2,357
    تمغے کے پوائنٹ:
    777

    وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ
    محترم بھائی آپ نے غیر متعلق (زمرہ میں تھریڈ بنا کر سوال رکھا ہے ، یہ حدیث کی تحقیق کے متعلق سوالات کا زمرہ ہے اس میں صرف احادیث کے متعلق ہی سوالات پیش کئے جاسکتے ہیں ،

    محترم بھائی @خضر حیات صاحب
     
  3. ‏اگست 31، 2016 #3
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,612
    موصول شکریہ جات:
    8,282
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    سوال کیا گیا کہ آج کل طالب علم اسباق بہت جلد بھول جاتے ہیں ، اس کا حل کیا ہے ؟
    جواب کا خلاصہ :
    نسیان کے کئی ایک اسباب ہیں :
    1۔ اللہ کی نافرمانی کرنا ، جیساکہ اللہ تعالی نے فرآن مجید میں پہلے لوگوں کے معاصی کا تذکرہ کرتے ہوئے فرمایا ، کہ جو چیزیں انہیں یاد کروائی گئی تھیں ، وہ انہیں بھول گئے ۔
    2۔ اسباق کی دہرائی نہ کرنا بھی سبق بھول جانے کا سبب بنتا ہے ۔
    3۔ مصروفیات کی کثرت ، جب آدمی ادھر ادھر کے مشاغل میں مصروف ہو جاتا ہے تو علمی باتیں بھولنا شروع ہوجاتی ہیں ۔
    4۔ علم پر عمل نہ کرنا بھی اس کے بھولنے کا سبب ہے ، اگر علم پر ساتھ ساتھ عمل بھی کیا جاتا رہے تو وہ ذہن میں راسخ ہوجاتا ہے ۔
     
    • پسند پسند x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  4. ‏اگست 31، 2016 #4
    محمد فراز

    محمد فراز رکن
    شمولیت:
    ‏جولائی 26، 2015
    پیغامات:
    515
    موصول شکریہ جات:
    124
    تمغے کے پوائنٹ:
    98

    قَوْلُهُ: (قَالَ وَكِيعٌ) شَيْخُ الشَّافِعِيِّ، وَمِنْ كَلَامِ الشَّافِعِيِّ - رَضِيَ اللَّهُ تَعَالَى عَنْهُ -:
    شَكَوْت إلَى وَكِيعٍ سُوءَ حِفْظِي ... فَأَرْشَدَنِي إلَى تَرْكِ الْمَعَاصِي
    وَأَخْبَرَنِي بِأَنَّ الْعِلْمَ نُورٌ ... وَنُورُ اللَّهِ لَا يُهْدَى لِعَاصِي

    امام شافعی رحمہ اللہفرماتے ہیں:میں نے وکیع (استاد)سے اپنے کمزور حافظے کی شکایت کی تو انہوں نے مجھے گناہ ترک کرنے کی ہدایت کی اور مجھے بتایا کہ علم تو نور ہےاور اللہ کا نور گناہگار کو نہیں دیا جاتا!
    حاشیة البجیرمی علی الخطیب:جلد2 پیج 349
     
  5. ‏اگست 31، 2016 #5
    محمد فراز

    محمد فراز رکن
    شمولیت:
    ‏جولائی 26، 2015
    پیغامات:
    515
    موصول شکریہ جات:
    124
    تمغے کے پوائنٹ:
    98

    صحیح بخاری
    5033 - حَدَّثَنَا مُحَمَّدُ بْنُ العَلاَءِ، حَدَّثَنَا أَبُو أُسَامَةَ، عَنْ بُرَيْدٍ، عَنْ أَبِي بُرْدَةَ، عَنْ أَبِي مُوسَى، عَنِ النَّبِيِّ صَلَّى اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ: «تَعَاهَدُوا القُرْآنَ، فَوَالَّذِي نَفْسِي بِيَدِهِ لَهُوَ أَشَدُّ تَفَصِّيًا مِنَ الإِبِلِ فِي عُقُلِهَا»
    نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا ”قرآن مجید کا پڑھتے رہنا لازم پکڑ لو“ اس ذات کی قسم جس کے ہاتھ میں میری جان ہے وہ اونٹ کے اپنی رسی تڑوا کر بھاگ جانے سے زیادہ تیزی سے بھاگتا ہے۔​
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں