1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

وتر کو مغرب کی نماز کی طرح ادا نا کرنے والی حدیث درکار ہے۔

'تہجد' میں موضوعات آغاز کردہ از جنید حسین, ‏جون 21، 2014۔

  1. ‏جون 21، 2014 #1
    جنید حسین

    جنید حسین رکن
    جگہ:
    ریاض، سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 11، 2011
    پیغامات:
    88
    موصول شکریہ جات:
    116
    تمغے کے پوائنٹ:
    70

    مجھے وتر کو مغرب کی نماز کی طرح ادا نا کرنے والی حدیث درکار ہے۔
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  2. ‏اگست 13، 2014 #2
    جنید حسین

    جنید حسین رکن
    جگہ:
    ریاض، سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 11، 2011
    پیغامات:
    88
    موصول شکریہ جات:
    116
    تمغے کے پوائنٹ:
    70

  3. ‏جولائی 14، 2015 #3
    ڈاکٹر عادل ایوب سلفی

    ڈاکٹر عادل ایوب سلفی مبتدی
    جگہ:
    پاکستان
    شمولیت:
    ‏مئی 24، 2015
    پیغامات:
    18
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    9

    وتر میں مغرب کی نماز سے مشابہت کی ممانعت

    رسول الله صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:
    "تین وتر نہ پڑھو پانچ یا سات پڑھو اور مغرب کی نماز کی مشابہت نہ کرو "

    (دارقطنی، الوتر، باب لا تشبھوا الوتر بصلاة المغرب ، 25،28/2 حاکم، ذہبی اور ابن حبان نے اسے صحیح کہا)

    اگر دو رکعت پڑھ کر سلام پھیرا جائے اور پھر ایک رکعت پڑھی جائے تو مغرب کی مشابہت نہیں ہوگی۔
    سیدنا ابن عمر رضی الله عنہما روایت کرتے ہیں کہ رسول اللہ صلی الله علیہ و آلہ وسلم وتر کی دو اور ایک رکعت میں سلام سے فصل کرتے۔

    (ابن حبان ، 678 حافظ ابن حجر نے اسے قوی کہا)
     
  4. ‏جولائی 14، 2015 #4
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,372
    موصول شکریہ جات:
    2,398
    تمغے کے پوائنٹ:
    791

    صحیح ابن حبان (حدیث نمبر :2429 )
    ’’ أخبرنا الحسن بن سفيان، قال: حدثنا حرملة، حدثنا ابن وهب، قال: حدثني سليمان بن بلال، عن صالح بن كيسان، عن عبد الله بن الفضل، عن أبي سلمة بن عبد الرحمن، وعبد الرحمن الأعرج، عن أبي هريرة، عن رسول الله صلى الله عليه وسلم، أنه قال: «لا توتروا بثلاث، أوتروا بخمس، أو بسبع، ولا تشبهوا بصلاة المغرب»
    وتر تین رکعت نہ پڑھو ،(بلکہ ) وتر کی پانچ ،یا ،سات رکعت پڑھا کرو ،اور (نماز وتر کو )نماز مغرب کے مشابہ نہ کرو ؛؛

    اس کی تخریج و تحقیق میں علامہ شعیب ارناوط لکھتے ہیں :
    إسناده صحيح على شرط مسلم.
    وأخرجه الحاكم 1/304، والبيهقي 3/31، والدارقطني 2/24 من طريق أحمد بن صالح المصري، والدارقطني 2/24-25 من طريق موهب بن يزيد بن خالد، كلاهما عن ابن وهب، بهذا الإسناد، وصححه الحاكم على شرطهما ووافقه الذهبي!.
    وأخرجه الدارقطني 2/26-27 من طريق عبد الملك بن مسلمة بن يزيد، عن سليمان بن بلال، به.
    وأخرجه الحاكم 1/304، والبيهقي 3/31 و32 من طريقين عن الليث، عن يزيد بن أبي حبيب، عن عراك بن مالك، عن أبي هريرة۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    اور سنن الدارقطنی ،باب( لَا تُشَبِّهُوا الْوِتْرَ بِصَلَاةِ الْمَغْرِبِ )میں ہے :
    حدثنا عبد الله بن سليمان بن الأشعث , ثنا أحمد بن صالح , ثنا عبد الله بن وهب , أنبأ سليمان بن بلال , ح وحدثنا أبو بكر النيسابوري , ثنا موهب بن يزيد بن خالد , ثنا عبد الله بن وهب , حدثني سليمان بن بلال , عن صالح بن كيسان , عن عبد الله بن الفضل , عن أبي سلمة بن عبد الرحمن , وعبد الرحمن الأعرج , عن أبي هريرة , عن رسول الله صلى الله عليه وسلم قال
    : «لا توتروا بثلاث , أوتروا بخمس , أو بسبع ولا تشبهوا بصلاة المغرب» . واللفظ لموهب بن يزيد , كلهم ثقات
     
    • پسند پسند x 2
    • علمی علمی x 1
    • لسٹ
  5. ‏جولائی 14، 2015 #5
    مون لائیٹ آفریدی

    مون لائیٹ آفریدی مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏جولائی 30، 2011
    پیغامات:
    640
    موصول شکریہ جات:
    396
    تمغے کے پوائنٹ:
    127

    پہلا والا قعدہ نکال کر بھی مغرب سے تشبیہ ختم ہوجاتی ہے ۔
     
  6. ‏جولائی 14، 2015 #6
    عامر عدنان

    عامر عدنان مشہور رکن
    جگہ:
    انڈیا،بنارس
    شمولیت:
    ‏جون 22، 2015
    پیغامات:
    860
    موصول شکریہ جات:
    240
    تمغے کے پوائنٹ:
    118

    السلام علیکم علماء اکرام سے درخواست ہے کہ اسکا جواب دے دیں فیسبک سے کاپی کیا ہے میں نے

    Assalamu Alaikum Wr Wb..
    Witar Ke 2 rakato Ke Darmayn Tashahud Me Baithna…
    Chahe Namaaz Koi Bhi Ho Rasool Ullah Saw ne 2 rakat Ke baad tashahhud Karte Lehaza dalil mulaiza fermaye…
    DALIL…
    1) Nabi S.A.W Ne irshad Farmaya “Salasa Witar Nahari Salatul Magreeb Witral lail”
    Tarjuma- Raat Ki Witar 3 (rakat) hai jistarah din ki witar Magreeb Hai
    (Sunan Dar Qutni Hd.no- 1653)
    Hasil- jistarah magreeb namaaz padhi jayegi ussi tarah witar ki 3 rakate yani 2 rakato me tasahhud kiya jayega phir 3 rakat me bhi tasahudd kiya jayega phir salam phera jayega..
    Iss hadees ki taid me Hazrat IbnUmar raz Aur hazrat Ibn Masud Ki Hadees Karti He Jisko Imam Muhammad Rah Ne Apni Sanad Se Naqal Kiya He Jo Yun Hai…
    A) SANAD
    Imam Muhammad- Abdul Rehma Bin Abdullah Ibn Utba Al Mas’uddi-Amr Bin Murrah-Abu Ubaida- Ibn Masood Raz….
    MATAN
    Abdullah Ibm Masood Raz Farmate He Ke “Witr 3(rakat) hai,Magreeb ki 3(rakat) ki tarah”
    (Al Ta’liqul Mumajjad Lil Imam Muhammad 2/15)
    B) SANAD
    Imam Ibne Shaiba Wa Abdur Razzaq-imam A’mash-Malik Bin Haris-Abdul Rehman Bin Yazeed-Abdullah Ibn Masud Raz
    MATAN
    Abdullah Ibn Masood Raz Farmate He “Witar 3(rakat) hai Magreeb namaaz Ki Tarah
    (Musanaff ibne Abi Shaiba Hd.no-6779,6889
    Musanaff Abdur Razzaq hd.no-4635)
    Imam Ibn Shaiba Aur Imam Abdur Razzaq Dono Ne Imam A’mash Rah Se Riwayat Kiya He
    2) Abu Aliya Rah Farmate He Ke Rasool Ullah S.A.W Ke Sahaba Raz Hamko(tabain) ko yeh Sikhatey ke witar ki namaaz Magrib Ki Tarah He, Sivaye iske ke teesri rakat me bhi Qiraat(sure fatiha aur dusra surah) hai, Lehaza Yeh Raat Ki Witar Hai Aur Yeh(magreeb) din Ka Witar
    (Tahawi 1/206)
    Iss Hadees se bhi Sabit hua ke Magreeb Aur Witr me fark Sirf Qirat Ka He..
    3) Ammi Ayesha Raz Farnmati He Ke “Wa ka’ana Yaqulu Fii Kulli raatain Tahiyyat”
    Tarjuma- Rasul ullah S.A.W HARR 2 RAKATO ME TAHIYYAT(TASAHHUD) KARTE
    (Sahih Muslim Kitabul Salaat)
    * Lafaz Kaana Ka Istemal Sab Ya Harr Ke liye Hota He lehaza Inme Witar Bhi Samil Hai…
    (Fathul Mulhim Lil Zafar Ahmed Usmani 3/484,485)
    4) Abdullah Bin Masood Raz Se Riwayat He Ke Rasul ullah S.A.W Ne Farmaya Jab Tum Harr 2 rakato ke darmiyaan baitho to yeh parho Attahiyatu Lillahi Wassalawatu Wattayyibat…
    (Musnad Ahmad Hd.no-4160)
    Iss Riwayat Ko Hassiyah charhane Walo Ne Muslim Ki Shart Par Sanadan Sahih Kaha…
    (Musnad Ahmad 7/227)
    GHAIR MUQALLIDEEN KE KUCH AITERAAZ KE JAWAABAT
    Firqa Ghair Muqallideen Ka Ek Aiteraaz Hota He Ke Aap Saw Ne Witr ke 3 Rakato Ko Magreb ki tarah parne mana farmaya he lehaza 2 rakat me baithna nai chaiye yani tasahhud nahi aur yeh hadees di hai…
    Hazrat Abu Hurairah Raz Se Riwayat He Ke Nabi Saw ne Farmaya tha ke Witar ke 3 rakat magreeb ki tarah na parho
    (Hakim1/403, Behqi 3/31, dar qutni Safa 172 )
    JAWAAB 1
    Nabi saw ne uss tarah nahi kaha jistarah ghair muqallideen kehrahe he bulke rasul ullah s.a.w ne khud Magreeb Aur Witar 3 rakat hai kaha jo hamari upar dalil no 1,2 Guzri..
    JAWAAB 2
    Iska Aur ek jawab Salaf us Salihieen Ne bhi diya Lehaza Jo Khud Apne Marzi Se hadeeso pe Raaye lagaye Vo Salafi Kesse??
    1) Iss Hadees ke Tehat Allama Kausari Rah Farmate Hain “Witar Se Pehle Kuch Nawafil Namaaz Parhna Zaruri He kyuki Magrib Se pehle koi nafil nahi aur app s.a.w farman magreeb ki tarah witar na padne ka tha”
    (Al Nukatu Tareefa Lil Allama Kausari Rah Safa 186)
    2) Imam Abdul Barr Maliki Rah Farmate He Ke witar Namaaz Tab He Hoga Jab Kuch Nawafil Usse Pehle padha Jaye Na Ke Magreeb Ki Tarah
    (Tamheed Lil Abdul Barr 4/177)
    Ya’ni Witar Se pehle Kuch nawafil parna Chaye na Ke Magreeb ki tarah
    JAWAAB 3
    Ammi Ayesha Raz Ka Bhi Yehi Farman Tha ke Witar Ke 3 rakato Se Pehle nawafil parhna chiye aasar mulaiza farmaye
    SANAD
    Imam Abu Bakar Bin Abi Shaiba-Abbad Bin Awwam-Ala Bin Mussaib-Mussaib Bin Rafi-Ayesha Raz
    MATAN
    Ammi Ayesha Raz Farmati He ke Witar Ke 3(rakat) adhura na parho bulke usse Qabal(kamaz Kam) 2 rakat ya 4 rakat parho..
    (Musannaff Ibn Abi Shaiba Hd.no-6898)
    Tabain Abul Aliya Rah Farmate He Ke Parho(witar) jistarah magrib me partey ho
    (Mussanaf ibn Abi Shaiba hd.no-6909, Sanadan Sahih)
     
  7. ‏جولائی 14، 2015 #7
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,372
    موصول شکریہ جات:
    2,398
    تمغے کے پوائنٹ:
    791

    پیارے بھائی مجھ سے آپ کی پوسٹ پڑھی نہ جا سکی ۔۔
    اسے اردو میں منتقل کریں ؛
     
  8. ‏جولائی 14، 2015 #8
    عامر عدنان

    عامر عدنان مشہور رکن
    جگہ:
    انڈیا،بنارس
    شمولیت:
    ‏جون 22، 2015
    پیغامات:
    860
    موصول شکریہ جات:
    240
    تمغے کے پوائنٹ:
    118

    ان شاء اللہ بھائ جان

    وتر کے دو رکعتوں کے درمیان تشہد میں بیٹھنا


    چاہے نماز کوئ بھی ہو رسول اللہ صلی اللہ علیی وسلم دو رکعت کے بعد تشہد میں بیٹھتے تھے دلیل ملاحظہ فرمائیں

    ۱- نبی صلی اللہ علیہ وسلم نے ارشاد فرمایا کہ رات کی وتر تین رکعت ہے جس طرح دن کی وتر مغرب ہے

    ” سنن دارقطنی حدیث نمبر 1653“

    حاصل›› جس طرح مغرب کی نماز پڑھی جائے گی اسی طرح وتر کی تین رکعت بھی پڑھی جائے گی یعنی دوسری رکعت میں تشہد میں بیٹھا جائے گا

    اس حدیث کی تائید حضرت ابن مسعود اور حضرت ابن عمر رضی اللہ عنہ کی حدیث کرتی ہے جسکو امام محمد رحہ نے نقل کیا ہے کہ عبداللہ ابن مسعود رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ وتر تین ہے مغرب کی طرح

    ” التعلیق جلد 2 ص 15“

    عبد اللہ ابن مسعود رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ وتر تین ہے مغرب کی طرح

    ” مصنف ابن ابی شیبہ حدیث نمبر 6779,6889“
    ”مصنف عبد الرزاق حدیث نمبر 4635“



    اسکا جواب دیں پھر اور روایت ہیں وہ بھی لکھ دوں گا ان شاء اللہ

    جزاک اللہ خیر بھائ جان

     
  9. ‏جولائی 14، 2015 #9
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,372
    موصول شکریہ جات:
    2,398
    تمغے کے پوائنٹ:
    791

    یہ حدیث سنن الدارقطنی سے لی گئی ہے ۔۔۔اور وہاں ساتھ امام دارقطنی نے لکھا ہے کہ یہ حدیث ضعیف ہے ،اور وجہ ضعف بھی ساتھ ہی لکھی ہے
    حدیث مع الاسناد یہ ہے :
    حدثنا الحسن بن رشيق بمصر , ثنا محمد بن أحمد بن حماد الدولابي , ثنا أبو خالد يزيد بن سنان , ثنا يحيى بن زكريا الكوفي , ثنا الأعمش , عن مالك بن الحارث , عن عبد الرحمن بن يزيد النخعي , عن عبد الله بن مسعود , قال: قال رسول الله صلى الله عليه وسلم: «وتر الليل ثلاث كوتر النهار صلاة المغرب» .
    (قال الامام الدارقطني ):يحيى بن زكريا هذا يقال له: ابن أبي الحواجب ضعيف , ولم يروه عن الأعمش مرفوعا غيره‘‘


    یعنی امام دارقطنی فرماتے ہیں :یہ ’’يحيى بن زكريا ‘‘ جسے ۔۔ابن ابی الحواجب ۔۔بھی کہا جاتا ہے ،یہ ضعیف ہے ؛
    اس لئے جب ضعیف ہے تو دلیل بننے کے قابل نہیں ۔۔۔جبکہ پہلی حدیث جس میں نماز مغرب کو نماز وتر کے مشابہ کرنے سے منع کیا گیا ہے ،اس کو خود امام دارقطنی نے صحیح کہا ہے ‘‘

    الوتر ثلاث 1.gif
     
    Last edited: ‏جولائی 14، 2015
  10. ‏جولائی 15، 2015 #10
    عامر عدنان

    عامر عدنان مشہور رکن
    جگہ:
    انڈیا،بنارس
    شمولیت:
    ‏جون 22، 2015
    پیغامات:
    860
    موصول شکریہ جات:
    240
    تمغے کے پوائنٹ:
    118

    جزاک اللہ خیر بھائ جان اسکا بھی جواب دیں

    اس حدیث کی تائید حضرت ابن مسعود اور حضرت ابن عمر رضی اللہ عنہ کی حدیث کرتی ہے جسکو امام محمد رحہ نے نقل کیا ہے کہ عبداللہ ابن مسعود رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ وتر تین ہے مغرب کی طرح

    ” التعلیق جلد 2 ص 15“

    عبد اللہ ابن مسعود رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں کہ وتر تین ہے مغرب کی طرح

    ” مصنف ابن ابی شیبہ حدیث نمبر 6779,6889“
    ”مصنف عبد الرزاق حدیث نمبر 4635“
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں