1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

کیا تہجد اور قیام رم،ضان (تراویح) ایک ہی نماز کے دو نام ہیں؟

'تہجد' میں موضوعات آغاز کردہ از جی مرشد جی, ‏مئی 01، 2019۔

  1. ‏مئی 01، 2019 #1
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    551
    موصول شکریہ جات:
    14
    تمغے کے پوائنٹ:
    61

    بات کو سمجھنے کے لئے کچھ مقدمات

    صحیح حدیث میں ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم رمضان کے آخری عشرہ میں ساری رات جاگتے تھے۔
    صحیح احادیث سے ثابت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی رات کی عبادت نماز ہی تھی۔
    صحیح حدیث میں ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے پہلی دفعہ رمضان میں نماز اول تہائی رات تک پڑھائی۔
    صحیح حدیث میں ہے کہ دوسری دفعہ اول نصف رات تک۔
    صحیح حدیث میں ہے کہ تیسری دفعہ پوری رات۔
    پہلی دفعہ
    پہلی دفعہ کتنی رکعات پڑھائیں؟
    کیا پہلی دفعہ میں وتر بھی پڑھائے؟
    دوسری دفعہ
    دوسری دفعہ بھی کیا پہلی دفعہ جتنی رکعات ہی پڑھائیں؟
    کیا دوسری دفعہ میں وتر بھی پڑھائے؟
    تیسری دفعہ
    تیسری دفعہ پوری رات نماز پڑھائی۔
    کیا تیسری دفعہ میں وتر بھی پڑھائے؟

    پہلی دفعہ اگر تہجد گیارہ رکعات پڑھائی تو باقی رات کونسی نماز پڑھتے رہے؟
    اسی طرح دوسری دفعہ میں بھی کیا پہلے جتنی رکعات پڑھائیں یا زیادہ؟
    اس کے بعد رات کے بقیہ حصہ میں کونسی نماز ادا کی؟
    ہر دفعہ کیا وتر پڑھائے یا کہ نہیں؟

    ان تمام باتوں کا بحوالہ جواب دیں؟
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں