1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

کیا پاکستان کا آئین غیر اسلامی ہے؟خوارج کا جھوٹ ۔۔۔۔

'خوارج' میں موضوعات آغاز کردہ از خوشبواسلام, ‏مارچ 16، 2016۔

  1. ‏مارچ 16، 2016 #1
    خوشبواسلام

    خوشبواسلام مبتدی
    شمولیت:
    ‏مارچ 16، 2016
    پیغامات:
    7
    موصول شکریہ جات:
    0
    تمغے کے پوائنٹ:
    3

    پاکستان کا آئین غیراسلامی ہے یا پھر خود خوارج کا اپنا ایجنڈا؟


    کالعدم تحریک طالبان پاکستان کہتی ہے کہ طالبان مذاکرات کے خواہشمند ہیں لیکن پاکستان کے آئین کے تحت ہم کبھی مذاکرات نہیں کرینگے کیونکہ پاکستانی آئین سیکولر ہے۔


    یاد رہے!


    طالبان پاکستان دشمن ایجنڈے کی تکمیل میں مگن ہیں حکومت نے صدقِ دل سے انہیں مذاکرات کی پیشکش کی تھی لیکن وہ اب حیل و حجت سے مذاکرات سے فرار کا راستہ تلاش کر رہے ہیں۔


    سب پر یہ بات واضح ہونی چاہیئے کہ اسلامی مملکت پاکستان کا آئین، عین اسلامی ہے۔


    قرارداد مقاصد کی شکل میں موجود آئین کی دفعہ 2 الف کے مطابق پاکستان میں کوئی بھی قانون قرآن و سُنت کے منافی نہیں بن سکتا ۔


    آئینِ پاکستان کے آرٹیکل۲کی رُو سے اسلام، اسلامی جمہوریہ پاکستان کا ریاستی مذہب ہے۔


    آرٹیکل ۲۲۷ کے مطابق پاکستان میں کوئی ایسا قانون نہیں بنایا جاسکتا جو قرآن و سنت سے مطابقت نہ رکھتا ہو۔ یہ آرٹیکل یہ بھی کہتا ہے کہ اگر موجودہ قوانین قرآن و سنت سے مطابقت نہیں رکھتے تو اُنہیں قرآن و سنت کے مطابق ڈھالا جائے گا اور مطابقت پیدا کی جائے گی۔


    آرٹیکل۴۱ کے مطابق صدر کے لیے مسلمان ہونے کی شرط ہے، پھر قراردادِ مقاصد جسے اب آئین کے قابلِ تنفیذ آرٹیکل (۲؍اے) کا درجہ حاصل ہے،بے حد وضاحت سے اللہ تعالیٰ کی حاکمیت کا اعلان کرتی ہے۔


    یہ سب باتیں معروف ہیں، البتہ آئین میں صدرِ پاکستان کے عہدے کے لیے جو حلف کی عبارت دی گئی ہے، اُس کا تذکرہ کم کم ہوتا ہے۔ اس عبارت میں جہاں حلف لینے والے صدر کو توحید ِباری تعالیٰ اور قرآنِ مجید کو آخری الہامی کتاب اور حضرت محمدصلی اللہ علیہ وسلم کی ختمِ نبوت اور یومِ آخرت پر ایمان کا اقرار کرنا پڑتا ہے، وہاں قرآنِ مجید کے ’تمام تقاضوں اور تعلیمات‘ پر عمل پیرا ہونے کا بھی حلف اٹھانا پڑتا ہے۔ ’تمام تقاضے اور تعلیمات‘ کے اندر سب کچھ آجاتا ہے۔ مختصراً یہ ہے کہ آئینِ پاکستان کی رُو سے بھی قرآن و سنت کو بالادستی حاصل ہے۔۔۔


    اسکے برعکس اگر ہم منصفانہ جائزہ لیں تو طالبان کا اپنا آئین و ایجنڈا صریحا قرآن و سُنت سے متصادمہے۔ فرمان رسول اور احکامات الہیہ کے مطابق عام مسلمان شہریوں کی جان و مال کے ساتھ ساتھ اقلیتوں کا تحفظ ضروری ہے لیکن شاہد اللہ شاہد (جو کہ بعد میں داعش میں شامل ہو گیا تھا ) نے اپنے ایک بیان میں کہا ہے کہ پشاور چرچ پر حملہ درست تھا۔ کیا اقلیتوں پر حملوں کی حمایت کرنیوالے کا طالبان کا ایجنڈا قرآن و سُنت سے مطابقت رکھتا ہے؟


    جیسا کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا :
    عن عبد اللہ بن عمرو رضی اللہ عنہما عن النبی صلی اللہ علیہ وسلم قال من قتل معاہدا لم یرح رائحۃ الجنۃ وان ریحہا توجد من مسیرۃ اربعین عاما۔
    حضرت عبد اللہ بن عمرو رضی اللہ عنہما حضرت نبی اکرم صلی اللہ علیہ والہ وسلم سے روایت کرتے ہیں کہ آپ نے ارشاد فرمایا: جوشخص معاہدہ والے کسی غیر مسلم کو قتل کرے تو وہ جنت کی خوشبو نہیں سونگھے گا، حالانکہ اسکی خوشبوچالیس سال کی مسافت سے سونگھی جاتی ہے۔
    ﴿صحیح بخاری شریف، کتاب الجزیۃ،باب اثم من قتل معاہدا بغیر جرم، حدیث نمبر2930﴾
    تحریک طالبان پوری دنیا کے سامنے اسلام کے چہرے کو مسخ کر کے پیش کرنے پر گامزن ہے۔ لہٰذا ان خوارج صفت لوگوں سے نرمی محض وقت اور مال و جان کے ضیاع کے لئے ان کو مزید مہلت دینے کے مترادف ہے۔ اللہ ہمیں ان کے شر سے بچائے امین ۔
     
    • پسند پسند x 1
    • ناپسند ناپسند x 1
    • لسٹ
  2. ‏جون 01، 2018 #2
    فرقان الدین احمد

    فرقان الدین احمد مبتدی
    شمولیت:
    ‏جولائی 12، 2017
    پیغامات:
    50
    موصول شکریہ جات:
    8
    تمغے کے پوائنٹ:
    18

    اللہ سبحان و تعالٰی ہم سب کو صراط مستقیم پر چلنے کی توفیق عطا فرمائے اور شیطان کے تبلیسی حملوں سے بچائے۔

    شاید پاکستان کے مسلمانوں کے ساتھ، اِس صدی کا سب سے بڑا مذاق ۱۹۷۳ کے آئین کا اسلامی ہونے کا دعوی ہے اور فی الحقیقت یہی ایک دجل سے بھرپور دعوی ہے جس کی بنیاد پر آج تک اِس باطل نظام کو سہارا دیا ہوا ہے ورنہ اِس کے علاوہ تو اِس کے ہمنوا بھی اِس بات پر متفق ہیں کہ "اسلامی جمہوری" نظام کے باقی تمام خدوخال لبرل مغربی جمہوریت ہی کے مثل ہیں۔
    حق کے متلاشی حضرات کے لیے "آئین پاکستان" سے متعلق ایک مضمون اپلوڈ کیا ہے؛ توجہ سے مطالعہ فرمائیں، امید ہے نفع ہوگا۔
     

    منسلک کردہ فائلیں:

  3. ‏جون 01، 2018 #3
    محمد علی جواد

    محمد علی جواد سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏جولائی 18، 2012
    پیغامات:
    1,923
    موصول شکریہ جات:
    1,483
    تمغے کے پوائنٹ:
    304

    طالبان کا اپنا آئین و ایجنڈا جو بھی ہو -لیکن پاکستان کے آئین سے متعلق ان کی بات صحیح ہے -

    یہ کہنا کہ :

    "آرٹیکل ۲۲۷ کے مطابق پاکستان میں کوئی ایسا قانون نہیں بنایا جاسکتا جو قرآن و سنت سے مطابقت نہ رکھتا ہو۔ یہ آرٹیکل یہ بھی کہتا ہے کہ اگر موجودہ قوانین قرآن و سنت سے مطابقت نہیں رکھتے تو اُنہیں قرآن و سنت کے مطابق ڈھالا جائے گا اور مطابقت پیدا کی جائے گی"

    یہ ایک دھوکہ ہے- پاکستان میں "الله رب العزت کی حاکمیت " کے بجاے "پارلیمنٹ کی اکثریت کی خدائی کار فرما ہے" جو کہ الله کے ساتھ شرک و کفر ہے-اس بنا پر یہاں کسی بھی
    نمائندہ کو ووٹ دینا بھی حرام ہو گا-

    اس کا ثبوت یہ ہے کہ ٧٠ سال گزرنے کے باوجود یہاں ایک بھی اسلامی قوانین و سزا کا نفاذ نہ ہوسکا -وجہ یہی تھی کہ پارلیمنٹ کے اکثریتی بل نے اس کو پاس نہیں کیا جب کہ الله رب العزت کا حکم کردہ قانون ہر صورت میں نافذ العمل ہونا ضروری ہے- اس کے نفاذ کے لئے کسی اکثریتی بل کے پاس ہونے کا قانون الله کی ذات کے ساتھ صریح شرک ہے -

    : وَمَا يُؤْمِنُ أَكْثَرُهُمْ بِاللَّهِ إِلَّا وَهُمْ مُشْرِكُونَ سوره یوسف 106
    اور ان میں سے اکثر الله پر ایمان نہیں لاتے۔ مگر اس حال میں کہ اس کے ساتھ شرک بھی کرتے ہیں-
     
  4. ‏جون 02، 2018 #4
    difa-e- hadis

    difa-e- hadis رکن
    شمولیت:
    ‏جنوری 20، 2017
    پیغامات:
    265
    موصول شکریہ جات:
    23
    تمغے کے پوائنٹ:
    52

    محمد علی جواد صاحب سے ۱۰۰ فیصد متفق
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں