1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

یہ حدیث ان الفاظ میں ثابت ہے؟

'تحقیق حدیث سے متعلق سوالات وجوابات' میں موضوعات آغاز کردہ از عبدالرحمن حمزہ, ‏مئی 28، 2017۔

  1. ‏مئی 28، 2017 #1
    عبدالرحمن حمزہ

    عبدالرحمن حمزہ رکن
    شمولیت:
    ‏مئی 27، 2016
    پیغامات:
    241
    موصول شکریہ جات:
    69
    تمغے کے پوائنٹ:
    61

    وَعَن عِمْرَانَ بْنِ حُصَيْنٍ أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ: «مَقَامُ الرَّجُلِ بِالصَّمْتِ أَفْضَلُ مِنْ عِبَادَةِ سِتِّينَ سنة»

    روایت ہے حضرت عمران ابن حصین سے کہ رسول الله صلی الله علیہ وسلم نے فرمایا کہ انسان کا خاموشی سے ثابت رہنا ساٹھ برس کی عبادت سے افضل ہے
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    اس حدیث کی سند کیا ہے
     
  2. ‏مئی 28، 2017 #2
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    6,361
    موصول شکریہ جات:
    2,395
    تمغے کے پوائنٹ:
    791

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ
    محترم بھائی !
    یہ حدیث مشکوٰۃ شریف میں بحوالہ بیہقی موجود ہے ،
    اور امام بیہقی رحمہ اللہ نے اسے شعب الایمان میں روایت کیا ہے ،بالاسناد روایت درج ذیل ہے :
    حدثنا أبو القاسم عبد الرحمن بن محمد السراج، أنا أبو الحسن أحمد بن محمد بن عبدوس الطرائفي، نا عثمان بن سعيد الدارمي، نا عبد الله بن صالح، حدثني يحيى بن أيوب، عن هشام بن حسان، عن الحسن، عن عمران بن حصين، أن رسول الله صلى الله عليه وسلم قال: " مقام الرجل للصمت أفضل من عبادة ستين سنة "
    الجامع لشعب الايمان للبيهقي
    حدیث نمبر (4602 )
    عمران بن حصین رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ (صلی اللہ علیہ وسلم) نے فرمایا چپ رہنے کی وجہ سے آدمی کو جو درجہ حاصل ہوتا ہے وہ ساٹھ سال کی عبادت سے افضل ہے۔ ‘‘
    اس کے جملہ رواۃ ثقہ ہیں ،لیکن یہ روایت دو علتوں سے معلول ہے ، پہلی علت اس میں یہ ہے کہ : عمران بن حصین صحابی سے نقل کرنے والے حسن کی ملاقات ان سے ثابت نہیں ، یعنی یہ منقطع روایت ہے ،
    دوسری علت اس میں یہ ہے کہ اس کے متن میں تصحیف ہوئی ہے ، ( یعنی کسی راوی کی غلطی سے لفظ ـصف ـ صمت میں بدل گیا )
    یعنی اصل روایت جو شعب الایمان میں ہی موجود ہے اس میں یہ ہے کہ :
    أخبرنا أبو عبد الله الحافظ، أخبرنا أبو الحسن أحمد بن محمد العنبري، حدثنا عثمان بن سعيد الدارمي، حدثنا عبد الله بن صالح المصري، حدثني يحيى بن أيوب، عن هشام بن حسان، عن الحسن، عن عمران بن حصين، أن رسول الله صلى الله عليه وسلم قال: " مقام الرجل في الصف في سبيل الله، أفضل عند الله من عبادة رجل ستين سنة " (شعب الایمان حدیث نمبر 3926 )
    یعنی اللہ کی راہ (جہاد ) کی صف میں (موجود ) بندہ مومن کا مقام اللہ کے ہاں ساٹھ سالہ عبادت سے افضل ہے ،
    مشکاۃ شریف کا ایک باکمال ایڈیشن ہے جس کا نام (هداية الرواة إلى تخريج أحاديث المصابيح والمشكاة ) اس کی تخریج میں علامہ ناصر الالبانی لکھتے ہیں :
    كذا في الاصل وهو تصحيف > والصواب " الصف " هكذا رواه الدارمي والحاكم وغيرهما وهو حديث صحيح كما بينته في الصحيحة (902 )
    مطلب یہ کہ اصل روایت میں صحیح و محفوظ لفظ ’’ صف ‘‘ تھا ۔ راوی کی خطا سے ’’ صمت ‘‘ روایت کردیا گیا ، جبکہ اصل صحیح روایت دارمی اور حاکم وغیرہ نے بیان کر رکھی ہے
    جس کو ( سلسلہ صحیحہ ) میں درج کیا گیا ہے ‘‘
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
     
    • علمی علمی x 6
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...
متعلقہ مضامین
  1. عامر عدنان
    جوابات:
    0
    مناظر:
    320
  2. Rahil
    جوابات:
    1
    مناظر:
    383
  3. ابو زہران شاہ
    جوابات:
    1
    مناظر:
    460
  4. اسحاق سلفی
    جوابات:
    1
    مناظر:
    629
  5. محمد اعمش
    جوابات:
    1
    مناظر:
    449

اس صفحے کو مشتہر کریں