1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔۔
  2. محدث ٹیم منہج سلف پر لکھی گئی کتبِ فتاویٰ کو یونیکوڈائز کروانے کا خیال رکھتی ہے، اور الحمدللہ اس پر کام شروع بھی کرایا جا چکا ہے۔ اور پھر ان تمام کتب فتاویٰ کو محدث فتویٰ سائٹ پہ اپلوڈ بھی کردیا جائے گا۔ اس صدقہ جاریہ میں محدث ٹیم کے ساتھ تعاون کیجیے! ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔ ۔

ایک مجلس کی تین طلاقیں ایک شمار ہوتی ہیں

'طلاق' میں موضوعات آغاز کردہ از ڈاکٹر محمد یٰسین, ‏مئی 28، 2016۔

  1. ‏مئی 18، 2017 #31
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    7,638
    موصول شکریہ جات:
    8,077
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    تبصرہ کرنے سے پہلے کسی پوسٹ کو مکمل پڑھ لینا چاہیے ۔ یہ صاحب نہ اہل حدیث ہیں ، نہ دیوبندی ، نہ بریلوی ، اور بدعوی خود نہ ہی اہل قرآن و منکر حدیث ۔
     
  2. ‏مئی 18، 2017 #32
    رحمانی

    رحمانی رکن
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 13، 2015
    پیغامات:
    343
    موصول شکریہ جات:
    96
    تمغے کے پوائنٹ:
    66

    آپ کو یہ ڈرامائی مکالمہ محض اس لئے پسند آرہاہے کہ آپ کے موقف کی تائید کی جارہی ہے، اگرایساہی ڈرامائی موقف کوئی حنفی پیش کرتا توابھی تک شاید اس طرح کی باتیں شروع ہوجاتیں کہ یہ غیر شرعی ہے،خدا اوربندے کا مکالمہ اسلام کے خلاف ہے وغیرذلک،اسی چیز کو قرآن میں کہاگیاہے۔
    وَلَا يَجْرِمَنَّكُمْ شَنَآنُ قَوْمٍ عَلَى أَلَّا تَعْدِلُوا اعْدِلُوا هُوَ أَقْرَبُ لِلتَّقْوَى
     
  3. ‏مئی 18، 2017 #33
    کنعان

    کنعان فعال رکن
    جگہ:
    برسٹل، انگلینڈ
    شمولیت:
    ‏جون 29، 2011
    پیغامات:
    3,470
    موصول شکریہ جات:
    4,362
    تمغے کے پوائنٹ:
    521


    طلاق 2 + طلاق= 3 طلاق

    طلاق 2، نوٹس اور پھر طلاق، فیصلہ
     
  4. ‏مئی 18، 2017 #34
    عبدالرحمن حنفی

    عبدالرحمن حنفی مبتدی
    شمولیت:
    ‏اپریل 15، 2017
    پیغامات:
    194
    موصول شکریہ جات:
    1
    تمغے کے پوائنٹ:
    23

    جب ایک مجلس کی تین طلاق ایک ہی ہے تو یہ شرعی حکم کا مذاق کیسے ہے؟
    اگر یہ مذاق بھی ہو تو بھی اس وجہ سے اللہ تعالیٰ کے دیئے ہوئے حق کو کیسے سلب کیا جاسکتا ہے؟ اس پر حاکمِ وقت نے تعزیر کیوں نہیں دی؟
     
  5. ‏مئی 24، 2017 #35
    عبدالرحمن حنفی

    عبدالرحمن حنفی مبتدی
    شمولیت:
    ‏اپریل 15، 2017
    پیغامات:
    194
    موصول شکریہ جات:
    1
    تمغے کے پوائنٹ:
    23

    ایک مجلس کی تین ط،اق کو تین ہی گننا چاہیئے کیوں کہ تین کو ایک تو نہی کہا جاسکتا۔ ہاں یہ ایک غلط قدم تھا کہ جو کام ایک طلاق سے ممکن تھا اس نے تعدی کی اور صلح کی گنجائش نہ چھوڑی۔ اسی پر تعزیراً کوڑے لگائے گئے اور یاد رہے تعزیر نص نہیں کہ اس پر فتویٰ دیا جائے۔
    رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم بھی اسی ناروا عمل پر شدید غصے ہوئے حالاں کہ طلاق کے ایک جائز معاملہ میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کبھی غصے نہیں ہوئے اور ہو بھی کیسے سکتے تھے کہ جسے اللہ تعالیٰ نے جائز رکھا۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں