1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

ترک رفع یدین کے حق میں 43 دلائل

'نماز' میں موضوعات آغاز کردہ از مشوانی, ‏اکتوبر 05، 2012۔

  1. ‏اکتوبر 08، 2012 #11
    ابو عبدالله

    ابو عبدالله مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏نومبر 28، 2011
    پیغامات:
    720
    موصول شکریہ جات:
    447
    تمغے کے پوائنٹ:
    135

    جزاك الله
     
  2. ‏اکتوبر 14، 2012 #12
    انس

    انس منتظم اعلیٰ رکن انتظامیہ
    جگہ:
    لاہور
    شمولیت:
    ‏مارچ 03، 2011
    پیغامات:
    4,175
    موصول شکریہ جات:
    15,218
    تمغے کے پوائنٹ:
    800

    شائد مشوانی صاحب نے یہ پوسٹ نہیں دیکھی:
     
  3. ‏اکتوبر 14، 2012 #13
    مشوانی

    مشوانی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 06، 2012
    پیغامات:
    68
    موصول شکریہ جات:
    302
    تمغے کے پوائنٹ:
    44

    بھائی جان. رفع یدین حق ہے۔ اسمیں میرا کوئی شعبہ نہیں۔ بڑا بھائی بار بار اپنے دلائل پیش کر رہا تھا۔ جو میں نے یہاں پڑ پیش کر دیے- ایک بھائی نے مجھے نے کہا کے میرے پاس اسکا جواب ایک فائل میں موجود ہے جو کہ انہوں نے مجھے بیجھ دیا- میں دلائل بھائی کے سامنے رکھے وہ لے گئے ایک مفتی صاھب کے پاس. مفتی صاھب نے یہ کہ کر بات ختم کر دی. کہ سب طریقے رسول سے ثابت ہیں- اگر کرو تو بھی ٹیک ہے اور نا کرو تو کوئی گناہ نہیں- چونکے میرے بھائی بھی اندھی تقلید کا جیالا ہے، اسلئے اسنے مفتی صاھب کی بات من و عن مان لی. اور مجھے بھی جواب دیا. کہ دونوں طریقے ٹھیک ہیں. اسلئے میں نے اس دھاگے میں آگے پوسٹ ہی نہی کیا.
     
  4. ‏اکتوبر 15، 2012 #14
    Aamir

    Aamir خاص رکن
    جگہ:
    احمدآباد، انڈیا
    شمولیت:
    ‏مارچ 16، 2011
    پیغامات:
    13,384
    موصول شکریہ جات:
    16,870
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,033

    اپنے بھائی کو اس فتوے پر عمل کرنے کو بھی کہیے:
    کبھی کبھی رفع الیدین بھی کر لیا کرو۔(ديوبندی مفتی کا فتویٰ)


    مفتی محمد شفیع صاحب نے فرمایا ہے۔کہ کبھی کبھی رفع الیدین بھی کر لیا کرو۔کیونکہ اگرقیامت والے دن رسول اللہ صلٰی اللہ علیہ وسلم نے دریافت فرمالیا کہ تم تک میری یہ سنت بھی تو صحیح طریقہ پر پہنچھی تھی تو تم نے اس پرعمل کیوں نہیں کیا تو کوئی جواب نہیں بن پڑے گا۔
    (ماہنامہ الشریعہ ۔۔۔صفحہ نمبر 22 نومبر 2005)
    [​IMG]

    [​IMG]
    فروعی مسائل میں سہولت ورخصت کا فقہی اصول
     
  5. ‏نومبر 12، 2012 #15
    یاسر اقبال

    یاسر اقبال مبتدی
    شمولیت:
    ‏نومبر 12، 2012
    پیغامات:
    4
    موصول شکریہ جات:
    11
    تمغے کے پوائنٹ:
    0

    تمام دوستوں کو میری طرف سے السلام علیکم۔۔!
    جہاں تک اسلام میں کسی بھی مسٰلے کا تعلق ہے تو گزارش یہ ہے کہ کسی فرد واحد کی بات کسی کے لیے دلیل نہیں ہونی چاہیے۔ دلیل صرف قرآن و سنت ہے۔ جیسا کہ یہاں کچھ علما ٔ کی ذاتی رائے کی بات کی گئی۔
    میں جہاں تک جانتا ہوں احناف کا یہ عقیدہ ہے کہ نبی ﷺ نے رفع الیدین کیا اس میں کوئی اختلاف نہیں ، لیکن نبی ﷺ نے رفع الیدین پوری زندگی نہیں کیا، کیونکہ یہ بعد میں منسوخ ہو گیا جیسا کہ دونوں سجدوں کے درمیان بھی رفع الیدین کیا جاتا تھا جس کو اہلحدیث (وہابی) مانتے ہیں لیکن رکوع کے دوران کو منسوخ نہیں مانتے، ۔ اگر میرے کسی اہلحدیث دوست کے پاس کو ئی دلیل ہے جس میں یہ ثابت ہو کہ نبی ﷺ نے پوری زندگی رکوع کے دوران بھی رفع الیدین کیا تووہ صحیح ، صریح حدیث پیش کریں۔ جہا ں تک اس لنک کی بات ہے جو انگلش میں دیا گیا تھا اسے اردو میں یہا ں لکھیں ، انشااللہ اس کا بھی جواب مل جائے گا۔جو لوگ یہ کہتے ہیں کہ زبیر علیزئی کی کتاب میں سب جواب ہیں تو ان سے گزارش ہے کہ صرف ایک صحیح ، صریح حدیث آخری نماز تک اس کتاب سے نکال کر یہاں پیش کر دیں ۔ آپ لوگوں کو تکلیف تو ہو گی لیکن ہماری اصلاح کے لیے۔ والسلام
     
  6. ‏نومبر 13، 2012 #16
    sahj

    sahj مشہور رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏مئی 13، 2011
    پیغامات:
    458
    موصول شکریہ جات:
    655
    تمغے کے پوائنٹ:
    110

    ماشاء اللہ
    ۔
     
  7. ‏نومبر 13، 2012 #17
    گڈمسلم

    گڈمسلم سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 10، 2011
    پیغامات:
    1,407
    موصول شکریہ جات:
    4,907
    تمغے کے پوائنٹ:
    292

    وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ
    ماشاء اللہ بہت خوبصورت بات کہی آپ نے کہ دلیل صرف قرآن وسنت ہے۔ اور مجھے یقین ہے کہ آپ کسی مسئلے میں انہی دو دلائل سے رہنمائی لیتے ہونگے۔ اور ہاں باقی ماخذ شریعت سے رہنمائی لینا بھی نہ بھولیے گا لیکن اس وقت جب ان کی ضرورت پڑے۔
    آپ کی اس عبارت میں چار باتیں بیان کی گئی ہیں
    1۔ نبی کریمﷺ نے رفع الیدین کیا۔ اہل حدیث بھی مانتے ہیں اور مقلدین بھی
    2۔ لیکن رفع الیدین پوری زندگی نہیں کیا۔ مقلدین مانتے ہیں اہل حدیث انکار کرتے ہیں
    3۔ مقلدین کے ہاں رفع الیدین منسوخ ہوگیا
    4۔ سجدوں والی رفع الیدین کی منسوخیت کے دونوں قائل ہیں
    محترم بھائی جب اہل حدیث اور مقلدین ابی حنیفہ اس بات تک متفق ہیں کہ آپﷺ نے رفع الیدین کیا۔لیکن اختلاف مقلدین نے آکر ڈالا کہ یہ رفع الیدین پوری زندگی نہیں کیا بلکہ منسوخ ہوگیا۔ تو بجائے اس کے آپ ہم سے یوں مطالبہ کریں کہ
    بہت مضحکہ خیز ہے۔
    یہ تو مطالبہ ہمیں آپ سے کرنا چاہیے کہ محترمین جب آپ مانتے ہیں کہ رفع الیدین نبی کریمﷺ نے کیا تو پھر یہ رفع کب چھوڑا گیا ؟ کب منسوخ ہوا ؟ کیوں منسوخ ہوا ؟ کتنے سال تک رفع الیدین ہوتا رہا پھر اللہ تعالیٰ نے روک دیا ؟
    ان سب سوالوں کے جوابات تو آپ پر آتے ہیں کہ ایک مسئلہ جس کو آپ اور اہل حدیث تسلیم کرتے ہیں اور پھر اہل حدیث ابھی تک اسی مسئلہ کو اسی طرح تسلیم کرتے آرہے ہیں جس طرح ایک زمانہ میں آپ نے بھی تسلیم کیا تھا۔ اب آکر آپ نے اس کا انکار کردیا تو اس انکار پر دلیل تو آپ پر آتی ہے۔ کیونکہ ہم نے تو انکار کیا ہی نہیں۔

    اس لیے آپ مضحکہ خیز مطالبے کے بجائے اس مطالبے کا جواب دیں کہ
    کوئی ایسی صریح، صحیح حدیث پیش کریں جس میں لکھا ہو کہ رفع الیدین پہلے کیا جاتا تھا (جس کو آپ بھی مانتے ہیں ) اور پھر یہ رفع اس سبب سے منسوخ ہوگیا ہے۔ منسوخیت پر دلیل پیش کریں۔ شکریہ
    ہاں قرآن پاک کی یہ آیت بھی ذہن میں لانا مت بھولیے گا۔
    اب یہ الفاظ یوں پڑھ لیں
    آپ لوگوں کو تکلیف تو ہوگی لیکن ہماری اصلاح کےلیے۔ والسلام
     
  8. ‏نومبر 13، 2012 #18
    یاسر اقبال

    یاسر اقبال مبتدی
    شمولیت:
    ‏نومبر 12، 2012
    پیغامات:
    4
    موصول شکریہ جات:
    11
    تمغے کے پوائنٹ:
    0

    تمام دوستوں کو السلام وعلیکم !
    ماشاء اللہ بہت خوبصورت بات کہی آپ نے کہ دلیل صرف قرآن وسنت ہے۔ اور مجھے یقین ہے کہ آپ کسی مسئلے میں انہی دو دلائل سے رہنمائی لیتے ہونگے۔ اور ہاں باقی ماخذ شریعت سے رہنمائی لینا بھی نہ بھولیے گا لیکن اس وقت جب ان کی ضرورت پڑے
    بہت شکر یہ کہ آپ نے میری دل جوئی کی۔ الحمدللہ ! ہر مسلمان قرآن و حدیث سے ہی ہر مسئلے کا حل تلاش کرتا ہے۔ مجھے امید ہے کہ آپ بھی ان ہی میں سے ایک ہوں گے۔ ما خذ شریعت سے آپ کی کیا مراد ہے تھوڑی تفصیل سے بتا دیجیے گا۔ ان کی ضرورت آپ کے نزدیک کہا ں پڑھتی ہے وہ بھی بتا دیجیے گا۔

    2۔ لیکن رفع الیدین پوری زندگی نہیں کیا۔ مقلدین مانتے ہیں اہل حدیث انکار کرتے ہیں
    یہاں آپ نے مقلدین سے تو منسوخ کا مطالبہ کیا ہے ، آپ بھی کرم فرمائیں، نبی ﷺ کی آخری نماز تک اس کو صحیح ، صریح ، مرفوع حدیث سے ثابت کریں ۔ اگر آپ نے پوری زندگی کا عمل دکھایا ہوتا تو احناف کبھی اعتراض نہ کرتے، پہلے آ پ آخری نماز تک اس کو صحیح ، صریح ، مرفوع حدیث سے ثابت کریں۔ پھر آپ ہم سے مطالبہ کر سکتے ہیں، اور جب آپ واقعی سچے ہیں تو حدیث لکھ دیں، لیکن آپ کا آگے سے سوال کرنا یہ ظاہر کرتا ہے کہ آپ کے پاس ٓخری نماز تک کی کوئی دلیل نہیں ہے،
    4۔ سجدوں والی رفع الیدین کی منسوخیت کے دونوں قائل ہیں
    آپ اس بات کے قائل ہیں کہ سجدوں میں رفع الیدین منسوخ ہو گیا اس کی دلیل اور کس اصول کے تحت یہ منسوخ ہوا وہ صحیح ، صریح ، مرفوع حدیث پیش کر دیجیے، ۔

    میں آپ کی حدیث کا منتظر رہوں گا۔۔ پھر کہو ں گا کہ تکلیف تو ہے، لیکن ہماری اصلاح کے لیے۔ والسلام۔
     
  9. ‏نومبر 13، 2012 #19
    گڈمسلم

    گڈمسلم سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 10، 2011
    پیغامات:
    1,407
    موصول شکریہ جات:
    4,907
    تمغے کے پوائنٹ:
    292

    وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ
    کتاب وسنت کے علاوہ ماخذ شریعت کیا ہیں ؟ کہاں کہاں ان کی ضرورت پڑتی ہے اور کیوں پڑتی ہے ؟ اور کون لوگ ہیں جو ان ماخذ شریعت سے استفادہ کا حق رکھتے ہیں۔ یہ سب باتیں خارج از موضوع ہیں۔اگر ان پر بات کرنا چاہتے ہیں تو الگ تھریڈ قائم کرلیں۔
    کیا آپ لوگوں کا منسوخیت کا دعویٰ نہیں ؟
    آپ کی اپنی ہی پوسٹ اس پر شاہد ہے کہ احناف کا عقیدہ یہ ہے کہ آپﷺ نے رفع الیدین کیا اور بعد میں منسوخ ہوگیا۔ ( اگر اپنی کہی ہوئی بات نہیں یاد تو پوسٹ نمبر15 کا مطالعہ فرمالیں۔) تو محترم بھائی آپ کی ہی کہی بات کو آپ مطالبہ سے تعبیر کررہے ہیں؟ ماشاء اللہ
    آپﷺ نے رفع الیدین کیا اس کو آپ لوگ بھی مانتے ہیں اور ہم بھی۔ پھر آپ لوگوں نے اس رفع الیدین کو ترک کیا اس دعوے سے کہ یہ منسوخ ہوگیا ہے۔ تو جناب پھر اس کی دلیل بھی آپ پر آتی ہے۔ اس لیے نوازش ہوگی کہ اگر آپ وہ دلیل ہی ذکر کردیں۔ شکریہ
    ہم سے آپ لوگوں کا مطالبہ بنتا ہی نہیں اور آپ لوگوں کا یوں مطالبہ کرتے جانا بڑے سے بڑے لطیفے سے کم نہیں۔ کیونکہ ایک وقت تک کے رفع الیدین کے آپ بھی قائل اور ہم بھی قائل۔ اختلاف تو آپ لوگوں نے آکر ڈالا کہ رفع منسوخ ہوگیا ہے۔ اب کرنا چھوڑ دو۔ تو جناب جب بیچ میں آکر آپ لوگوں نے دراڑ ڈالیں تو اس دراڑ کی وجہ اور پھر یہ کس دلیل پر ڈالی گئی وہ پیش کرنا آپ پر آتا ہے۔ اس لیے مطالبہ دوبارہ پیش ہے کہ
    کوئی ایسی صریح، صحیح حدیث پیش کریں جس میں لکھا ہو کہ رفع الیدین پہلے کیا جاتا تھا (جس کو آپ بھی مانتے ہیں ) اور پھر یہ رفع اس سبب سے منسوخ ہوگیا ہے۔ منسوخیت پر دلیل پیش کریں۔
    قوی امید ہے کہ اب نہ ادھر ادھر کی باتیں ہونگی اور نہ ٹائم کا ضیاع بہانوں سے کیا جائے گا۔
    دیکھیں محترم پوری زندگی کی بات کچھ وقت کےلیے ایک طرف رکھیں۔ زندگی کے کچھ حصہ میں رفع الیدین کے آپ بھی قائل ہیں اور ہم بھی قائل ہیں۔ رائٹ ؟ آپ لوگوں کا کہنا کہ بعد میں منسوخ ہوگیا۔ اس بات پر شاہد ہے کہ ضرور اس پر کوئی دلیل بھی نازل ہوئی ہوگی۔ اور ساتھ رب تعالیٰ نے رفع الیدین کرنے کے نقصانات اور نہ کرنے کے فوائد بھی بتائے ہونگے۔ اور ظاہر ہے جب آپﷺ نے رفع الیدین کیا تو اس کا لازمی عنصر یہ ہے کہ وہ کچھ وقت کےلیے ہوگا۔ یعنی ایک سال، دو سال، تین سال یا دس سال وغیرہ۔اس عرصہ بعد نہ کرنے کا حکم نازل ہوگیا۔
    اب مسئلہ یہ ہے کہ جس طرح پہلے آپ اس بات کے قائل ہیں کہ آپﷺ نے رفع الیدین کیا۔ تو اسی طرح آپ اس بات کے بھی قائل ہیں کہ یہ رفع منسوخ بھی ہوگیا۔اور ہم لوگ پہلے بھی رفع کے قائل تھے اور اب بھی ہیں۔ کیونکہ ہمارے پاس تو کوئی ایسی دلیل نہیں جس کی بنیاد پہ ہم کہہ سکیں کہ رفع الیدین منسوخ ہوگیا ہے۔ اب یہ منسوخیت کی دلیل آپ کے پاس ہے۔ اور پیش کرنا بھی آپ کی ذمہ داری ہے۔ اس لیے وہ دلیل پیش کرکے ہم پر ایک احسان کریں کہ ہم منسوخ عمل کو چھوڑ دیں۔ اور اپنی نمازوں کو درست کرلیں۔
    جب آپ دلیل پیش فرما دیں گے کہ فلاں وقت میں آپﷺ نے اس رفع سے روک دیا تھا۔تو ظاہر ہے کہ اس کے مابعد زندگی بھی اس رفع سے خالی ہوگی۔ بجائے اس کے کہ آپ ہم سے آخری دم تک کے رفع والی حدیث کا مطالبہ کریں۔ ہم اس بات پر فی الحال آتے ہی نہیں۔ ہم صرف اس وقت تک بات کرتے ہیں جس وقت اس رفع سے روک دیا گیا تھا۔ امید ہے آپ اس بارے اتفاق ہی پیش کریں گے۔
    ایک بات کا جواب آپ سجدوں والی رفع الیدین کے قائل ہیں یا نہیں ؟ کیونکہ میں نے لکھا تھا کہ اس رفع کے ہم بھی قائل نہیں اور آپ بھی قائل نہیں۔ لیکن آپ کی اس عبارت نے مجھے شک میں مبتلا کردیا ہے کہ شاید آپ سجدوں والی رفع کے قائل ہیں۔؟ اس لیے تصدیق مطلوب ہے۔
    اگر آپ قائل ہیں تو پھر آپ قائل کی دلیل پیش کریں گے اور میں منسوخیت کی دلیل پیش کرونگا۔ لیکن اگر آپ بھی منسوخیت کے قائل ہیں تو پھر مجھ سے دلیل کا مطالبہ کچھ نا سمجھ آنے والی بات ہے۔
    پچھلی پوسٹ میں پیش باتوں کا جواب نہیں دیا۔ امید ہے کہ اگلی پوسٹ میں ان باتوں کا جواب ضرور دو گے۔ اور پھر یوں کہنا بہتر رہے گا کہ
    تکلیف تو اٹھانی پڑے گی کسی کی اصلاح کےلیے۔
     
  10. ‏نومبر 14، 2012 #20
    عبد الوکیل

    عبد الوکیل مبتدی
    شمولیت:
    ‏نومبر 04، 2012
    پیغامات:
    142
    موصول شکریہ جات:
    604
    تمغے کے پوائنٹ:
    0

    یاسر بھائی سے گزارش کروں گا کہ باتوں کا سہارا لینے کی بجائے کوءی دلیل پیش فرمائیں
    کیونکہ جو دعوی کرتا ہے دلیل اسی کے ذمے ہوتی ہے
    اس لئے جناب کو کچھ زحمت کرنا پڑے گی
    اور آپ جناب کا دعوی یہ ہے کہ
    رفع الیدین منسوخ ہو چکی ہے
    تو جتنا ممکن ہو جلدی تنسیخ کی کوئی دلیل صحیح مرفوع حدیث سے پیش فرمائیے گا
    مجھے آب کا انتطار رہے گا
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں