1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔۔
  2. محدث ٹیم منہج سلف پر لکھی گئی کتبِ فتاویٰ کو یونیکوڈائز کروانے کا خیال رکھتی ہے، اور الحمدللہ اس پر کام شروع بھی کرایا جا چکا ہے۔ اور پھر ان تمام کتب فتاویٰ کو محدث فتویٰ سائٹ پہ اپلوڈ بھی کردیا جائے گا۔ اس صدقہ جاریہ میں محدث ٹیم کے ساتھ تعاون کیجیے! ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔ ۔

دبئی حکومت کے کارنامے!!

'نفاق' میں موضوعات آغاز کردہ از اویس تبسم, ‏اگست 20، 2015۔

  1. ‏اگست 20، 2015 #1
    اویس تبسم

    اویس تبسم رکن
    جگہ:
    گجرات،پاکستان
    شمولیت:
    ‏جنوری 27، 2015
    پیغامات:
    360
    موصول شکریہ جات:
    131
    تمغے کے پوائنٹ:
    69

    دبئی.png
     
  2. ‏اگست 24، 2015 #2
    جوش

    جوش مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏جون 17، 2014
    پیغامات:
    617
    موصول شکریہ جات:
    307
    تمغے کے پوائنٹ:
    116

    کس کس پر روئیں گے ۔ یہ مسلماں ہیں جنہیں دیکھ کے شرماے یہود
     
    • پسند پسند x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  3. ‏اگست 24، 2015 #3
    اسحاق سلفی

    اسحاق سلفی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    اٹک ، پاکستان
    شمولیت:
    ‏اگست 25، 2014
    پیغامات:
    4,458
    موصول شکریہ جات:
    1,959
    تمغے کے پوائنٹ:
    639

    بلاد المسلمین میں غیر مسلموں کو اپنی عبادت گاہیں بنانے کا حق حاصل نہیں ۔۔نہ ہی اہل اسلام اور انکی حکومت کو یہ اختیار ہے کہ وہ
    مسلمانوں کے ملک میں غیر مسلموں کو اپنی عبادت گاہیں بنانے کی اجازت دیں

    کیونکہ یہ کفر کی ترویج کیلئے تعاون ہے ،اور کفریہ شعائر کے اظہار و قبولیت کا ذریعہ ہے؛
    سعودی علماء کی فتاوی کیلئے مستقل کمیٹی کا فتوی ہے کہ :

    ولهذا أجمع العلماء على تحريم بناء المعابد الكفرية ، مثل : الكنائس في بلاد المسلمين ، وأنه لا يجوز اجتماع قبلتين في بلد واحد من بلاد الإسلام ، وأن لا يكون فيها شيء من شعائر الكفار لا كنائس ولا غيرها ، وأجمعوا على وجوب هدم الكنائس وغيرها من المعابد الكفرية إذا أحدثت في أرض الإسلام ، ولا تجوز معارضة ولي الأمر في هدمها ، بل تجب طاعته ، وأجمع العلماء رحمهم الله تعالى على أن بناء المعابد الكفرية ، ومنها الكنائس في جزيرة العرب ، أشد إثما وأعظم جرما ؛ للأحاديث الصحيحة الصريحة بخصوص النهي عن اجتماع دينين في جزيرة العرب ، منها قول النبي صلى الله عليه وسلم : ( لا يجتمع دينان في جزيرة العرب ) رواه الإمام مالك وغيره وأصله في الصحيحين .
    (اللجنة الدائمة للبحوث العلمية والإفتاء
    الشيخ عبد العزيز بن عبد الله آل الشيخ ، الشيخ عبد الله بن غديان ، الشيخ صالح الفوزان ، الشيخ بكر أبو زيد .
    "فتاوى اللجنة الدائمة" (1/268-471) .
     
    • پسند پسند x 4
    • علمی علمی x 2
    • لسٹ
  4. ‏اگست 24، 2015 #4
    ابو حمزہ

    ابو حمزہ رکن
    شمولیت:
    ‏دسمبر 10، 2013
    پیغامات:
    360
    موصول شکریہ جات:
    136
    تمغے کے پوائنٹ:
    77

    السلام علیکم
    مودی نے یہ دورہ پاکستان کے حالات کے لئے کیا تھا یہاں ایک سندہی اخبار کاوش جو کہ سندہی زبان میں پاکستان کا مایہ ناز اخبار ہے اور اس کی صحافت بھی جنگ نیوز کے ہم پلہ ہے اس خبار کے مالکان شیعہ ہیں اور اس کے زیادہ تر ایڈیٹر وغیرہ بھی شیعہ ہیں۔ اسی میں کل ایک خبر چھپی جو یہ ہے
    "
    مودی نے متحدہ عرب امارات کے شیوخ کو کہا کہ وہ سعودیہ سے بات کریں اگر عرب ممالک پاکستان کا ستھ چھوڑیں اور اسے سپوڑٹ نہ کریں اور انڈیا کو عالمی لیول پر سپورٹ کریں تو انڈیا یمن جنگ میں ان کی نہ صرف اسٹریتیجک بلکہ فوجی مدد بھی کرے گا ۔ جس پر متحدہ عرب امارات تو فورن تیار ہوگئے اور انہوں نے سعودیہ سے با ت کرنی کی حامی بھی بھر لی اور اسے منانے کا وعدہ بھی کرلیا۔ لیکن سعودیہ کے حکام نے سیدہا انکار کردیا کہ وہ پاکستان مخالف کسی اتحاد یا کسی عمل میں شامل نہیں ہونگے اور پاکستان کو سپورٹ کرتے رہیں گے اور یہ بات سعودی حکام نے پاکستانی اعلی قیادت کو بھی پھنچا دی ہے۔

    متحدہ عرب امارات کا کردار کچھ مشکوک لگ رہا ہے یہ اخبار لکھتا ہے کہ اس کاسبب گوادر پورٹ ہے اور آگے لکھتا ہے کہ امریکا نے ایران کی شرائط پر ہی ایران سے جلدی میں ایک مہائدہ کرلیا اور فرانس و جرمنی کے شرط کہ ایران حزب اللہ کی حمایت ترک کرے امریکا نے ویٹو کردیا یہ جلد بازی صرف اور صرف چائنہ کی گوادر اور پاکستان مین انویسٹ پر کیا گیا اب انڈیا ، امریکا ، ایران اور کچھ عرب مملک ایرانی بندر چاہ بہار کو آگے بڑہانا چاہتے ہیں بحر حال اس ساری صورتحال میں ہماری افواج تو چوکس ہیں اور انہیں اندازہ ہے کہ پاکستان کو تین فرنٹ پر گھیرہ ڈالنے کی سازش شروع کی گئی ہے ۔لیکن اسی اخبار کے کالم نگار لکھتے ہیں کہ کچھ سیاسی جماعتی اس عالمی صورتحال کا فائدہ اٹھانے کے چکر میں ہیں اور اس سے مارشل لا بھی لگ سکتا ہے کیوں کہ ہر ریاست کے لئے سب سے زیادہ اہم اس کی بقا ہے۔ اور یقنن پاکستان کو خطرات ہیں۔

    اب اللہ تعالی ان سیاسی جماعتوں کو عقل دے۔ میرے خیال سے یہ دو بڑی پارٹیاں ہوسکتی ہین۔
     
    • معلوماتی معلوماتی x 3
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  5. ‏اگست 24، 2015 #5
    بہرام

    بہرام مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 09، 2011
    پیغامات:
    1,173
    موصول شکریہ جات:
    434
    تمغے کے پوائنٹ:
    132

    امام بخاری کے مطابق رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی امت کوآخری کو وصیت
    رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا
    قال ـ أخرجوا المشركين من جزيرة العرب،‏‏‏‏

    مشرکوں کو جزیرہ عرب سے نکال دینا
    صحیح بخاری ،حدیث نمبر : 3168

    لیکن جزیرہ عرب کے اس قبضہ گروپ نے اس فرمان مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو یکسر نظر انداز کیا ہوا ہے مشرکین کو جزیرہ عرب میں آباد کر رہے ہیں اور ان کے مندروں کےلئے زمین اور فنڈ بھی فراہم کررہے ہیں اللہ ان کو ھدایت دے
     
    • متفق متفق x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  6. ‏اگست 24، 2015 #6
    بہرام

    بہرام مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 09، 2011
    پیغامات:
    1,173
    موصول شکریہ جات:
    434
    تمغے کے پوائنٹ:
    132

    امام بخاری کے مطابق رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی امت کوآخری کو وصیت
    رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے ارشاد فرمایا
    قال ـ أخرجوا المشركين من جزيرة العرب،‏‏‏‏

    مشرکوں کو جزیرہ عرب سے نکال دینا
    صحیح بخاری ،حدیث نمبر : 3168

    لیکن جزیرہ عرب کے اس قبضہ گروپ نے اس فرمان مصطفیٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو یکسر نظر انداز کیا ہوا ہے مشرکین کو جزیرہ عرب میں آباد کر رہے ہیں اور ان کے مندروں کےلئے زمین اور فنڈ بھی فراہم کررہے ہیں اللہ ان کو ھدایت دے
     
  7. ‏اگست 30، 2015 #7
    قاھر الارجاء و الخوارج

    قاھر الارجاء و الخوارج رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 13، 2014
    پیغامات:
    393
    موصول شکریہ جات:
    235
    تمغے کے پوائنٹ:
    71

    بہرام صاحب آپ کو کیا اعتراض ہو گیا؟؟؟
    آپ ہی کے بھائیوں کو اجازت دی ہے کہیں یہ تو نہیں کہ حب علی نہیں بغض معاویہ ہے
    مشرک تو آپ بھی ہیں بلکہ مفتی اعظم کے بقول تو کافر اصلی ہیں عبادت خانے تو جناب کے بھی کھلے ہیں ویسے کبھی وہ ابولولو فیروز مجوسی کے حرم؟؟؟ پر بھی تبصرہ کر دیجئے
    ویسے یہ جزیرہ عرب کی حدود کا بھی تعین کر دیجئے گا
     
    • پسند پسند x 2
    • زبردست زبردست x 2
    • لسٹ
  8. ‏اگست 31، 2015 #8
    salfisalfi123456

    salfisalfi123456 مبتدی
    شمولیت:
    ‏اگست 13، 2015
    پیغامات:
    84
    موصول شکریہ جات:
    39
    تمغے کے پوائنٹ:
    6

    uploadfromtaptalk1440991352373.jpeg بہرام صاحب یہ کیا ہے آپ کے وطن عزیز ایران کی پارلیمنٹ میں تو یہود بے بہبود ممبر ہیں پر سنیوں پر پابندی یہ کس ارشاد نبوی کی پاسداری ہے؟
     
  9. ‏اگست 31، 2015 #9
    ابو حمزہ

    ابو حمزہ رکن
    شمولیت:
    ‏دسمبر 10، 2013
    پیغامات:
    360
    موصول شکریہ جات:
    136
    تمغے کے پوائنٹ:
    77

    السلام علیکم بھائی
    جزیرہ عرب تین اطراف سے سمندر سے گہرا ہے اس کے ایک طرف عراق ہے اور دوسری طرف اردن ، شام و فلسطین کا علائقہ لیکن کچھ علماء عراق کا کچھ حصہ جو عرب کے ساتھ جس میں عربوں کی مملکت کا وجود بھی تھا اور اردن کو جزیرہ العرب میں شامل کرتے ہیں لیکن بحرحال دبئی جزیرہ عرب کا حصہ ہے جو کہ خالصن عربی علائقہ ہے
     
  10. ‏اگست 31، 2015 #10
    ابن آدم

    ابن آدم سینئر رکن
    جگہ:
    پاکستان
    شمولیت:
    ‏جنوری 09، 2011
    پیغامات:
    172
    موصول شکریہ جات:
    445
    تمغے کے پوائنٹ:
    139

    اسی بات پہ ہی اسامہ بن لادن رحمۃ اللہ علیہ نے عربوں سے اختلاف کیا تھا
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں