1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

سیدہ عائشہ صدیقہ رضی اللہ عنہا کی عمر پر اعتراضات کیوں ؟؟؟

'انکار حدیث' میں موضوعات آغاز کردہ از رفیق طاھر, ‏ستمبر 04، 2011۔

  1. ‏اکتوبر 24، 2015 #71
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,538
    موصول شکریہ جات:
    731
    تمغے کے پوائنٹ:
    276

    جزاک اللہ یوسف بهائی ، صحیح نبض پکڑی آپ نے ۔ یہ کیسی عقل لڑا رهے هیں اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کے عمل پر ! اللہ نے جنهیں آسمانوں کی سیر کروائی ، انبیاء کی جنهوں نے امامت فرمائی ۔ اللہ نے قرآن میں جنکی مدح خود بیان فرمائی ۔ رحمة للعالمین جنہیں قرآن نے کہا اور یہاں ان کی ذات اقدس پر سوالات اٹہانیوالے کون هیں؟ حوض کوثر جنہیں دیا گیا ، وہ کسی چیز کی خواہش رکہیں اور اللہ نہ دے؟ اللہ کی عطاء پر بهی اعتراض؟ آخر کس گمان میں ہیں؟ اسی اللہ سے خود اپنی بخشش مانگتے تو هونگے !
    موجودہ پرفتن دور کا موازنہ اس دور سے نہ کریں نہ هی اپنے گهر اور گهرانے کا موازنہ اس مقدس ترین گهر اور مقدس ترین گهرانے سے کریں ۔ معاملہ خالصتا اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم کا هے ، صد هزار احتیاط کے بعد اپنی زبان اور قلم کو جنبش دیں ۔ یقینا اللہ سخت گرفت کرنیوالا هے ۔
    اللہ اس امت کی حفاظت فرمائے ۔ آمین
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  2. ‏اکتوبر 24، 2015 #72
    lovelyalltime

    lovelyalltime سینئر رکن
    جگہ:
    سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏مارچ 28، 2012
    پیغامات:
    3,735
    موصول شکریہ جات:
    2,842
    تمغے کے پوائنٹ:
    436


    ترمذی میں عائشہ رضی الله عنہا کا قول ہے

    وَاحْتَجَّا بِحَدِيثِ عَائِشَةَ أَنَّ النَّبِيَّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ بَنَى بِهَا وَهِيَ بِنْتُ تِسْعِ سِنِينَ وَقَدْ قَالَتْ عَائِشَةُ: ” إِذَا بَلَغَتِ الجَارِيَةُ تِسْعَ سِنِينَ فَهِيَ امْرَأَةٌ
    الألباني في إرواء الغليل: 1/199 إنه موقوف على عائشة.

    جب لڑکی نو سال کی ہو تو وہ بالغ ہے


    بنو قریظہ کے فیصلے کے وقت ١٤ سال تک کے لڑکے کو قتل کر دیا گیا

    لیکن یہ فیصلہ بلوغت کی وجہ سے شرم گاہ کے بال دیکھ کر کیا


    یہودیوں میں ١٣ سال کا لڑکا بالغ ہوتا ہے

    لہذا بنو قریظہ کے مردوں ١٤ سال تک کے لڑکوں کو قتل کر دیا گیا


    لڑکی کی بلوغت اس عمر سے کم ہو گی

    لڑکیاں لڑکوں سے پہلے بالغ ہو جاتی ہیں لہذا بلوغت کی عمر ٩ سے ١٤ کے درمیان ہوئی
    ٩ سال کم از کم عمر ہے


    امام احمد اور اسحاق سے پوچھا گیا کہ لڑکی کو کب محرم کی ضرورت ہے

    مسائل الإمام أحمد بن حنبل وإسحاق بن راهويه

    المؤلف: إسحاق بن منصور بن بهرام، أبو يعقوب المروزي، المعروف بالكوسج (المتوفى: 251هـ)

    قلت: الجارية متى تحتاج إلى محرم؟

    قال: إذا كان مثلها تُشتَهى، بنت تسعٍ امرأة


    کہا نو سال کی جب ہو


    امام احمد یہ بھی کہتے ہیں

    ولا أرى للرجل أن يدخل بها إذا زوجت وهي صغيرة دون تسع سنين


    اور میں نہیں دیکھتا کہ کوئی شخص شادی کے بعد تعلق قائم کرے اور وہ نو سال سے چھوٹی ہو

    ——
    كشاف القناع عن متن الإقناع
    المؤلف: منصور بن يونس بن صلاح الدين ابن حسن بن إدريس البهوتى الحنبلى (المتوفى: 1051هـ)

    ابن عقیل کہتے ہیں

    وَذَكَرَ ابْنُ عَقِيلٍ أَنَّ نِسَاءَ تِهَامَةَ يَحِضْنَ لِتِسْعِ سِنِينَ


    تہامہ کی عورتوں کو نو سال میں ہی حیض آ جاتا ہے


    اب اس کا تعلق آب و ہوا اور غذا سے ہوا کہ کوئی لڑکی پہلے بالغ ہو گی اور کوئی ہو سکتا ہے ١٤ سال کے بھی بعد ہو لہذا نو سال کا تعین نہیں کرنا چاہیے کہ نو سال کی ہوئی اور اس کو بالغ سمجھا جانے لگا
    یہ غلط ہو گا

    عائشہ رضی الله عنہا کی شادی کی نو سال میں ہوئی اس کی وجہ ایک غیبی اشارہ تھا جو خواب کی صورت نبی صلی الله علیہ وسلم نے دیکھا یہ ایک خاص واقعہ تھا ورنہ رسول الله کو کپڑے میں لپٹی ایک بچی نہ دکھائی جاتی

    دوم اگر ان کی عمر ١٩ سال ہوتی تو کوئی تردد بھی نہیں ہوتا اور رسول الله صلی الله علیہ وسلم کو غیبی اشارہ بھی نہیں دیا جاتا
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں