1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

لفظ ’محبت‘ کا صحیح تلفظ

'بلاغت' میں موضوعات آغاز کردہ از مفتی عبداللہ, ‏جنوری 06، 2012۔

  1. ‏جنوری 25، 2012 #11
    یوسف ثانی

    یوسف ثانی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    پاکستان
    شمولیت:
    ‏ستمبر 26، 2011
    پیغامات:
    2,760
    موصول شکریہ جات:
    5,268
    تمغے کے پوائنٹ:
    562

    دخل در معقولات کی معذرت ۔ اب اسی لفظ ’’استاذ‘‘ کو دیکھ لیجئے۔ اردو زبان و ادب میں یہ ’’استاد‘‘ ہی لکھا، پڑھا جاتا ہے۔ اور اس کا مآخذ ہندی بتلاتے ہیں۔ مگر اسی ’’استاد‘‘ لفظ کی جمع ’’اساتذہ‘‘ لکھتے ہیں اوراس کا مآخذ عربی بتلاتے ہیں۔ زبانوں میں اس قسم کی اُلٹ پھیر بہت عام ہے جیسے کسی نے کیا خوب کہا ہے کہ ع

    پی ۔ یو۔ ٹی ۔ پُٹ ہے تو بی ۔ یو۔ ٹی ۔ بَٹ ہے

    زمانے کا دستور کتنا اُلَٹ ہے​


    P+U+T= پُٹ ہے تو B+U+T= بَٹ ہے
    زمانے کا دستور کتنا اُلَٹ ہے
     
    • شکریہ شکریہ x 5
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  2. ‏جنوری 25، 2012 #12
    انس

    انس منتظم اعلیٰ رکن انتظامیہ
    جگہ:
    لاہور
    شمولیت:
    ‏مارچ 03، 2011
    پیغامات:
    4,177
    موصول شکریہ جات:
    15,224
    تمغے کے پوائنٹ:
    800

    یوسف بھائی!
    سب سے پہلے معذرت کے ساتھ میرا نام ’انس نضر‘ ہے، انس خضر نہیں۔ (ابتسامہ)

    میری رائے میں اس لفظ کو اردو میں حقیقت میں کیسے بولا جاتا ہے، اس کیلئے انگلش ٹو ڈکشنریز کی بجائے اصل اردو لغت کی کتابیں دیکھنی چاہئیں، آپ نے crulp کا جو لنک دیا ہے، اس میں بھی یہ لفظ میم کی پیش کے ساتھ ساتھ میم کی زبر کے ساتھ بھی لکھا ہوا ہے۔ اگر اس حوالے سے اصل مصادر کا حوالہ ملے تو زیادہ مفید ہوگا۔ ویسے میں نے جن لغات کا حوالہ دیا ہے، ان میں ایک جگہ بھی یہ لفظ میم کی پیش کے ساتھ نہیں لکھا ہوا۔

    ویسے بھی ایک دو الفاظ کی بجائے اصول پر بات ہونی چاہئے، اگر یہی اصول اپنا لیا جائے تو عربی کے ہزاروں الفاظ (اسم فاعل، اسم مفعول، ظرف اور مصادر وغیرہ) اردو میں استعمال ہوتے ہیں، سب کو اگر ہمارے اردو والے عربی نہ جاننے کی وجہ سے غلط بولیں گے تو یہی غلط العام حجت بن جائے گا۔
     
  3. ‏جنوری 25، 2012 #13
    انس

    انس منتظم اعلیٰ رکن انتظامیہ
    جگہ:
    لاہور
    شمولیت:
    ‏مارچ 03، 2011
    پیغامات:
    4,177
    موصول شکریہ جات:
    15,224
    تمغے کے پوائنٹ:
    800

    میری لائبریری سے مراد 99 جے ماڈل ٹاؤن میں ہماری اصل لائبریری ہے، نہ کہ کتاب وسنت آن لائن لائبریری
     
  4. ‏جنوری 25، 2012 #14
    خضر حیات

    خضر حیات علمی نگران رکن انتظامیہ
    جگہ:
    طابہ
    شمولیت:
    ‏اپریل 14، 2011
    پیغامات:
    8,768
    موصول شکریہ جات:
    8,334
    تمغے کے پوائنٹ:
    964

    اردو کی ایک اور لغت ’’ فرہنگ آصفیہ ‘‘ اردو دان حضرات کو سنا ہے اس کی کافی تعریف وتوصیف کرتے ہیں ۔ اصل حقیقت کا تو مجھے پتہ نہیں کہ یہ مستند ہے کہ نہیں ۔ بلکہ اس بارے میں اہل علم کی آراء کا انتظار رہے گا ۔

    لفظ محبت اس میں بھی میم کی زبر کے ساتھ لکھا ہوا ملاحظہ فرمائیں (صفحہ ٣٠٣ مادہ ( محب ) جلد نمبرچہارم ) ( مطبع رفاہ عام پریس لاہور ١٩٠٨ء )
     
  5. ‏جنوری 04، 2013 #15
    مرزا عمر علی

    مرزا عمر علی مبتدی
    شمولیت:
    ‏جنوری 04، 2013
    پیغامات:
    2
    موصول شکریہ جات:
    5
    تمغے کے پوائنٹ:
    0

    حضرت لفظ کس زبان کا ہے تفصیل درکار ہے۔مرزا عمر علی
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں