1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔۔
  2. محدث ٹیم منہج سلف پر لکھی گئی کتبِ فتاویٰ کو یونیکوڈائز کروانے کا خیال رکھتی ہے، اور الحمدللہ اس پر کام شروع بھی کرایا جا چکا ہے۔ اور پھر ان تمام کتب فتاویٰ کو محدث فتویٰ سائٹ پہ اپلوڈ بھی کردیا جائے گا۔ اس صدقہ جاریہ میں محدث ٹیم کے ساتھ تعاون کیجیے! ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔ ۔

کاش میں میلاد کو بدعت کہنے سے پہلے یہ پڑھ لیتا؟

'بدعت' میں موضوعات آغاز کردہ از اقبال ابن اقبال, ‏جنوری 27، 2013۔

  1. ‏جنوری 30، 2013 #11
    مشہودخان

    مشہودخان مبتدی
    جگہ:
    جے پور
    شمولیت:
    ‏جنوری 12، 2013
    پیغامات:
    48
    موصول شکریہ جات:
    95
    تمغے کے پوائنٹ:
    0

    دونوں کی پول کھلی اللہ کرے اور پول کھلے
     
  2. ‏جنوری 30، 2013 #12
    گڈمسلم

    گڈمسلم سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 10، 2011
    پیغامات:
    1,407
    موصول شکریہ جات:
    4,904
    تمغے کے پوائنٹ:
    292

    تو جب وارثِ دین محمدیﷺ کسی کا پول کھول کر رکھ دیتے ہیں تو کیا آپ پھر بھی تسلیم کرتے ہوئے بھی تسلیم نہیں کرتے؟ یہ تلاش حق تو نہ ہوا ناں محترم المقام مشہود خاں صاحب
     
  3. ‏جنوری 30، 2013 #13
    مشوانی

    مشوانی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 06، 2012
    پیغامات:
    68
    موصول شکریہ جات:
    302
    تمغے کے پوائنٹ:
    44

    اگر علماء چند علماء کے ا قول کو ہی حجت قرار دیتے ہیں، تو پھر ان علماء کے قول کا بھی ذکر کریں نہ جنہوں نے میلاد کو بدعت کہا ہے اور اسکے خلاف لکھا ہے- بھائی یہ دوغلا پن کیوں؟
    اور لگتا یہ ہے کہ آپنے شتر مرغ کی طرح سر ریت کے اندھر کر لیا ہے، اور ان علماء کے اقوال کو جان بھوج کر نظر انداز کر لیا ہے جنہوں نے میلاد کی نفی کی ہے-

    تو رہی بات علماء کرام کی تو میں اسکا جواب امام ملک کے قول سے دونگا-

    امام مالکؒ نے فرمایا:
    " ہر شخص کے قول کو قبول یا مسترد کیا جا سکتا ہے ما سوا ۓ اسکے، (اور امام مالک نے رسول الله صلی الله علیہ وسلم کی قبر کی طرف اشارہ کیا-)
    [الاحکام فی اصول الاحکام]-


    تو اب یہ جاننا ہے کہ اگر ایک قول کو رد کرنا ہے تو اسکے اصول کیا ہیں، ہمیں کسطرح پتہ چلے گا کہ کون صحیح کہ رہا ہے- اصول خود الله اور نبی صلی الله علیہ وسلم نے بیان کر دیے ہیں-

    الله فرماتا ہے:
    يٰٓاَيُّھَا الَّذِيْنَ اٰمَنُوْٓا اَطِيْعُوا اللّٰهَ وَاَطِيْعُوا الرَّسُوْلَ وَاُولِي الْاَمْرِ مِنْكُمْ ۚ فَاِنْ تَنَازَعْتُمْ فِيْ شَيْءٍ فَرُدُّوْهُ اِلَى اللّٰهِ وَالرَّسُوْلِ اِنْ كُنْتُمْ تُؤْمِنُوْنَ بِاللّٰهِ وَالْيَوْمِ الْاٰخِرِ ۭ ذٰلِكَ خَيْرٌ وَّاَحْسَنُ تَاْوِيْلًا
    مومنو! خدا اور اس کے رسول کی کی فرمانبرداری کرو اور جو تم میں سے صاحب حکومت ہے ان کی بھی اور اگر کسی بات میں تم میں اختلاف واقع ہو تو اگر خدا اور روز آخرت پر ایمان رکھتے ہو تو اس میں خدا اور اسکے رسول کے حکم کی طرف رجوع کرو اور یہ بہت اچھی بات ہے اور اس کا انجام بھی اچھا ہے-
    [سورہ النساء آیت ٥٩].


    رسول الله صلی الله علیہ وسلم کا فرمان ہے:
    میں تمھیں الله سے ڈرنے کا حکم دیتا ہوں، اور ا پنے حاکم کو سننے اور ماننے کی وصیت کرتا ہوں خواہ تمہارا حاکم حبشی غلام ہی کیوں نہ ہو۔ اس لیے کہ تم میں سے جو زندہ رہے گا وہ بہت سے اختلاف دیکھے گا۔ پس جو شخص تم میں سے میرے بعد زندہ رہے گا تو عنقریب وہ بہت زیادہ اختلافات دیکھے گا پس تم پر لازم ہے کہ تم میری سنت اور خلفائے راشدین میں جو ہدایت یافتہ ہیں کی سنت کو پکڑے رہو اور اسے نواجذ (ڈاڑھوں) سے محفوظ پکڑ کر رکھو اور دین میں نئے امور نکالنے سے بچتے رہو کیونکہ ہرنئی چیز بدعت ہے اور ہر بدعت گمراہی ہے۔ [ابو داود، ترمزی]-


    تو اس میلاد کے معاملے اور جو لوگ اسکی حمایت کرتے ہیں، انکو انہی اصولوں کے سامنے رکتھے ہیں-
    • کیا الله نے قرآن میں میلاد منانے کا حکم دیا؟ [نہیں]
    • کیا اسکے رسول الله صلی الله علیہ وسلم نے کبھی خود میلاد منایا؟ [نہیں]
    • کیا کسی حدیث میں اسکا ذکر ہے؟ [ نہیں]
    • کیا خلفائے راشدہ نے جشن میلاد منایا ؟ [نہیں]
    • کیا کسی اور صحابی نے جشن میلاد منایا ؟ [نہیں]


    اب ایک قدم اور آگے چلتے ہیں-

    • کیا تابعین نے جشن میلاد منایا ؟ [نہیں]
    • کیا طبع تابعین نے جشن میلاد منایا ؟ [نہیں]
    • کیا آئمہ اربعہ ( امام ابو حنیفہ،مالک،شافی،حنبل رحم الله عنھم) نے جشن میلاد منایا؟ [نہیں]
    • کیا امام بخاری،مسلم،ابو داؤد،ترمزی،نسائی وغیرہ نے میلاد منایا؟ [نہیں]

    تو پس جو کوئی بھی دعوی کرتا ہے کہ انہوں نے( جں کا ذکر اوپر کیا گیا ہے) میلاد منایا تو الله اور اسکے رسول صلی الله علیھ وسلم کی دی گیئ اصول کے مطابق دلیل لے کر آیے- جس طرح الله فرماتا ہے-
    اگر سچے ہو تو اپنی دلیل لاؤ [سورہ نمل آیت 64 ]-


    ایک فورم میں آپ ہی کے طبقے کے ایک بھائی نے دعوی کیا تھا کہ الله نے خود میلاد منایا- جس دن رسول الله صلی الله علیہ وسلم کی پیدائش ہوئی، تو اس وقت دنیا میں جتنی عورتیں خمل سے تھی الله نے میلاد کی خوشی میں بیٹے عطا فرمائیں- میں نے ان سے اس کا حوالہ پوچھا لیکن ابھی تک نہی ملا- اگر آپ کے پاس ہو تو برایے مہربانی ہمارے علم میں اضافہ کر دیں-
    شکریہ-
     
  4. ‏جنوری 30، 2013 #14
    حرب بن شداد

    حرب بن شداد سینئر رکن
    جگہ:
    اُم القرٰی
    شمولیت:
    ‏مئی 13، 2012
    پیغامات:
    2,148
    موصول شکریہ جات:
    6,243
    تمغے کے پوائنٹ:
    437

    جواب ؟؟؟ یہ خود ایک سوال ہے۔۔۔
    کے آئے نہ آئے۔۔۔ ہاں کوئی قصہ، کوئی خواب، کوئی واقعہ، کوئی تاویل کے قوی اُمید ہے کے آجائے۔۔۔
     
  5. ‏دسمبر 06، 2016 #15
    خاورنذیر

    خاورنذیر مبتدی
    شمولیت:
    ‏نومبر 21، 2016
    پیغامات:
    1
    موصول شکریہ جات:
    0
    تمغے کے پوائنٹ:
    20

     
  6. ‏دسمبر 06، 2016 #16
    ابن داود

    ابن داود سینئر رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    2,595
    موصول شکریہ جات:
    2,429
    تمغے کے پوائنٹ:
    489

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    وہ صاحب کہ جن کا یہ مراسلہ تھا، یا آپ ہی کہ جس نے اسے نقل کیا ہے، وہ بدعت، عبادت اور معاملات کی تعریف رقم کر دے، تا کہ معلوم ہو کہ کن امور کو بدعت کہا جاتا ہے اور کون سی بدعات کی شرعی تعریف میں نہیں ہیں!
     
    • پسند پسند x 1
    • متفق متفق x 1
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
  7. ‏مئی 03، 2017 #17
    ابن طاھر

    ابن طاھر رکن
    جگہ:
    دبئ
    شمولیت:
    ‏جولائی 06، 2014
    پیغامات:
    114
    موصول شکریہ جات:
    46
    تمغے کے پوائنٹ:
    61

    ایک پرانے سلسلے کو فعال کرنے کے لئے پیشگی معذرت ۔۔۔۔۔۔مقصد یہ ہےکہ
    ’’ کڑوی تحریر کا مجموعہ ‘‘ والا سلسلے کا لنک ٹوٹ چکا ہے یا دستیاب نہیں ہے. اگر کوئی اس لنک کو ٹھیک کر سکے۔ جزاک الله خیرا۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں