1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

کیا کوئی تبلیغی ، دیوبندی ، بریلوی مجھےبتا سکتا ہے کہ لفظ (غیر مقلد) کا کیا مطلب ہوتا ہے ؟؟؟

'تبلیغی جماعت' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد عامر یونس, ‏اگست 24، 2015۔

  1. ‏اگست 24، 2015 #1
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,971
    موصول شکریہ جات:
    6,508
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    کیا کوئی تبلیغی ، دیوبندی ، بریلوی مجھے بتا سکتا ہے کہ لفظ (غیر مقلد) کا کیا مطلب ہوتا ہے ؟؟؟
     
  2. ‏اگست 24، 2015 #2
    بہرام

    بہرام مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 09، 2011
    پیغامات:
    1,173
    موصول شکریہ جات:
    434
    تمغے کے پوائنٹ:
    132

    اگر کسی اللہ کے بندے نے اس کا مطلب بتا بھی دیا تو آپ نے ماننا کہاں ہے ! آپ نے تو فورا اپنے" امام " اسحاق سلفی کو ٹیگ کرنا ہے اور ان سے پوچھنا ہے کہ یا امام اسحاق سلفی اس بارے میں آپ کی کیا رائے جو رائے آپ کی ہو وہی میں اختیار کروں مقلد آپ کا ہوں تو میں کسی اور کی بات کیوں مانوں ؟
    اس لئے بہتر ہے کہ آپ اس سوال کے لئے اسحاق سلفی کو ہی ٹیگ کردیں شکریہ
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
  3. ‏اگست 24، 2015 #3
    ابن داود

    ابن داود فعال رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    3,313
    موصول شکریہ جات:
    2,651
    تمغے کے پوائنٹ:
    556

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    کیونکہ ''امام اسحاق سلفی'' اپنے اٹکل پچّو سے مراسلہ نہیں لکھا کرتا، بلکہ دلیل سے اپنے مؤقف کو مزین کرتا ہے!
    لیکن بہر حال آپ کو معلوم بھی ہے کہ آپ کی دال نہیں گلنی، مگر پھر بھی کیا کہتے ہیں پنجابی میں''لچ تلنا'' بھی تو لازمی تھا!
     
    • پسند پسند x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • زبردست زبردست x 1
    • لسٹ
  4. ‏اگست 24، 2015 #4
    بہرام

    بہرام مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 09، 2011
    پیغامات:
    1,173
    موصول شکریہ جات:
    434
    تمغے کے پوائنٹ:
    132

    یہ تو آپ کا حسن ظن ہے !!
     
  5. ‏اگست 24، 2015 #5
    یوسف ثانی

    یوسف ثانی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    پاکستان
    شمولیت:
    ‏ستمبر 26، 2011
    پیغامات:
    2,760
    موصول شکریہ جات:
    5,268
    تمغے کے پوائنٹ:
    562

    برادرم @محمد عامر یونس
    السلام علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ
    کیسے مزاج ہیں۔ امید ہیں خیریت سے ہوں گے۔ اگر برا نہ مانیں تو آپ کو ایک مشورہ دینا چاہوں گا۔ بحث مباحثہ، مناظرہ اور مکالمہ آپ کی شخصیت کے ”شایانِ شان“ نہیں ہے ۔ میرا مخلصانہ مشورہ ہے کہ آپ ان امور سے دور بہت دور رہیں۔ آپ زیادہ سے زیادہ یہ کیا کریں کہ ”کرنٹ موضوعات“ پر قرآن و حدیث پر مبنی تحریریں شیئر (کاپی پیسٹ) کر لیا کریں۔ لیکن یہ بھی اتنی زیادہ نہ ہو کہ آپ کو نوٹس ملنے لگے۔ امید ہے کہ آپ میری گذارشات پر ہمدردی سے غور کریں گے۔

    والسلام آپ کا خیر خواہ
    آپ کا بھائی ۔ یوسف
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  6. ‏اگست 24، 2015 #6
    بہرام

    بہرام مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 09، 2011
    پیغامات:
    1,173
    موصول شکریہ جات:
    434
    تمغے کے پوائنٹ:
    132

    انتہائی مفید مشورہ ہے
     
  7. ‏اگست 24، 2015 #7
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,971
    موصول شکریہ جات:
    6,508
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ و برکاتہ :

    میرے بھائی بندہ اس طرح سیکھتا ہے جب تک میں اس فیلڈ میں جدوجہد نہیں کروں گا تو سیکھو گا کیسے اور رہی دوسری بات قرآن و حدیث پر مبنی تحریریں شیئر (کاپی پیسٹ) کرنے کی ۔ میرے بھائی اگر میں قرآن و صحیح حدیث کاپی پیسٹ کروں تو آپ نے کون سا مان لینا ہے -

    میرے سمجھ میں یہ نہیں آتا کہ مقلدین بھائیوں کو کاپی پیسٹ سے کیوں تکلیف ہوتی ہے -

    میرے بھائی میں جو بات نقل یا آپ اسے کاپی پسٹ کہہ لے وہ میں قرآن و صحیح حدیث ہی سے پیش کروں گا نا کہ اپنی عقل سے-


    @یوسف ثانی بھائی اگر آپ کے سامنے صحیح حدیث پیش کی جائے تو کیا آپ اس کو قبول کر لے گے ؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟؟
     
  8. ‏اگست 24، 2015 #8
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,971
    موصول شکریہ جات:
    6,508
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069


    اللہ سبحان و تعالیٰ نے ھم سب کو حکم دیا ہے

    سورہ النحل کی آیت نمبر ۴۳ (اگر تمھیں معلوم نہیں تو اہل علم سے پوچھ لو)

    لہذا میں اگر ایسے شخص کو ٹیگ کروں جو قرآن و سنت کا زیادہ علم رکھتا ہو جو اپنی خواہش سے بات نہ کرتا ہو - جو اندھی تقلید نہ کرتا ہو - بلکہ حق بات کہنے والا ہو اور اگر اس کے سامنے حق آ جائے تو وہ اس کو قبول کرنے والا ہو -

    @یوسف ثانی بھائی :

    اگر وہ قرآن و سنت سے ھم سب کی رہنمائی کرے تو کیا یہ غلط ہے ؟؟؟؟
     
  9. ‏اگست 25، 2015 #9
    یوسف ثانی

    یوسف ثانی فعال رکن رکن انتظامیہ
    جگہ:
    پاکستان
    شمولیت:
    ‏ستمبر 26، 2011
    پیغامات:
    2,760
    موصول شکریہ جات:
    5,268
    تمغے کے پوائنٹ:
    562

    @اسحاق سلفی صاحب کا شمار نہ صرف یہ کہ فورم کے اہل علم افراد میں ہوتا ہے، بلکہ ان کی ایک بڑی اور اہم خوبی یہ ہے کہ آپ پوچھے گئے سوالات کا فوری جواب عنایت کرتے ہیں، جو کسی بھی علمی فورم کی بنیادی ضرورت ہے۔ اللہ تعالیٰ انہیں اس خدمت کا اجر دے اور انہیں یہ خدمت انجام دیتے رہنے کی توفیق دے ۔ آمین

    برادر @محمد عامر یونس ! آپ میرے مشورہ کو دوبارہ پڑھئے۔ اگر سمجھ آجائے تو اس پر عمل کیجئے۔ بصورت دیگر اپنا مشغلہ جاری رکھئے۔ مانو نہ مانو جان جہاں اختیار ہے ؛ ہم نیک و بد حضور کو سمجھائے جاتے ہیں۔
     
  10. ‏اگست 25، 2015 #10
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    16,971
    موصول شکریہ جات:
    6,508
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    السلام علیکم بھائی :

    میرا مقصد بھی صرف یہ ہے کہ حق بات لوگوں تک پہنچ جائے اور باطل کے غلط عقیدیوں کا رد بھی ہو جائے - اور بھائی میں تو ایک عدنہ سا طالب علم ہو - اس لئے اہل علم کی طرف ٹیگ کر دیتا ہو -

    اور دوسری بات کیا دین کی بات لوگوں تک پہنچانا مشغلہ ہے ؟؟؟؟؟

    ایک بات اپنے آپ سے اور آپ سب سے گزارش کرنی ہے کہ بھائی جب بھی ھمارے سامنے قرآن و صحیح حدیث آئے تو ھم اس کو قبول کر کے عمل کرنے والے بنے -


    قرآن و سنت سامنے آ جانے کے بعدحضرت عمر بن خطاب رضى اللہ تعالى عنہ کا اپنے قول سے رجوع

    عمر بن خطاب رضى اللہ تعالى عنہ سے مروى ہے كہ جب انہوں نے چار سو درہم سے زيادہ مہر ركھنے سے منع كيا تو ايك قريشى عورت كہنے لگى:

    اے امير المومنين آپ لوگوں كو چار سو درہم سے زيادہ مہر ركھنے سے منع كر رہے ہيں كيا آپ نے اللہ عزوجل كا يہ فرمان نہيں پڑھا:

    ﴿ اور تم نے انہيں خزانہ ديا ہو ﴾النساء ( 20 ).

    تو عمر رضى اللہ تعالى عنہ كہنے لگے: يا اللہ ميں معافى و بخشش كا طلبگار ہوں سب لوگ عمر سے زيادہ فقيہ ہيں، پھر واپس آ كر منبر پر كھڑے ہوئے اور كہنے لگے:

    لوگوں ميں نے تمہيں عورتوں كو چار سو درہم سے زيادہ مہر دينے سے منع كيا تھا، چنانچہ جو بھى اپنے مال ميں سے جو پسند كرتا اور دينا چاہتا ہے وہ دے "



    آخر میں اللہ سبحان و تعالیٰ سے دعا ہے کہ یا اللہ جب بھی ھمارے سامنے کوئی حق بیان کریں چاھے وہ کسی بھی فرقے سے تعلق رکھتا ہو تو ھم اس کو قبول کرنے والے بنے نا کہ انکار کرنے والے - آًمین

    بھائی اگر کوئی بات بری لگی ہو تو پیشگی معذرت !


    آپ کا خیر خواہ :

    محمد عامر یونس
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں