• الحمدللہ محدث فورم کو نئےسافٹ ویئر زین فورو 2.1.7 پر کامیابی سے منتقل کر لیا گیا ہے۔ شکایات و مسائل درج کروانے کے لئے یہاں کلک کریں۔
  • آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

محمد نعیم یونس کی جانب سے حالیہ مواد

  1. محمد نعیم یونس

    تفسیر سورۂ اخلاص

    اس سے کسی قدر واضح ہو جاتا ہے کہ : لَمْ يَلِدْ وَلَمْ يُولَدْ نہ اس نے کوئی بیٹا جنا اور نہ اسے کسی نے جنا۔ اور: أَلَا إِنَّهُم مِّنْ إِفْكِهِمْ لَيَقُولُونَ ﴿١٥١﴾ وَلَدَ اللَّـهُ وَإِنَّهُمْ لَكَاذِبُونَ ﴿١٥٢﴾ (سورة الصافات) خبردار وہ جھوٹ کہتے ہیں، کہ اللہ تعالیٰ نے بیٹا جنا ہے۔ اور وہ بالکل...
  2. محمد نعیم یونس

    تفسیر سورۂ اخلاص

    واحد الاصل مخلوق پر تولد کا اطلاق نہیں ہو سکتا بتانا یہ مقصود ہے کہ قائم وجودوں میں سے جس چیز کے متعلق بھی ’’تولد‘‘ کا لفظ استعمال کیا جائے گا۔ یہ ضروری ہے کہ وہ اصلوں سے بنی ہو اور دونوں میں سے ایک حصہ جدا ہو کر بنی ہو ۔جب کھانے اور پینے سے سیر ہونے یا روح نکلنے وغیرہ اعراض کے متعلق کہا جائے کہ...
  3. محمد نعیم یونس

    تفسیر سورۂ اخلاص

    تولد نار کے دو اصل جب چقماق کا لوہا چقماق کے پتھر پر رگڑا جاتا ہے یا درخت درخت سے رگڑ کھاتا ہے تو اس رگڑ سے ایک حرکت پیدا ہوتی ہے، جس کے باعث ان دونوں کے بعض اجزاء کی حالت متغیر ہو جاتی ہے اور ان دونوں کے درمیان جو ہوا ہوتی ہے۔ وہ گرم ہو کر آگ بن جاتی ہے اور جب ایک چقماق دوسرے پر رگڑا جاتا ہے تو...
  4. محمد نعیم یونس

    تفسیر سورۂ اخلاص

    تولد مسیح کے دو اصل اس مقام پر یہ بیان کرنا مقصود ہے کہ مسیح علیہ السلام دو اصلوں سے پیدا ہوئے ہیں، ایک نفخ جبریل سے اور دوسرے اپنی ماں مریم علیہ السلام سے۔ اور یہ وہ نفخ (پھونک) نہیں ہے، جو چار مہینے گزرنے کے بعد ہوتا ہے۔ جبکہ بچہ لوتھڑے کی صورت میں ہوتا ہے، کیونکہ یہ نفخ ایسے بدن میں واقع...
  5. محمد نعیم یونس

    تفسیر سورۂ اخلاص

    چقماق کی آگ کس مادے سے بنتی ہے؟ اس مقام پر یہ بیان کرنا مقصود ہے کہ تولد کے لئے دو اصلوں کا ہونا ضروری ہے۔ یہ خیال بھی غلط ہے کہ دو چقماقوں کی درمیان جو ہوا ہوتی ہے اسی کی حالت گرمی کے باعث بدل جاتی ہے اور وہ آگ کی صورت اختیار کر لیتی ہے، چقماقوں سے کوئی مادہ خارج نہیں ہوتا جو آگ میں منقلب ہو...
  6. محمد نعیم یونس

    تفسیر سورۂ اخلاص

    پہلی نشات کے وقت جس قدر استحالات واقع ہوئے ہیں۔ نشات ثانیہ کے لئے ان میں سے کسی کی ضرورت نہیں ہے۔ وجوہ مذکورہ بالا سے اس اعتراض کا جواب بھی مل گیا کہ بدن کے اجزاء ہمیشہ تحلیل ہوتے رہتے ہیں، کیونکہ بدن کا تحلیل اس بات سے زیادہ عجیب نہیں ہے کہ نطفہ سے علقہ اور علقہ سے مضغہ بنایا جاتا ہے۔ ان میں سے...
  7. محمد نعیم یونس

    تفسیر سورۂ اخلاص

    معانی اعادہ پر بحث اعادہ کے لفظ کا اقتضا یہ ہے کہ اس میں مبدا اور معاد ہو، خواہ وہ اعادہ اجسام کا ہو یا اعراض کا، ان میں کوئی فرق نہیں۔ مثال کے طور پر نماز کا اعادہ لے لیجئے۔ رسول اللہ ﷺ ایک شخص کے پاس سے گزرے جو صف کے پیچھے اکیلا نماز پڑھ رہا تھا، آپ نے اسے حکم دیا، کہ وہ بارہ نماز پڑھو۔ اسی...
  8. محمد نعیم یونس

    تفسیر سورۂ اخلاص

    پھر سبحانہ و تعالیٰ فرماتے ہیں: أَوَلَيْسَ الَّذِي خَلَقَ السَّمَاوَاتِ وَالْأَرْضَ بِقَادِرٍ عَلَىٰ أَن يَخْلُقَ مِثْلَهُم ۚ بَلَىٰ وَهُوَ الْخَلَّاقُ الْعَلِيمُ ﴿٨١﴾ (سورة يس) کیا جس اللہ نے آسمان اور زمینیں بنا لیں، وہ اس بات پر قادر نہیں کہ ان کی طرح کے انسان پیدا کر دے، ہاں ضرور قادر ہے اور...
  9. محمد نعیم یونس

    تفسیر سورۂ اخلاص

    حسن بصری اور مجاہد نے اس آیت کی تفسیر یوں کی ہے کہ جس طرح دنیا میں پیدا ہونے کے قبل تم کچھ نہیں تھے اور پیدا کر دیے گئے تھے، اسی طرح قیامت کی دن تم زندہ لوٹائے جاؤ گے۔ قتادہ کا قول ہے کہ مٹی سے انسان کی ابتداء ہوئی ہے اور اسی کی طرف اس کو لوٹنا ہو گا۔ چنانچہ اللہ تعالیٰ فرماتا ہے: مِنْهَا...
  10. محمد نعیم یونس

    تفسیر سورۂ اخلاص

    کیفیت معاد اس مقام پر ہمیں یہ بیان کرنا مقصود ہے کہ جب ان لوگوں کے نزدیک ابتدائے مخلوقات کی بنیاد جوہر فرد ہے تو معاد (محشر) کی بنیاد بھی لامحالہ یہی ہونی چاہئے۔ چنانچہ اس مقام پر ان کی دو جماعتیں بن گئیں۔ ایک جماعت کا قول ہے کہ جواہر معدوم ہو جاتے ہیں اور پھر دوبارہ پیدا ہوتے ہیں۔ دوسری جماعت...
  11. محمد نعیم یونس

    تفسیر سورۂ اخلاص

    اثبات صانع کے دلائل چنانچہ ابو عبد اللہ الرازی نے اثبات صانع کے دلائل بیان کرتے ہو ئے چار طریقے بیان کئے ہیں۔ ذاتوں کا حدوث، صفات کا امکان، اور صفات کا حدوث، پہلے تین طریقے ضعیف بلکہ باطل ہیں، کیونکہ جن ذاتوں کے حدوث یا امکان یا ان کے صفات کے امکان کا مجملاً ذکر کیا گیا ہے، ان میں خالق و مخلوق...
  12. محمد نعیم یونس

    تفسیر سورۂ اخلاص

    تماثل اجسام و جواہر منفردہ جو لوگ کہتے ہیں کہ اجسام جواہر منفردہ سے مرکب ہیں، ان کا یہ قول مشہور ہے کہ جواہر متماثل ہیں۔ بلکہ مسلمانوں میں سے اکثر کہتے ہیں کہ اجسام بھی متماثل ہیں، کیونکہ وہ جوہر متماثلہ سے مرکب ہیں اور اگر ان میں اختلاف ہے تو وہ اختلاف اعراض کی وجہ سے ہے اور یہ صفات چونکہ عارض...
  13. محمد نعیم یونس

    تفسیر سورۂ اخلاص

    حیوان متوالد و حیوان متولد حیوان دو قسم کے ہوتے ہیں۔ پہلی قسم متوالد حیوان کی ہے، مثلاً انسان چوپائے وغیرہ جو ماں اور باپ سے پیداہوتے ہیں۔ دوسری قسم متولد حیوانوں کی ہے، جو میوہ سرکہ وغیرہ سے پیدا ہوتے ہیں، مثلاً جوئیں جو جلدِ انسانی کی میل کچیل سے پیدا ہوتی ہیں، یا چوپائے، پسو وغیرہ جو پانی...
  14. محمد نعیم یونس

    تفسیر سورۂ اخلاص

    ولادت کے معنی ولادت، متولد اور ان الفاظ کے قبیل سے جو کچھ بھی ہے اس کے لئے دو اصلوں کا وجود لازمی ہے جو متولد عین یعنی قائم بالذات ہو۔ اس کی لئے ایک ایسا مادہ لابدی ہے جس سے وہ خارج ہو اور جو عرض یعنی قائم بالغیر ہو، اس کے لئے ایک محل کا وجود لازمی ہے۔ جس کے ساتھ اس کا قیام وابستہ ہو۔ ان میں سے...
  15. محمد نعیم یونس

    تفسیر سورۂ اخلاص

    خروجِ کلام کی تصریح اس سے مراد یہ نہیں کہ وہ کلام نہیں کرتا، اگرچہ کلام کے متعلق یہ کہا جا سکتا ہے کہ وہ اس سے نکلا ہے۔ چنانچہ حدیث میں آیا ہے: ما تقرب العباد الي الله بشي افضل مما خرج منه۔ بندوں کو اللہ سے قریب کرنے والی کوئی چیز قرآن سے افضل نہیں جو اس کی زبان سے نکلی ہے۔ جب سیدنا ابوبکر صدیق...
Top