1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

الیکشن میں ووٹ کاسٹ کرنے سے متعلق آپ کی رائے

'انتخابی سیاست' میں موضوعات آغاز کردہ از عمران اسلم, ‏جنوری 06، 2013۔

  1. ‏مارچ 22، 2013 #41
    محمد ارسلان

    محمد ارسلان خاص رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 09، 2011
    پیغامات:
    17,865
    موصول شکریہ جات:
    40,798
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,155

    آمین
    جزاک اللہ خیرا
     
  2. ‏مارچ 22، 2013 #42
    عبداللہ حیدر

    عبداللہ حیدر مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 11، 2011
    پیغامات:
    314
    موصول شکریہ جات:
    989
    تمغے کے پوائنٹ:
    120

    السلام علیکم،
    دونوں نقطہ ہائے نظر کے دلائل دیے جا چکے۔ اب بہتر ہے سب ٹھنڈے دل سے سوچیں اور اللہ سبحانہ و تعالیٰ سے دعا کریں کہ وہ اپنی رضا والا کام چننے کی توفیق عطا فرمائے۔
    والسلام علیکم
     
  3. ‏مارچ 22، 2013 #43
    حرب بن شداد

    حرب بن شداد سینئر رکن
    جگہ:
    اُم القرٰی
    شمولیت:
    ‏مئی 13، 2012
    پیغامات:
    2,149
    موصول شکریہ جات:
    6,249
    تمغے کے پوائنٹ:
    437

    یہ بات ہم بھی جانتے ہیں کے باطل نظام سے کبھی تبدیلی نہیں آئے۔۔۔
    لیکن یہ بھی تو سوچیں کے اب ہم مزید اور کتنی پستی میں جائیں گے۔۔۔
    اب اگر ہمارے علماء کرام اپنے اپنے مفاد کی جنگ لڑرہے ہیں تو بھائی اس میں اُن لوگوں کا کیا قصور ہے۔۔۔ جو دیارغیر میں پڑے ہیں۔۔۔
    ہم صرف یہ چاہتے ہیں کہ ہمارے ملک کے حالات بہتر ہوں تاکہ وہ لوگ جو دوسرے ممالک میں اپنوں سے دور۔۔۔
    کسم پرسگی کی زندگی گزارنے پر مجبور ہیں وہ اپنے ملک میں جاکر اپنے بہن بھائیوں ماں باپ اور بیوی بچوں کے ساتھ رہیں۔۔۔
    ہم یہاں پر دیکھتے ہیں مزدور کو، تندور پر روٹی لگانے والے کو، ہوٹل میں ملازم کو ڈرائیور کو ٹیکسی ڈرائیور کو۔۔۔
    کے کیا گدبنارکھی ہے۔۔۔ یہ لوگ یہاں پر تنہا پڑے ہیں اکثریت کو بلڈپریشر کا مرض ہے تو کچھ کو شوگر کا۔۔۔
    یہ بیچارے اس اُمید پر ہیں کے کوئی اچھی قیادت آئے جو ہماری جان ان کرپٹ حکمرانوں سے چھڑائے۔۔۔
    ورنہ فلسطینی، سوڈانی، ایریٹیریا، اور اب شام کے مسلمانوں کی حالت دیکھیں۔۔۔ کچھ زمینی حقائق بھی ہوتے ہیں۔۔۔
     
  4. ‏مارچ 22، 2013 #44
    حرب بن شداد

    حرب بن شداد سینئر رکن
    جگہ:
    اُم القرٰی
    شمولیت:
    ‏مئی 13، 2012
    پیغامات:
    2,149
    موصول شکریہ جات:
    6,249
    تمغے کے پوائنٹ:
    437

    اب اس فرق کو دیکھیں۔۔۔
    آج بھی وہی حرمین ہیں۔۔۔ وہی طریقہ عبادت اور زیارت ہیں۔۔۔
    لیکن آج خواہش لئے دل میں بیٹھے ہیں۔۔۔
    اور ایک وقت تھا کہ خواہش کرتے اور استطاعت ہوتی تو قافلے میں شامل ہوکر پہنچ جاتے بیت اللہ میں نمازیں بھی پڑھتے اور مسجد نبویﷺ میں بھی نماز ادا کرتے۔۔۔ اور رکنا چاہتے تو رک جاتے اور واپس جانا چاہتے تو واپس چلے جاتے۔۔۔ لیکن آج سب کچھ وہی ہے مگر نظام بدل گیا ہے۔۔۔ یہ بدلا ہوا نظام کیوں نہیں کھٹکتا سوال یہ ہے۔۔۔
     
  5. ‏مارچ 22، 2013 #45
    محمد ارسلان

    محمد ارسلان خاص رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 09، 2011
    پیغامات:
    17,865
    موصول شکریہ جات:
    40,798
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,155

    آمین
     
  6. ‏مارچ 22، 2013 #46
    محمد شاہد

    محمد شاہد سینئر رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 18، 2011
    پیغامات:
    2,504
    موصول شکریہ جات:
    6,012
    تمغے کے پوائنٹ:
    447

    میرے خیال میں باربروسا بھائی کی یہ بات آپ کی سمجھ میں آگئی ہوگی۔
     
  7. ‏مارچ 22، 2013 #47
    عکرمہ

    عکرمہ مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 27، 2012
    پیغامات:
    658
    موصول شکریہ جات:
    1,835
    تمغے کے پوائنٹ:
    157

    باربروسا بھائی نے بڑی پیاری بات لکھ دی:
    اس نظام سے برأت ایمان کا تقاضہ ہے
    جی۔۔۔یااخی
     
  8. ‏مارچ 22، 2013 #48
    عبداللہ حیدر

    عبداللہ حیدر مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 11، 2011
    پیغامات:
    314
    موصول شکریہ جات:
    989
    تمغے کے پوائنٹ:
    120

    السلام علیکم،
    پچھلی صدی میں کچھ علماء نے زمینی حقائق کا لحاظ رکھے بغیر یہ موقف اپنایا تھا کہ مسلمانوں کو ہر پرائی چیز سے براءت اختیار کرنی چاہیے یہی ایمانی تقاضا ہے۔ اس کے نتائج ہم آج تک بھگت رہے ہیں۔ مجھے لگتا ہے آج پھر اسی قسم کی صورتحال درپیش ہے۔ اللہ ہمیں سمجھ عطا فرمائے اس سے پہلے کہ پلوں کے نیچے پانی بہہ جائے۔
    والسلام علیکم
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں