1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

اہل سنت والجماعت کا تجزیہ سن ۴۰۰ صدی ہجری سے ۱۲۵۰ صدی ہجری تک

'اہل سنت والجماعت' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد یعقوب, ‏اپریل 22، 2013۔

  1. ‏مئی 01، 2013 #31
    ابو مالک

    ابو مالک رکن
    شمولیت:
    ‏اگست 05، 2012
    پیغامات:
    115
    موصول شکریہ جات:
    453
    تمغے کے پوائنٹ:
    57

    اول تو اس کا موضوع سے کسی قسم کا کوئی تعلق نہیں۔

    اور اگر آپ کے دعوے کی طرح میں بھی دعویٰ کر دوں کہ بعد میں ائمہ اربعہ کے ہم پلہ کوئی عالم پیدا ہوا ہے، کیا آپ کے اور میرے پاس کوئی ایسا ذریعہ ہے یا اتنا علم ہے کہ ہم اس دعوے کو صحیح یا غلط ثابت کر سکیں؟؟؟ کیونکہ اس بات کو پرکھنے کیلئے ائمہ اربعہ سے بھی زیادہ علم چاہئے!!! کیا خیال ہے؟

    اہل الحدیث کا یہ دعویٰ کبھی نہیں رہا کہ یہ چار مذاہب کے علاوہ کوئی پانچواں مذہب ہے۔ ان کا امتیوں میں سے کوئی پانچواں امام ہے؟؟؟ اگر آپ نے ان کا ایسا کوئی دعویٰ پڑھا ہے تو اس کا حوالہ پیش کریں! یہ دعویٰ تو تب کیا جائے جب ہم یہ کہیں کہ اہل حدیث ائمہ اربعہ رحمہم اللہ کے بعد وجود بھی آئے تھے۔ بھئی ہمارا دعویٰ تو یہ ہے کہ یہ منہج صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین سے چلا آرہا ہے تو اس طائفۃ منصورہ سے یہ سوال ہی عبث ہے۔
    اہل الحدیث ایک منہج فکر کا نام ہے جو اس فکر پر ہے وہ اہل الحدیث ہے اور جو اس فکر پر نہیں ہے وہ اہل الحدیث نہیں ہے خواہ وہ اپنا نام جو بھی رکھے۔ اہل الحدیث تو وہ جماعت ہے جو ما أنا عليه وأصحابي کے جھنڈے کو تھامے ہوئے ہے۔

    آپ لوگ جس قسم کی تقلید کے قائل ہیں، اس کے مطابق کوئی شخص اگر اپنے امام کی مخالفت کرے تو اس پر کڑوڑوں لعنتیں ہوتی ہیں:
    فلعنة ربنا عدد رمل : على من ردّ قول أبي حنيفة​


    اس کے مطابق تو جس شخص نے بھی اپنے امام سے دلیل کی بناء پر اختلاف کیا وہ اس مذموم تقلید سے خارج ہو کر صحیح منہج پر گامزن ہوگیا۔
     
  2. ‏مئی 01، 2013 #32
    کیلانی

    کیلانی مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 24، 2013
    پیغامات:
    347
    موصول شکریہ جات:
    1,101
    تمغے کے پوائنٹ:
    127

    میں ابومالک کا شکرگزار ہوں انہوں نےبراہ رست اصل مسلہ کی طرف توجہ مبذول کروادی ہے۔میراخیال ہےوہ ہمیں ایک اؤرموقع دےرہےہیں کہ بات کو سنجیدگی کےساتھ آگے چلایاجائے
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں