1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

تصوف کے شیخ اکبر کی توحید

'صوفیا کے عقائد' میں موضوعات آغاز کردہ از عمران اسلم, ‏مارچ 30، 2013۔

  1. ‏مارچ 30، 2013 #1
    عمران اسلم

    عمران اسلم مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 02، 2011
    پیغامات:
    318
    موصول شکریہ جات:
    1,604
    تمغے کے پوائنٹ:
    150

    تصوف کے بہت بڑے امام ابن عربیؒ کہتے ہیں:
    ’’فيحمدني و أحمده و يعبدني و أعبده‘‘ (فصوص الحکم: ج١ ص ٨٣)
    ابن عربی اللہ تعریف ان الفاظ میں کرتے ہیں:
    ’’سبحان من أظهر الأشياء و هو عينها‘‘ (فتوحات مکیہ : ج٢ ص ٢٠٤)
    موصوف سلسلہ تصوف کے صاحب مرتبہ عارف کی یوں تعریف کرتے ہیں:
    ’’إن العارف من يري الحق (الله) في كل شيئ بل يراه عين كل شيئ‘‘ (ايضاً)
     
    • شکریہ شکریہ x 9
    • مفید مفید x 2
    • لسٹ
  2. ‏مئی 02، 2013 #2
    عمران اسلم

    عمران اسلم مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 02، 2011
    پیغامات:
    318
    موصول شکریہ جات:
    1,604
    تمغے کے پوائنٹ:
    150

    اس کا جواب تو آپ سید صاحب ہی سے لیجئے۔
    میں نے تو ابن عربی کی کتب کے کچھ اقتباسات کسی بھی تجزیہ و تبصرہ کے بغیر نقل کیے ہیں۔ اب قاری کی مرضی اس سے جو بھی اخذ کرے۔
     
    • شکریہ شکریہ x 7
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  3. ‏مئی 03، 2013 #3
    عابدالرحمٰن

    عابدالرحمٰن سینئر رکن
    جگہ:
    BIJNOR U.P. INDIA
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 18، 2012
    پیغامات:
    1,124
    موصول شکریہ جات:
    3,229
    تمغے کے پوائنٹ:
    240

    السلام علیکم
    تو کیا آپ نے ابن عربیؒ سے معلوم کرکے یہ اقتباسات لکھے ہیں
    شکریہ جناب!
     
  4. ‏مئی 03، 2013 #4
    aqeel

    aqeel مشہور رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 06، 2013
    پیغامات:
    299
    موصول شکریہ جات:
    307
    تمغے کے پوائنٹ:
    119

    عمران اسلم صاحب اگر میاں صاحبؒ زندہ ہوتے تو یقینا آپ بھی صوفی ہوتے ،کیونکہ ابن عربی ؒ کو سمجھنا ہر کسی کے بس کی بات نہیں ،اور پھر دوسروں کو منوا لینا یا سمجھا لینا بہت مشکل کام ہے ،یہ میاں صاحبؒ کا ہی کما ل تھا ۔کہ ابن عربیؒ کی بات کو نہ صرف سمجھ گئے بلکہ دوسروں کو بھی سمجھا گئے۔
     
  5. ‏مئی 03، 2013 #5
    ابن قاسم

    ابن قاسم مشہور رکن
    جگہ:
    الہند
    شمولیت:
    ‏اگست 07، 2011
    پیغامات:
    253
    موصول شکریہ جات:
    1,073
    تمغے کے پوائنٹ:
    120

    اللہ تعالیٰ تمام مسلمانوں کو ایسے شرکیہ عقیدے سے بچائے اور خاتمہ بالخیر کرے
     
    • شکریہ شکریہ x 6
    • متفق متفق x 2
    • لسٹ
  6. ‏مئی 05، 2013 #6
    عمران اسلم

    عمران اسلم مشہور رکن
    شمولیت:
    ‏مارچ 02، 2011
    پیغامات:
    318
    موصول شکریہ جات:
    1,604
    تمغے کے پوائنٹ:
    150

    شکر ہے آپ ’مرزا‘ صاحب کے دور میں زندہ نہیں تھے۔
    تو جنھوں نے ابن عربی کی تکفیر کی ہے ان کو آپ علما نہیں سمجھتے؟؟
     
    • شکریہ شکریہ x 5
    • متفق متفق x 1
    • لسٹ
  7. ‏مئی 05، 2013 #7
    aqeel

    aqeel مشہور رکن
    جگہ:
    راولپنڈی
    شمولیت:
    ‏فروری 06، 2013
    پیغامات:
    299
    موصول شکریہ جات:
    307
    تمغے کے پوائنٹ:
    119

    بھائی ہم تو دونوں طبقہ کے علما کے قدردان ہیں ،مگر آپ حسن ظن رکھنے کے لئے کیوں تیار نہیں؟
    مرزا والی بات میں سمجھ نہیں سکا۔
     
  8. ‏مئی 05، 2013 #8
    بابر تنویر

    بابر تنویر مشہور رکن
    جگہ:
    الریاض ، سعودی عرب
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 02، 2011
    پیغامات:
    223
    موصول شکریہ جات:
    684
    تمغے کے پوائنٹ:
    104

    لقد كنت قبل اليوم أنكر صاحبي اِذ لم يكن ديني الا دينه داني
    لقد صار قلبي كل صورة فمرعى لغزلان و دير لرهبان
    و بيت الأوثان و كعبة طائف وألواح توراة و مصحف قران
    ادين بدين الحب اني توجهت وكائبة فالدين ديني و ايماني
    (ذخائر الاخلاق شرح ترجمان الاشواق ص 39 مصنف ابن عربی)
    ترجمہ
    آج سے پہلے میں اپنے دین کا انکار کرتا تھا، جب میرا دین اس کے دین کے مطابق نہ تھا
    اب میرا دل ہر تصویر کا آئینہ بن گیا ہے، وہ ہرنوں کی چراگاہ بھی ہے اور راہبوں کا دیر بھی
    وہی کعبہ ہے اور صنم خانہ بھی، وہی تورا‏ت بھی ہے وہی قران بھی
    میں محبت کے دین کا تابعدار ہوں، خواہ وہ کہیں بھی ملے،محبت ہی میرا دین ہے اور ایمان ہے
    اس وحدت ادیان کے عقیدہ کو مزید وہ اسطرح بیان کرتا ہے۔
    " اس سے بچو کہ تم ایک مخصوص دین پر ہی قائم ہو اس کے علاوہ دوسروں کی تکفیر کرتے پھرو" (فصوص الحکم شرح البالی ص 191)

    محترم عقیل صاحب آپ تو ابن عربی کو بہت اچھی طرح سمجھتے ہوں گے۔ براۓ مہربانی ذرا اس کے مندرجہ بالا خیالات تبصرہ فرما دیجیۓ۔
     
    • شکریہ شکریہ x 4
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
  9. ‏مئی 05، 2013 #9
    عابدالرحمٰن

    عابدالرحمٰن سینئر رکن
    جگہ:
    BIJNOR U.P. INDIA
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 18، 2012
    پیغامات:
    1,124
    موصول شکریہ جات:
    3,229
    تمغے کے پوائنٹ:
    240

    میرے حساب سے تو نتیجہ یہ برآمد ہوتا ہے اپنی اپنی نظر ہے آپ کی نظر کہیں اور پہنچی میری اس طرح پہنچی ملاحظہ فرمائیں:
    یعنی الیوم اکملت لکم دینکم یعنی آج میرا دین مکمل ہوا اس طرح پر کہ کل تک میں اللہ تعالیٰ پر محض خیالی ایمان رکھتا تھا آج میرے سامنے حقیقت واضح ہوگئی یعنی تکمیل ایمان حاصل ہوگیا آج میرے ایمان کو وہ پختگی حاصل ہے جو پہلے نہیں تھی۔
    یعنی اب میرا دل آئینہ کی طرح صاف ہے اس میں کوئی عیب نہیں ایک کھلی کتاب کی طرح ہے اب یہ دل عبادت کی چرا گا ہ (روحانی غذا) جس طرح چرا گاہ میں ہرن ہریالی دیکھ کر چوکڑیاں بھرتی ہے ایسے ہی میرا دل اللہ کی یاد میں مگن رہتا ہے اور کوشی میں چوکڑیاں بھرتا ہے اور راہبوں کا دیر اس طرح ہے راہب کہتے ہیں جو دنیا سے یکسو ہوکر عبادت کریں جس کا مطلب یہ بنتا ہے کہ اب اس دل میں خرافات نہیں آتے بلکہ پر سکون ہے کوئی ڈسٹرب کرنے والا نہیں ہے۔
    کعبہ سے مراد جس طرف کو رخ کرکے نماز پڑھی جاتی ہے اور صنم خانہ سے مراد ہے جس جگہ پوجا پٹ یعنی عبادت کی جاتی ہے اور توریت و قرآن سے مراد کلام الٰہی ہے۔ مطلب یہ ہے کہ اللہ تعالیٰ میرا کعبہ ہے اور دل پوجا پاٹ یا عبادت کرنے کی جگہ ہے اور اسی دل میں کلام الٰہی ہوتا ہے۔
    یعنی اللہ تعالیٰ سے محبت ہی دین ہے یعنی ہر وہ عمل جس اللہ راضی ہوجائے وہ دین ہے علم کی بات کہیں سے بھی ملے اسے حاصل کرلینا چاہئےیہی اسلام اور ہمارے دین کا تقاضا ہے اللہ تعالیٰ سے محبت کرنا ہی دین وایمان ہے۔
    بھائی میری سمجھ میں تو یہ بات آئی باقی کوئی اور اس کا دوسرا مطلب نکالتے ہوں تو وہ جانیں
    فقط واللہ اعلم بالصواب
     
    • شکریہ شکریہ x 1
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
  10. ‏مئی 06، 2013 #10
    ارشد

    ارشد رکن
    شمولیت:
    ‏دسمبر 20، 2011
    پیغامات:
    44
    موصول شکریہ جات:
    150
    تمغے کے پوائنٹ:
    66

    " اس سے بچو کہ تم ایک مخصوص دین پر ہی قائم ہو اس کے علاوہ دوسروں کی تکفیر کرتے پھرو" (فصوص الحکم شرح البالی ص 191)
    یہ ایک باقی رہا ، اس کی کیا تاویل ہوگی؟؟؟
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں