1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

ثقہ راوی تدلیس کیوں کرتا ہے؟

'منہج' میں موضوعات آغاز کردہ از جی مرشد جی, ‏اکتوبر 04، 2017۔

  1. ‏اکتوبر 09، 2017 #21
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    459
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    40

    اس تھریڈ کا اصل موضوع پیچھے رہ گیا اور دیگر مباحث چل پڑے۔
    آئیے اصل موضوع کی طرف دوبارہ کہ ’’ثقہ راوی تدلیس کیوں کرتا ہے‘‘؟
     
  2. ‏اکتوبر 09، 2017 #22
    ابن داود

    ابن داود فعال رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    3,042
    موصول شکریہ جات:
    2,571
    تمغے کے پوائنٹ:
    556

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    حَدَّثَنَا عُبَيْدُ اللَّهِ بْنُ مُوسَى عَنْ إِسْمَاعِيلَ عَنْ قَيْسٍ عَنْ الْمُغِيرَةِ بْنِ شُعْبَةَ عَنْ النَّبِيِّ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ قَالَ لَا يَزَالُ طَائِفَةٌ مِنْ أُمَّتِي ظَاهِرِينَ حَتَّى يَأْتِيَهُمْ أَمْرُ اللَّهِ وَهُمْ ظَاهِرُونَ
    ہم سے عبید اللہ بن موسیٰ نے بیان کیا ‘ ان سے اسماعیل نے‘ ان سے قیس نے ‘ ان سے مغیرہ بن شعبہ رضی اللہ عنہ نے کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا کہ میری امت کا ایک گروہ ہمیشہ غالب رہے گا ( اس میں علمی ودینی غلبہ بھی داخل ہے ) یہاں تک کہ قیامت آجائے گی اور وہ غالب ہی رہیں گے ۔
    ‌صحيح البخاري: كِتَابُ الِاعْتِصَامِ بِالكِتَابِ وَالسُّنَّةِ (بَابُ قَوْلِ النَّبِيِّ ﷺ: «لاَ تَزَالُ طَائِفَةٌ مِنْ أُمَّتِي ظَاهِرِينَ عَلَى الحَقِّ» يُقَاتِلُونَ وَهُمْ أَهْلُ العِلْمِ)
    صحیح بخاری: کتاب: اللہ اور سنت رسول اللہﷺ کو مضبوطی سے تھامے رکھنا (باب : نبی کریم ﷺ کا ارشاد ” میری امت کی ایک جماعت حق پر غالب رہے گی اور جنگ کرتی رہے گی “)

    وحَدَّثَنَا أَبُو بَكْرِ بْنُ أَبِي شَيْبَةَ حَدَّثَنَا وَكِيعٌ ح وحَدَّثَنَا ابْنُ نُمَيْرٍ حَدَّثَنَا وَكِيعٌ وَعَبْدَةُ كِلَاهُمَا عَنْ إِسْمَعِيلَ بْنِ أَبِي خَالِدٍ ح وحَدَّثَنَا ابْنُ أَبِي عُمَرَ وَاللَّفْظُ لَهُ حَدَّثَنَا مَرْوَانُ يَعْنِي الْفَزَارِيَّ عَنْ إِسْمَعِيلَ عَنْ قَيْسٍ عَنْ الْمُغِيرَةِ قَالَ سَمِعْتُ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّى اللَّهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ يَقُولُ لَنْ يَزَالَ قَوْمٌ مِنْ أُمَّتِي ظَاهِرِينَ عَلَى النَّاسِ حَتَّى يَأْتِيَهُمْ أَمْرُ اللَّهِ وَهُمْ ظَاهِرُونَ
    مروان فزاری نے اسماعیل سے حدیث بیان کی، انہوں نے قیس سے، انہوں نے حضرت مغیرہ بن شعبہ رضی اللہ عنہ سے روایت کی، کہا: میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو یہ فرماتے ہوئے سنا ہے: "میری امت میں سے ایک گروہ ہمیشہ لوگوں پر غالب رہے گا، یہاں تک کہ قیامت آ جائے گی اور وہ غالب ہی ہوں گے۔"
    صحيح مسلم: كِتَابُ الْإِمَارَةِ (بَابُ قَوْلِهِ ﷺ: «لَا تَزَالُ طَائِفَةٌ مِنْ أُمَّتِي ظَاهِرِينَ عَلَى الْحَقِّ لَا يَضُرُّهُمْ مَنْ خَالَفَهُمْ»)
    صحیح مسلم: کتاب: امور حکومت کا بیان (باب: رسول اللہ ﷺ کا ارشاد ’’میری امت کا ایک گروہ ہمیشہ حق پر رہے گا‘اسے کوئی بھی مخالفت کرنے والا نقصان نہیں پہنچا سکے گا)
     
    Last edited: ‏اکتوبر 09، 2017
    • شکریہ شکریہ x 2
    • مفید مفید x 1
    • لسٹ
  3. ‏اکتوبر 09، 2017 #23
    عمر اثری

    عمر اثری سینئر رکن
    جگہ:
    نئی دھلی، انڈیا
    شمولیت:
    ‏اکتوبر 29، 2015
    پیغامات:
    4,251
    موصول شکریہ جات:
    1,066
    تمغے کے پوائنٹ:
    387

    الحمد للہ!
    آپ جیسوں کے ملک سے ہمارا ملک کافی بہتر ہے. پہلے اپنے ملک کی اصلاح کر لیں. پھر اس قابل ہوں گے کسی پر تنقید کر سکیں
     
  4. ‏اکتوبر 09، 2017 #24
    عدیل سلفی

    عدیل سلفی مشہور رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏اپریل 21، 2014
    پیغامات:
    1,406
    موصول شکریہ جات:
    378
    تمغے کے پوائنٹ:
    161

    السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ
    آپ کو پہلے بھی جواب دیا تھا لیکن شاید آپ کو اپنے مراسلوں کی تعداد بڑھانی ہے اس فورم پر ۔۔۔
    اس کتاب کا مطالعہ کریں التحدیث فی علوم الحدیث اور یہ لیکچر سنیں مسئلہ تدلیس
     
  5. ‏اکتوبر 09، 2017 #25
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    459
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    40

    وعلیکم السلام ورحمۃُ اللہ وبرکاتہ
    کتاب میں تو صرف یہ ہے وڈیو کافی لمبی ہے۔ تھوڑی سی جو اب تک سنی ہے اس کا لب لباب بھی کچھ ایسا ہی معلوم ہورہا ہے جیسا کہ اس کتاب میں لکھا ہے۔
    upload_2017-10-9_6-48-42.png

    اس کی جتنی بھی وجوہات بیان ہوئی ہیں اس سے میرے خیال میں راوی ثقہ نہیں رہتا کیونکہ یہ دجل ہے۔
     
  6. ‏اکتوبر 09، 2017 #26
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    459
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    40

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ
    اسی کوشش کو آپ سبوتاژ کیئے جارہے ہیں۔ ابتسامہ
     
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • غیرمتعلق غیرمتعلق x 1
    • لسٹ
  7. ‏اکتوبر 09، 2017 #27
    عدیل سلفی

    عدیل سلفی مشہور رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏اپریل 21، 2014
    پیغامات:
    1,406
    موصول شکریہ جات:
    378
    تمغے کے پوائنٹ:
    161

    یہ آپ کی اپنی رائے ہے ۔۔۔ اور بے جان رائے ہے جس کی علمی میدان میں کوئی اوقات نہیں ہے
     
  8. ‏اکتوبر 09، 2017 #28
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    459
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    40

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ
    ایک شخص دھوکہ دے وہ ثقہ کس اصول سے رہے غا؟ میری سمجھ میں تو یہ نہیں آ رہا۔ برائے مہربانی دلائل اور نظائر سے آپ اپنی بات کو واضح کردیںجس سے واضح ہو جائے کہ مذکورہ تدلیس مانع ثقاہت نہیں۔۔
     
    • غیرمتفق غیرمتفق x 1
    • غیرمتعلق غیرمتعلق x 1
    • لسٹ
  9. ‏اکتوبر 09، 2017 #29
    ابن داود

    ابن داود فعال رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    3,042
    موصول شکریہ جات:
    2,571
    تمغے کے پوائنٹ:
    556

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!ٰ
    اب ایسے جہلا، کہ جسے علم الحدیث کی اصطلاح بھی نہیں معلوم، وہ بتلائیں گے، کہ کون راوی کب ثقہ رہتا ہے، اور کب نہیں!
     
    • متفق متفق x 2
    • شکریہ شکریہ x 1
    • لسٹ
  10. ‏اکتوبر 09، 2017 #30
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    459
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    40

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ
    ناراض ہونے سے بہتر تھا سمجھا دیتے، پلیز سمجھا دیں۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں