1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

ہاتھ چھوڑ کر نماز

'منہج' میں موضوعات آغاز کردہ از جی مرشد جی, ‏اکتوبر 03، 2017۔

  1. ‏اکتوبر 03، 2017 #1
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    459
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    40

    ہاتھ چھوڑ کر نماز
    امام مالک رحمہ اللہ فقہاء اربعہ میں سے واحد ہیں جو مدنی ہیں۔ ان سے دو قول منقول ہیں ایک ہاتھ چھوڑ کر نماز پڑھنے کا اور ایک ناف کے اوپر ہاتھ بادھنے کا۔
    سوال
    کیا مالکیوں کی نماز قبول ہوگی جو ہاتھ چھوڑ کر نماز پڑھتے ہیں؟
    کیا نماز میں ہاتھ باندھنے کے طریقہ میں فرق سے نماز پر کوئی اثر پڑتا ہے؟
     
  2. ‏اکتوبر 03، 2017 #2
    مظاہر امیر

    مظاہر امیر مشہور رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏جولائی 15، 2016
    پیغامات:
    1,198
    موصول شکریہ جات:
    344
    تمغے کے پوائنٹ:
    165

    سیدنا عبداللہ بن زبیر رضی اللہ عنہ بھی ارسال کرتے تھے اور کئی تابعین سے بھی صحیح سند سے ارسال ثابت ہے ۔ واللہ اعلم
    اسی فورم پر اس حوالے سے پوسٹ موجود ہے ۔ اس میں شیخ خضر حیات کا مفصل جواب بھی ہے ۔
    http://forum.mohaddis.com/threads/ز...سرے-تابعي-ہاتھ-چھوڑ-کر-نماز-پڑھتے-تھے؟.32365/
    یہاں ملاحظہ کریں :
    والسلام
     
  3. ‏اکتوبر 03، 2017 #3
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    459
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    40

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ
    فقہاء کی بات نہیں یہاں صحابی کی بات ہے جو صحیح سند سے ثابت ہے۔
    سوال یہ ہے کہ اس صحابی کی نماز عند اللہ قبول ہے کہ نہیں؟
     
  4. ‏اکتوبر 03، 2017 #4
    مظاہر امیر

    مظاہر امیر مشہور رکن
    جگہ:
    کراچی
    شمولیت:
    ‏جولائی 15، 2016
    پیغامات:
    1,198
    موصول شکریہ جات:
    344
    تمغے کے پوائنٹ:
    165

     
  5. ‏اکتوبر 03، 2017 #5
    ابن داود

    ابن داود فعال رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    3,042
    موصول شکریہ جات:
    2,571
    تمغے کے پوائنٹ:
    556

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    علم اتحاد کا اٹھایا ہے، اور سوال صحابہ کی نماز کی قبولیت کا!
    صحابی کی نماز تو قبول ہے، لا شک فیه!
    کیونکہ ان کا عمل یا تو سنت ہو گا، یا رخصت، یا کسی عذر کی بنا پر جائز!
    اور اگر عمل غلط بھی ہو، تو صحابی کا عذر اللہ کے ہاں مقبول!
     
    • متفق متفق x 3
    • شکریہ شکریہ x 2
    • پسند پسند x 1
    • لسٹ
  6. ‏اکتوبر 04، 2017 #6
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    459
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    40

    وعلیکم السلام ورحمۃ اللہ وبرکاتہ
    اب سوال یہ ہے کہ کیا صرف صحابہ کرام جو ہاتھ چھوڑ کر نماز پڑھتے تھے صرف انہی کی نماز عند اللہ قبول ہے یا آج تک کے مالکیوں کی بھی؟
     
  7. ‏اکتوبر 04، 2017 #7
    محمد طارق عبداللہ

    محمد طارق عبداللہ سینئر رکن
    جگہ:
    ممبئی - مہاراشٹرا
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2015
    پیغامات:
    2,291
    موصول شکریہ جات:
    699
    تمغے کے پوائنٹ:
    224

    ایک ایسا حنفی اعتراض جتلا رها هے جو اسکے قریہ میں محض دو کی استقامت سے گهبرا کر فورم فورم اتحاد کا نعرہ بلند کررہا هے، جی کونسا اتحاد؟ اتحاد بین المسلمین وہ بهی بالمقابل کفر ۔
    سوچیئے کہ یہ موجودہ تهریڈ میں چاہتا کیا هے؟ بلا سبب یا بالسبب؟
     
  8. ‏اکتوبر 04، 2017 #8
    ابن داود

    ابن داود فعال رکن رکن انتظامیہ
    شمولیت:
    ‏نومبر 08، 2011
    پیغامات:
    3,042
    موصول شکریہ جات:
    2,571
    تمغے کے پوائنٹ:
    556

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ وبرکاتہ!
    وَمَن يُشَاقِقِ الرَّسُولَ مِن بَعْدِ مَا تَبَيَّنَ لَهُ الْهُدَىٰ وَيَتَّبِعْ غَيْرَ سَبِيلِ الْمُؤْمِنِينَ نُوَلِّهِ مَا تَوَلَّىٰ وَنُصْلِهِ جَهَنَّمَ ۖ وَسَاءَتْ مَصِيرًا (سورة النساء 115)
    اور جو کوئی رسول کی مخالفت کرے بعد اس کے کہ اس پر سیدھی راہ کھل چکی ہو اور سب مسلمانوں کے راستہ کے خلاف چلے تو ہم اسے اسی طرف چلائیں گے جدھر وہ خود پھر گیا ہے اور اسے دوزح میں ڈال دینگے اور وہ بہت برا ٹھکانا ہے (ترجمہ احمد علی لاہوری)
    صحابہ رضی اللہ عنہم بات واضح ہو جانے کے بعد اللہ کے نبی صلی اللہ علیہ وسلم کی مخالفت کرنے والے نہ تھے، مگر مقلدین پر اس کا اطلاق ہو سکتا ہے!
    لہٰذا مقلدین کی نمازیں مردود ہونا ممکن ہے!
    مالکیوں کہ تو خیر ہے، آپ دیوبندی حنفی اپنی خیر منائیں!

    حنفیوں کی نماز باطل۔ امام السيوطي رحمۃ الله
    ومن أداها على مذهب مخالف، وقع الخلاف في صحة صلاته من وجوه:
    إجازتهم الوضوء في السفر بنبيذ التمر، وتطهير البدن والثوب عن النجاسات بالمائعات، وأجازوا الصلاة في جلد الكلب المذبوح من غير دباغ، وأجازوا الوضوء بغير نية ولا ترتيب، وأسقطوه في مس الفرج والملامسة، وأجازوا الصلاة على ذرق الحمام مع قدر الدرهم من النجاسات الجامدة، أو ربع الثوب من البول، أو مع كشف بعض العورة، وأبطلوا تعيين التكبير والقراءة.
    وأجازوا القرآن منكوساً وبالفارسية، وأسقطوا وجوب الطمأنينة في الركوع والسجود والإعتدال من الركوع وبين السجدتين، والتشهد والصلاة على النبي (صلى الله عليه وعلى آله وسلم) في الصلاة مع الخروج عنها بالحدث. وأبطلنا نحن الصلاة في هذه الوجوه، وأوجبنا الإعادة على من صلى خلف واحد من هؤلاء، وهم لا يوجبون الإعادة على من صلى خلفنا على مذهبنا في هذه المسائل.

    جس نے نماز شافعی مذھب کے مطابق نماز ادا کی ،اس کو اس کے صحیح ہونے کا یقین ہے، اور جس نے اس کے مخالف مذہب (حنفی مذہب) پر ادا کی اس کی نماز کئی وجوہ سے صحیح نماز کے خلاف ہے
    انہوں نے (حنفیوں نے) سفر میں کھجور کی نبیذ سے وضوء کو جائز قرار دیا ہے،
    بدن اور کپڑوں کی نجاست کوپانی کے علاوہ دیگر مایعات سے پاک کرنا،
    اور انہوں نے(حنفیوں نے) ذباح کئے ہوئے کتے کی چمڑی جو غیر مدبوغ ہے اس پر نماز کو جائز قرار دیا ہے۔اور انھوں نے(حنفیوں نے) وضوء کو بغیر نیت اور بغیر ترتیب کے جائز قرار دیا ہے، اور شرم گاہ کو چھونے اور شرم گاہوں کو آپس میں ملانے سےوضوء کے ٹوٹنے کے حکم کو ساقط کر دیا (یعنی حنفیوں کے نزدیک اس سے وضوء نہیں ٹوٹتا)
    اور انہوں نے(حنفیوں نے) نماز کو جائز قرار دیا ہے حمام میں اور نجاسات جامدہ کا ساتھ لگے ہوئے یا کپڑے کے چوتھائی حصے کو پیشاب لگا ہو،یا بعض ستر کا ننگا ہونا ،
    اور انہوں نے(حنفیوں نے) تکبیر اور قرات (یعنی اللہ اکبر اور سورہ فاتحہ کی قراءت) کا معین ہونا باطل قرار دیا ہے،اور انہوں نے(حنفیوں نے) (نماز میں) قران کو الٹا پڑھنے اور فارسی میں پڑھنے کو جائز قرار دیا ہے،
    اور انہوں نے(حنفیوں نے) رکوع اور سجدے میں اطمینان اور رکوع اور دو سجدوں کے درمیان اعتدال کے واجب ہونے کو ساقط قرار دیا ہے، اور نماز میں تشہد اور درود کے واجب ہونے کو بھی ساقط قرار دیا۔ اور (سلام کے بجائے) ہوا خارج کر کے (یعنی پاد مار کر) نماز کا اختتام کرنا جائز قرار دیا۔
    ان وجوہات کی بنا پر ہم (حنفیوں کی) نماز کو باطل قرار دیتے ہیں اور ہم نے ہر اس شخص پر نماز کے دہرانے کو لازم قرار دیا ہے جو ان (حنفیوں) کے پیچھے نماز پڑھے۔اور وہ (احناف) ہمارے پیچھے ہمارے مذہب کے مطابق نماز ادا کرنے والے کی نماز دہرانے کو لازم قرار نہیں دیتے۔
    ملاحظہ فرمائل:
    صفحه جزيل المواهب في إختلاف المذاهب - عبد الرحمن بن أبي بكر، جلال الدين السيوطي (المتوفى: 911هـ) - دار الأعتصام

    [​IMG]

    [​IMG]

    [​IMG]

     
    • مفید مفید x 2
    • علمی علمی x 1
    • لسٹ
  9. ‏اکتوبر 04، 2017 #9
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    459
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    40

    بھائی آپ اپنے من کی بھڑاس ایک تھریڈ میں نکالتے رہیں تمام میں ایک بات کرنی کیا ضروری ہے۔ میں نے پہلے بھی معذرت کی اب پھر سے معذرت کرتا ہوں۔
     
  10. ‏اکتوبر 04، 2017 #10
    جی مرشد جی

    جی مرشد جی رکن
    شمولیت:
    ‏ستمبر 21، 2017
    پیغامات:
    459
    موصول شکریہ جات:
    12
    تمغے کے پوائنٹ:
    40

    السلام علیکم ورحمۃ اللہ
    آپ نہ تو شافعی ہیں اور نہ ہی مذکورہ مسائل کا تعلق اس حدیث سے ہے جس میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کا فرمان ہے کہ نماز اسی طرح پڑھو جس طرح مجھے پڑھتے دیکھا ہے۔
    بھائی @ابن داود اس تھریڈ میں جو موضوع ہے اس پر کچھ ارشاد فرمائیں کہ کیا ہاتھ چھوڑ کر نماز پڑھنے والوں کی نماز عند اللہ قبول ہے کہ نہیں۔
    دیگر فقہی مسائل جن کا تعلق مشاہدہ سے نہیں میں نہ تو ان کو ڈسکس کرنا چاہتا ہوں اور نہ ہی مجھ میں اتنی صلاحیت ہے۔ میں جس فکر کو لے کر چلا ہوں اس کے لئے مختلف تھریڈز میں گفتگو کروں گا ان شاء اللہ۔
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں