1. آئیے اہم اسلامی کتب کو یونیکوڈ میں انٹرنیٹ پر پیش کرنے کے لئے مل جل کر آن لائن ٹائپنگ کریں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ کے ذریعے آپ روزانہ فقط دس پندرہ منٹ ٹائپنگ کر کے ہزاروں صفحات پر مشتمل اہم ترین کتب کو ٹائپ کرنے میں اہم کردار ادا کرکے صدقہ جاریہ میں شامل ہو سکتے ہیں۔ محدث ٹائپنگ پراجیکٹ میں شمولیت کے لئے یہاں کلک کریں۔
  2. آئیے! مجلس التحقیق الاسلامی کے زیر اہتمام جاری عظیم الشان دعوتی واصلاحی ویب سائٹس کے ساتھ ماہانہ تعاون کریں اور انٹر نیٹ کے میدان میں اسلام کے عالمگیر پیغام کو عام کرنے میں محدث ٹیم کے دست وبازو بنیں ۔تفصیلات جاننے کے لئے یہاں کلک کریں۔

أبو لؤلؤة الفارسي المجوسي لعنة الله علیه ؟

'اہل تشیع' میں موضوعات آغاز کردہ از محمد عامر یونس, ‏مئی 29، 2014۔

  1. ‏مئی 29، 2014 #1
    محمد عامر یونس

    محمد عامر یونس خاص رکن
    جگہ:
    karachi
    شمولیت:
    ‏اگست 11، 2013
    پیغامات:
    17,061
    موصول شکریہ جات:
    6,523
    تمغے کے پوائنٹ:
    1,069

    شیعہ روافض کا باپ أبو لؤلؤة الفارسي المجوسي لعنة الله علیه


    أبو لؤلؤة الفارسي المجوسي ملعون اس کا نام " فيروز" تها اس لیئے اس کو الفيروزي بهی کہتے هیں ، یہ ملعون فارسي الأصل مجوسی غلام تها ، اسی ملعون نے سیدنا عمر بن الخطاب رضي الله عنه کو شہید کیا ،
    شیعہ کی کتب میں اس ملعون مجوسی کو ( بابا شجاع الدين ) کے لقب سے یاد کیا جاتا هے ،

    أبو لؤلؤة المجوسي ملعون نے سیدنا عمر بن الخطاب رضي الله عنه کوکیوں شہید کیا ؟

    شيخ الإسلام ابن تيمية رحمه الله فرماتے هیں کہ أبو لؤلؤة باتفاق أهل الإسلام کافرمجوسی تها مجوسی وه لوگ هیں جوآگ کی عبادت کرتے هیں ، اس نے سیدنا عمر بن الخطاب رضي الله عنه کوشہید کیا اسلام اور مسلمانوں سے شدید بغض کی وجہ سے ، اور مجوس و کفار کا انتقام لینے کی وجہ سے کیونکہ سیدنا عمر بن الخطاب رضي الله عنه نے ان کے بلاد کوفتح کیا اور ان کے رؤساء کوقتل کیا اور ان کے اموال کو تقسیم کیا ( منهاج السنة النبوية لابن تيمية )

    الله تعالی نے سیدنا عمر بن الخطاب رضي الله عنه کے سبب مسلمانوں کے لیئے
    بلاد فارس کوفتح کیا اور کفر کے ایوانوں میں اسلام کا جهنڈا لہرایا گیا ، لہذا اسی بغض وحسد کی وجہ سے أبو لؤلؤة مجوسی نے حضرت عمر رضي الله عنه کو شہید کیا ،

    أبو لؤلؤة المجوسي ملعون کو شیعہ و روافض کیا سمجهتے هیں ؟

    تمام شیعہ و روافض سیدنا عمر بن الخطاب رضي الله عنه کی شہادت کے دن کو بہت بڑی عید کا دن سمجهتے هیں اور اس دن عید مناتے هیں ، اور حضرت عمر رضي الله عنه کے قاتل أبو لؤلؤة المجوسي الخبيث کو أفضل المسلمين یعنی مسلمانوں میں سب سے افضل و بہتر مسلمان کا لقب اس کودیتے هیں ،

    شیعہ کی دیگرکتب میں بهی یہی لکها هے ،
    یہ هے شیعہ کا عقیده سیدنا عمر بن الخطاب رضي الله عنه کے متعلق ،

    أبو لؤلؤة المجوسي الخبيث کی قبر کہاں هے ؟

    سیدنا عمر بن الخطاب رضي الله عنه کی شہادت کا مختصر واقعہ اس طرح هے کہ آپ فجرکی نمازپڑهانے کے لیے تشریف لائے صفوں کوسیدها کرنے کاحکم دیا ، ابهی آپ نے تکبیر پڑهی تهی کہ پیچهے سے أبو لؤلؤة المجوسي الخبيث ملعون نے دو دهاری خنجرکے ساتهہ آپ کے اوپر حملہ کیا اور دائیں بائیں جوبهی آتا سب کومارتا گیا تقریبا تیره آدمیوں کوزخمی کیا جن میں سے نو شہید هوگئے صحابہ میں سے کسی نے أبو لؤلؤة ملعون پرچادر پهینک کراس کو پکڑ لیا تواس ملعون کوعلم هوگیا کہ اب میں توبچ نہیں سکتا لہذا خود هی اپنا گلا کاٹ کر همیشہ همیشہ کے لیئے جہنم رسید هوگیا ،

    اور سیدنا عمر بن الخطاب رضي الله عنه نے حضرت عبد الرحمن بن عوف رضي الله عنه کا هاتهہ پکڑکرنمازکے لیئے آگے کیا ، مسجد کے کناروں میں جولوگ تهے ان کوابهی پورا علم نہیں تها اس واقعہ کا صرف یہ سیدنا عمر بن الخطاب رضي الله عنه کی آواز بند هوگئ اور آپ سبحان اللّه سبحان اللّه پڑهہ رهے تهے حضرت عبد الرحمن بن عوف رضي الله عنه نے هلکی سی نمازپڑهائ ،

    نمازکے بعد حضرت عمر رضي الله عنه ابن عباس رضي الله عنه سے کہا دیکهو میرے اوپرکس نے یہ وار کیا ؟ تو انهوں نے کہا مغیره کے غلام أبو لؤلؤة نے

    توآپ نے فرمایا الله اس کوهلاک کرے میں نے تواس کو اچهائ کا هی حکم دیا هے ، پهر فرمایا ( الحمد لله الذي لم يجعل ميتتي بيد رجل يدعي الإسلام )

    تمام تعریفیں الله کے لیئے هیں کہ جس نے میری شہادت کسی مسلمان کے هاتهہ پرنہیں کی ،

    اب أبو لؤلؤة المجوسي الخبيث ملعون آگ کے پجاری نے اپنے آپ کو اسی دن خود قتل کیا اور اسی دن جہنم رسید کیاگیا ، تو اس ملعون کی نعش ایران کے شہر کاشان کیسے پہنچ گئ ؟ اور وهاں اس کی جہنم کده کیسے بنائ گئ ؟

    شیعہ جس کا حج وطواف وعبادت کرتے هیں ؟ کیا شیعہ سے بڑا بے وقوف وگمراه وملعون ومغضوب ومردود مذهب آپ نے کبهی دیکها یا سنا هے ؟

    ایران میں اس ملعون کے جهوٹے من گهڑت مزار کی چند تصاویر ملاحظہ کریں

    اور اسلام اور اهل اسلام اور صحابہ اور خصوصا سیدنا عمر بن الخطاب رضي الله عنه کے ساتهہ شیعہ کے باطنی بغض وعداوت وخبث کوملاحظہ کریں ، کہ کس طرح ایک مجوسی ملعون کو اپنا رب بنایا هوا هے کہ اس نے سیدنا عمر بن الخطاب رضي الله عنہ کو شہید کیا۔


    أؤلئك الذين لــعنـهم الله ومن يلعن الله فلن تجد له نصـــيرا ۔۔۔
    {ضرور پڑھے اور شیئر کرے۔۔جزاک اللہ}
     
لوڈ کرتے ہوئے...

اس صفحے کو مشتہر کریں